ہوم » نیوز » وطن نامہ

آسام کے وزیرنے این آرسی کی حتمی فہرست پراٹھائے سوال، بولے ڈیٹا سے چھیڑ چھاڑہوئی، پھرسے ہو ویریفکیشن

این آرسی میں شامل ہونے کے لئے 3,30,27,261 لوگوں نے درخواست دی تھی۔ ان میں سے  3,11,21,004 لوگوں کو شامل کیا گیا ہے جبکہ 19,06,657 لوگوں کوباہرکردیا گیا ہے۔

  • Share this:
آسام کے وزیرنے این آرسی کی حتمی فہرست پراٹھائے سوال، بولے ڈیٹا سے چھیڑ چھاڑہوئی، پھرسے ہو ویریفکیشن
آسام کے وزیرنے این آرسی کی حتمی فہرست پر اٹھائے سوال۔

آسام کے وزیرخزانہ ہمنتا بسوا سرما نےہفتہ کوکہا ہے کہ آسام میں قومی شہریت رجسٹر (نیشنل رجسٹرار آف سٹیزنز) کی حتمی فہرست میں کئی ایسے لوگوں کے نام شامل نہیں ہیں جو 1971 سے قبل بنگلہ دیش سے ہندوستان آئے تھے۔ بسوا سرما نےایک کے بعد کئی ٹوئٹ کرتے ہوئےالزام لگایا کہ ڈیٹا کے ساتھ چھیڑچھاڑ کی گئی ہے۔


وزیرخزانہ ہمنتا بسوا سرما نے ٹوئٹ کرتے ہوئے لکھا 'این آرسی میں کئی ایسے ہندوستانی شہریوں کے نام شامل نہیں کئے گئے ہیں جو 1971 سے پہلے مہاجرکے طورپربنگلہ دیش سے آئےتھے کیونکہ افسران نے پناہ گزیں سرٹیفکیٹ لینےسے انکارکردیا'۔


انہوں نے کہا کہ ریاست اورمرکزی حکومتوں کے ذریعہ پہلے کی گئی اپیل کے مطابق سپریم کورٹ سرحدی اضلاع میں کم ازکم 20 فیصد اورباقی آسام میں 10 فیصد پھرسے ویریفکیشن کی اجازت دینی چاہئے۔


انہوں نے ٹوئٹ کیا 'میں دوہراتا ہوں کہ مرکز اورریاستی حکومت  کے ذریعہ پہلے کی گئی اپیل کے مطابق سپریم کورٹ سرحدی اضلاع میں کم ازکم 20 فیصد اورباقی آسام میں 10 فیصد پھرسے ویریفکیشن کی اجازت دینی چاہئے'۔  دونوں حکومتوں نے خاص طورپربنگلہ دیش کی سرحد سے متصل اضلاع میں این آرسی میں غلط طریقے سے شامل نام اورباہرکئے گئے ناموں کا پتہ لگانے کے لئے نمونے کا پھرسے ویریفکیشن کولے کرعدالت سےدوباراپیل کی تھی۔

عدالت نے اس ماہ کےآغازمیں سخت الفاظ میں کہا تھا کہ متعینہ پیمانوں کی بنیاد پراین آرسی کا پوراعمل سے پھرسےشروع نہیں کیا جاسکتا۔ واضح رہےکہ آسام میں این آرسی کی آخری فہرست ہفتہ کوآن لائن جاری کردی گئی۔ این آرسی میں شامل ہونےکےلئے 3,30,27,261  لوگوں نےدرخواست دی تھی۔ ان میں سے3,11,21,004 لوگوں کو شامل کیا گیا ہے جبکہ 19,06,657 لوگوں کوباہرکردیا گیا ہے۔
First published: Aug 31, 2019 06:28 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading