உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اشوک گہلوت نے ایک مرتبہ پھر کھیلا ڈبل گیم، کرسی بچانے کیلئے چلا یہ نیا داو؟

    اشوک گہلوت نے ایک مرتبہ پھر کھیلا ڈبل گیم، کرسی بچانے کیلئے چلا یہ نیا داو؟

    اشوک گہلوت نے ایک مرتبہ پھر کھیلا ڈبل گیم، کرسی بچانے کیلئے چلا یہ نیا داو؟

    ایک طرف گہلوت دہلی میں سونیا گاندھی سے معافی مانگ رہے تھے اور وزیر اعلی کی کرسی پر خود کے رہنے یا نہ رہنے کا فیصلہ سونیا گاندھی پر چھوڑنے کی بات کررہے تھے، لیکن ساتھ میں کانگریس صدر عہدہ کا الیکشن لڑنے سے بھی پیچھے ہٹ گئے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Rajasthan | Jaipur | New Delhi
    • Share this:
      نئی دہلی : راجستھان کے وزیر اعلی اشوک گہلوت نے ایک مرتبہ پھر ڈبل گیم کھیلتے ہوئے کرسی پر برقرار رہنے کیلئے نیا داو چلا ہے ۔ ایک طرف گہلوت دہلی میں سونیا گاندھی سے معافی مانگ رہے تھے اور وزیر اعلی کی کرسی پر خود کے رہنے یا نہ رہنے کا فیصلہ سونیا گاندھی پر چھوڑنے کی بات کررہے تھے، لیکن ساتھ میں کانگریس صدر عہدہ کا الیکشن لڑنے سے بھی پیچھے ہٹ گئے ۔

      ٹھیک اسی وقت گہلوت کے اسٹریٹجک صلاح کار مانے جارہے دھرمیندر راٹھوڑ نے گہلوت گروپ کے ایک وزیر گووند میگھوال کے ساتھ جے پور میں پریس کانفرنس کرکے پارٹی ہائی کمان کو خبردار کیا کہ الیکشن میں جانا منظور، لیکن سچن پائلٹ کو وزیر اعلی کے طور پر منظور نہیں کریں گے ۔ نہ صرف سچن پائلٹ اور ان کے گروپ کے ممبران اسمبلی کو غدار کہا بلکہ راجستھان کانگریس کے انچارج اجے ماکن پر غداروں کا گناہ چھپانے کا الزام لگاکر ماکن پر بھی بلا واسطہ پر غداری کا الزام لگایا ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: اشوک گہلوت چھوڑنا چاہتے ہیں وزیر اعلی کا عہدہ؟ سونیا گاندھی سے استعفی کی پیشکش کی: ذرائع


      راجستھان کے سیاسی ڈراما کا پارٹ ٹو جمعرات کو دہلی اور جے پور میں ایک ساتھ نطر آیا ۔ دہلی میں وزیر اعلی اشوک گہلوت نے سونیا گاندھی سے ملاقات کرکے تین دن پہلے کے واقعہ کیلئے معافی مانگی ۔ خود کو وزیر اعلی عہدہ پر رہنے یا نہ رہنے کا فیصلہ سونیا گاندھی پر چھوڑ دیا ۔ حالانکہ استعفی کی بات نہیں کی اور اسی کے ساتھ گہلوت نے داو بھی چل دی ۔

      ممبران اسمبلی کی بغاوت کی ناکامی کو بہانہ بناکر گہلوت ، کانگریس کے صدر کے عہدہ کا الیکشن لڑنے سے پیچھے ہٹ گئے ۔ گہلوت گروپ کے ممبران اسمبلی لگاتار گہلوت پر الیکشن لڑنے سے پیچھے ہٹنے کا دباو بنا رہے تھے ۔ گہلوت کے قومی صدر کا الیکشن لڑنے سے انکار کے بعد اب گہلوت کو وزیر اعلی کی کرسی سے ہٹانا کانگریس ہائی کمان کیلئے اور بھی مشکل ہوگیا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: وہ تین خاص لوگ جو دنیا میں کہیں بھی پاسپورٹ کے بغیر جاسکتے ہیں، جانئے کون ہیں؟


      جب سونیا گاندھی سے گہلوت معافی مانگ رہے تھے، ٹھیک اسی وقت جے پور میں ایک ہوٹل میں گہلوت کے سب سے قریبی اور اس بغاوت واقعہ کے ماسٹر مائنڈ دھرمیندر راٹھور ایک پریس کانفرنس کررہے تھے ۔ راٹھور نے پھر سچن پائلٹ اور ان کے گروپ کو غدار کہا ہے ۔ پارٹی ہائی کمان کو وارننگ دی کہ سرکار گرنا الیکشن میں جانا منظور ہے، لیکن سچن پائلٹ وزیر اعلی کے طور پر منظور نہیں ۔

      پائلٹ کو گھیرنے کیلئے راجستھان میں پنچایت الیکشن میں پائلٹ گروپ کے ایک ممبر کے بی جے پی کے ریاستی صدر ستیش پونیا سے ایک ہوٹل میں ملنے اور اس کے بعد جے پور کا ضلع پرمکھ کا عہدہ کانگریس کے ہارنے سے ثبوت کی سی ڈی پیش کی ۔ راٹھوڑ اور وزیر میگھوال نے راجستھان کانگریس کے انچارج اجے ماکن پر بھی پائلٹ سے ملی بھگت اور غداری کے الزام لگائے ۔ راٹھور نے کہا کہ ماکن غداروں کو بچا رہے ہیں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: