کانگریسی لیڈر کا بڑا الزام، ہریانہ میں پانچ کروڑروپئے میں فروخت کیا جارہا ہےاسمبلی کا ٹکٹ

ہریانہ اسمبلی انتخابات کےپیش نظراشوک تنورکوریاستی کانگریس صدرکےعہدے سےہٹا دیا گیا تھا۔ کہا جارہا تھا کہ عبوری صدرسونیا گاندھی نےیہ فیصلہ پارٹی کے اندرونی اختلافات کو دیکھتےہوئےلیا تھا۔

Oct 02, 2019 11:14 PM IST | Updated on: Oct 02, 2019 11:28 PM IST
کانگریسی لیڈر کا بڑا الزام، ہریانہ میں پانچ کروڑروپئے میں فروخت کیا جارہا ہےاسمبلی کا ٹکٹ

ہریانہ کانگریس کے سابق صدر اشوک تنور نےہریانہ میں کانگریس کا ٹکٹ فروخت کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔

نئی دہلی: کانگریس کے سینئرلیڈراشوک تنورنے ہریانہ میں اسمبلی انتخابات کے ٹکٹ کی تقسیم میں دھاندلی ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے یہاں کانگریس کے ہیڈکوارٹرکےباہر بدھ کے روزاحتجاج کیا اور الزام عائد کیا کہ سوہنا اسمبلی سیٹ کا ٹکٹ پانچ کروڑروپئے میں فروخت کیا گیا ہے۔

ہریانہ اسمبلی انتخابات کے پیش نظراشوک تنورکو ریاستی کانگریس صدرکے عہدے سے ہٹا دیا گیا تھا۔ کہا جارہا تھا کہ عبوری صدرسونیا گاندھی نے یہ فیصلہ پارٹی کے اندرونی اختلافات کودیکھتے ہوئے لیا تھا۔ اشوک تنورنے اب باغیانہ رخ اختیارکرلیا ہے اورانہوں نے کانگریس کے سینئرلیڈروں پرٹکٹ فروخت کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔

ہریانہ کانگریس کے سابق صدراشوک تنورنے اپنے حامیوں کے ساتھ پارٹی کے ہیڈ کوارٹر کےباہرمظاہرہ کیا اوردھرنا دیا۔ انہوں نے کہا کہ اسمبلی کی سیٹوں کی تقسیم کے سلسلے میں بڑے پیمانے پردھاندلی چل رہی ہے۔ دھاندلی کرکےاگرکمزورامیدوارمیدان میں اتارے گئے توپارٹی فتحیاب کیسے ہوگی۔

Loading...

اشوک تنورنے سونا سیٹ پانچ کروڑ روپئے میں فروخت کرنے کا الزام عائد کیا۔ اشوک تنورنے سونا سیٹ پانچ کروڑ روپئے میں فروخت کرنے کا الزام عائد کیا۔

انہوں نے کہا،’میں نے ہریانہ گذشتہ پانچ سال کے دوران پارٹی کو اپنے خون پسینے سے سینچا ہےاورمضبوط حالت میں پہنچایا ہے۔ میں پارٹی کے تئیں ہمہ وقت وقف رہا ہوں۔ گذشتہ تین ماہ کےدوران مجھےبی جے پی سے 6 مرتبہ کانگریس چھوڑنے کی دعوت مل چکی ہے، لیکن میں کانگریس کا سپاہی ہوں اورکبھی بھی پارٹی نہیں چھوڑوں گا‘۔ اشوک تنور نےکہا کہ وہ کانگریس کےایک ایک رہنما کوجانتے ہیں۔ انہوں نےکہا کہ ایسےافراد کوٹکٹ کیوں دیا جا رہا ہےجو پہلےکانگریس کی تنقید کرتے تھےاوراب ٹکٹ حاصل کرنے کےلئےکانگریس میں شامل ہوگئے ہیں۔

دہلی میں ٹکٹ کو لے کرمنتھن

کانگریس بھی ٹکٹ کولےکرپس وپیش میں صاف آرہی ہے۔ چودھری دوڑارام کے بی جے پی میں جانےکےبعد مانا جارہا تھا کہ سابق سی پی ایس پرہلاد سنگھ گلاکھیڑا کا راستہ واضح ہوگیا ہے، مگردہلی میں ٹکٹ کو لےکرمنتھن کرنےکےدوران جوکچھ ہوا اس سےلگتا ہےکہ کانگریس کی راہ بھی فتح آباد میں آسان نہیں ہیں۔ پرہلاد سنگھ گلاکھیڑا سابق وزیراعلیٰ بھوپیندرسنگھ ہڈا کے خاص مانے جاتے ہیں، اس لئے ہڈا گٹا کا سافٹ کارنران کےساتھ ہوسکتا ہے۔

Loading...