உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Work place: گھر سے کام بمقابلہ دفتر سے کام! ہندوستانی ملازمین دفترسےکام کے طریقے میں تبدیلی کے خواہاں

    دو سال کے لاک ڈاؤن کے دوران بہت سے خاندانوں کے طرز زندگی میں تبدیلی آئی ہے۔

    دو سال کے لاک ڈاؤن کے دوران بہت سے خاندانوں کے طرز زندگی میں تبدیلی آئی ہے۔

    داس کہتے ہیں کہ لوگوں کا خیال ہے کہ 80 تا 90 فیصد کام کہیں سے بھی ہو سکتا ہے اور وہ دفتر کو خیالات کے تبادلے، معلومات کو جذب کرنے، سماجی بنانے اور سیکھنے کی جگہ کے طور پر دیکھ رہے ہیں۔ اس کے نتیجے میں دفتر میں فزیکل انفراسٹرکچر جیسے کہ اضافی ٹریننگ رومز اور کھلے دفاتر میں تبدیلیوں کی ضرورت پیدا ہوئی ہے۔

    • Share this:
      عالمی وبا کورونا وائرس (Covid-19) کی وجہ سے دفاتر سے باہر نکالے جانے اور گھر سے کام کرنے پر مجبور ہونے کے بعد زیادہ تر ہندوستانی ملازمین اب اس کے ساتھ آنے والے آرام اور لچک کو پسند کر رہے ہیں۔ وہ لچک کی تلاش میں نوکریاں بدل رہے ہیں اور کئی ملازمین تو پرانی نوکریاں چھوڑ رہے ہیں۔ بھرتی اور عملہ سازی کرنے والی فرم CIEL HR سروسز کے ذریعہ کئے گئے سروے کے مطابق ہندوستان میں 10 میں سے کم از کم 6 ملازمین دفتر واپس آنے کے بجائے مستعفی ہونے کو تیار ہیں۔

      سوفٹ اسکیلس اور سم ٹوٹل سسٹمس (Sum Total Systems) میں HR کے سینئر ڈائریکٹر کرشنا پرساد کہتے ہیں کہ زیادہ تر ملازمین یہ انتخاب کرنے کی آزادی چاہتے ہیں کہ وہ دفتر آئیں یا گھر سے کام کریں۔ پیشہ ور افراد غیر معمولی ٹریفک سے بچنا، ہاسٹلز یا کرائے کی ادائیگی اور اپنے آبائی شہروں سے باہر جانا چاہتے ہیں۔

      ملازمین کا مطالبہ ہے کہ دفاتر کے کام کے طریقے تبدیل کیے جائے:

      جو لوگ دفاتر کو لوٹ رہے ہیں، ان میں سے زیادہ تر چاہتے ہیں کہ کام کی جگہیں بدل جائیں۔ معروف پلیٹ فارم Careernet کے سی ای او اور شریک بانی انشومن داس کا کہنا ہے کہ کچھ ملازمین فزیکل میٹنگز، دفتر میں ایک ٹیم کے طور پر موجود ہونے اور کام کی جگہ پر بہتر حفظان صحت پر نئے سرے سے توجہ مرکوز کرنے کے لیے اچھے انفراسٹرکچر کا مطالبہ کرتے ہیں۔

      داس کہتے ہیں کہ لوگوں کا خیال ہے کہ 80 تا 90 فیصد کام کہیں سے بھی ہو سکتا ہے اور وہ دفتر کو خیالات کے تبادلے، معلومات کو جذب کرنے، سماجی بنانے اور سیکھنے کی جگہ کے طور پر دیکھ رہے ہیں۔ اس کے نتیجے میں دفتر میں فزیکل انفراسٹرکچر جیسے کہ اضافی ٹریننگ رومز اور کھلے دفاتر میں تبدیلیوں کی ضرورت پیدا ہوئی ہے۔

      مزید پڑھیں: Jobs in Telangana: تلنگانہ میں 80 ہزار نئی نوکریوں کا اعلان، لیکن پہلے سے وعدہ شدہ اردو کی 558 ملازمتیں ہنوز خالی!

      فیملی انٹیگریٹڈ کام نیا معمول ہے:

      دو سال کے لاک ڈاؤن کے دوران بہت سے خاندانوں کے طرز زندگی میں تبدیلی آئی ہے۔ NWORX کے شریک بانی اور سی ای او ہری راج وجے کمار کہتے ہیں کہ ملازمین نے ایک نئے معمول کے مطابق ڈھال لیا ہے جس میں کام کے زیادہ گھنٹے، کام کی جگہ پر آنے جانے کے دباؤ سے بچنا اور کام کے شیڈول کے ساتھ جڑے ذاتی نظام الاوقات کا انتظام کرنے کے قابل ہونا شامل ہے۔ ایک بار جب ملازمین دفتر کا سفر دوبارہ شروع کر دیتے ہیں تو یہ خطرے میں پڑ جاتے ہیں۔

      مزید پڑھیں: TMREIS: تلنگانہ اقلیتی رہائشی اسکول میں داخلوں کی آخری تاریخ 20 اپریل، 9 مئی سے امتحانات

      پرساد کہتے ہیں۔ جب WFH کی بات آتی ہے تو وہاں ایک سماجی رکاوٹ بھی موجود ہوتی ہے اور ساتھ ہی ثقافتی خلا بھی ہوتا ہے۔ اس نے موجودہ ملازمین اور نئے ملازمین کے درمیان ایک سماجی خلیج پیدا کر دی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: