உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    راجستھان میں پھر چھڑی سیاسی جنگ، وزیر اعلی گہلوت کے صلاح کار رامکیش مینا کا مطالبہ، سچن پائلٹ کو ریاست سے باہر کریں

    راجستھان میں پھر چھڑی سیاسی جنگ، وزیر اعلی گہلوت کے صلاح کار رامکیش مینا کا مطالبہ، سچن پائلٹ کو ریاست سے باہر کریں

    راجستھان میں پھر چھڑی سیاسی جنگ، وزیر اعلی گہلوت کے صلاح کار رامکیش مینا کا مطالبہ، سچن پائلٹ کو ریاست سے باہر کریں

    Rajasthan Congress Crisis : راجستھان کے وزیر اعلی اشوک گہلوت کے نو مقرر کردہ صلاح کار رامکیش مینا نے سچن پائلٹ پر حملہ بولا ۔ مینا کا کہنا ہے کہ پائلٹ کے راجستھان میں رہنے سے کانگریس کو نقصان ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ پائلٹ باہری ہیں ۔

    • Share this:
      جے پور : راجستھان کے وزیر اعلی اشوک گہلوت کے نو مقرر کردہ صلاح کار رامکیش مینا نے سچن پائلٹ پر حملہ بولا ۔ مینا کا کہنا ہے کہ پائلٹ کے راجستھان میں رہنے سے کانگریس کو نقصان ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ پائلٹ باہری ہیں ۔ کانگریس ہائی کمان سچن پائلٹ کو کانگریس پارٹی کے کارکنان کو کابینہ میں جگہ دے دی ہے ۔ اب پائلٹ راجستھان چھوڑ دیں ۔

      رامکیش مینا نے کہا کہ 2018 کے اسمبلی الیکشن میں پائلٹ کے رہتے ہی کانگریس کو 50 سیٹ کا نقصان ہوا ۔ پائلٹ رہے تو 2023 کے اسمبلی انتخابات میں بھی نقصان ہوگا ۔ رامکیش مینا آزاد ممبر اسمبلی ہیں ۔ سچن پائلٹ کی مخالفت کی وجہ سے ہی سرکار کو حمایت دے رہے آزاد ممبران اسمبلی کو گہلوت کابینہ میں شامل نہیں کرپائے ۔ آزاد ممبران اسمبلی کی ناراضگی دور کرنے کیلئے رامکیش سمیت دو آزاد ممبران اسمبلی کو وزیر اعلی اشوک گہلوت کا صلاح کار مقرر کیا گیا ہے ۔ کل چھ صلاح کار مقرر کئے گئے ہیں ۔

      راجستھان میں ہوئے سیاسی بحران کے دوران سرکار کو بچانے والے 13 آزاد ممبران اسمبلی کو سرکار میں جگہ نہیں ملی ہے ۔ وزیر اعلی اشوک گہلوت نے کہا تھا کہ ان ممبرن اسمبلی کا تعاون کبھی نہیں بھول سکتے ، لیکن اب کابینہ میں جگہ نہیں ملنے سے ان میں مایوسی ہے تو وہیں کچھ ممبران اسمبلی ناراض بھی ہیں ۔

      امید ظاہر کی جارہی تھی کہ کابینہ توسیع کے دوران ان آزاد ممبران اسمبلی کو جگہ مل سکتی ہے ، لیکن کابینہ کی فہرست میں ایک بھی آزاد ممبر اسمبلی کا نام نہیں تھا ۔ صرف بی ایس پی سے آئے ممبر اسمبلی راجیندر گڑھا کو وزیر مملکت بنایا گیا ہے ۔

      گہلوت کابینہ کی توسیع میں بی ایس پی سے کانگریس میں شامل ہوئے چھ ممبران اسمبلیوں میں سے ایک راجیندر گڑھا کو ہی جگہ ملی ہے ۔ الزام لگایا جارہا ہے کہ کہ ان پر سنگین الزام ہونے کے باوجود انہیں وزیر بنایا گیا ہے ۔ تو وہیں دوسری جانب الور کے کٹھومر سے کانگریس ممبر اسمبلی بابو لال بیروا بھی کابینہ میں کی حلف برداری تقریب میں نہیں پہنچے ۔ حالانکہ بیروا نے دعوی کیا کہ وہ ناراض نہیں ہیں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: