آسام این آر سی : موجودہ ممبر اسمبلی ، سابق ممبر اسمبلی اور ریٹائرڈ فوجی افسر کا نام حتمی فہرست سے غائب

این آر سی کی حتمی فہرست گزشتہ روز جاری کی گئی ، جس میں 19 لاکھ سے زیادہ درخواست دہندگان کو باہر رکھا گیا ہے ۔

Sep 01, 2019 08:36 AM IST | Updated on: Sep 01, 2019 08:36 AM IST
آسام این آر سی : موجودہ ممبر اسمبلی ، سابق ممبر اسمبلی اور ریٹائرڈ فوجی افسر کا نام حتمی فہرست سے غائب

(PTI Photo)

آسام میں این آر سی کی حتمی فہرست میں جگہ نہیں پانے والوں میں کرگل جنگ میں حصہ لینے والے ایک سابق فوجی ، اے آئی یو ڈی ایف کے ایک موجودہ ممبر اسمبلی اور ایک سابق ممبر اسمبلی کے نام بھی شامل ہیں ۔ یہی حال کانگریس ممبر اسمبلی الیاس علی کی بیٹی کا بھی ہے ۔ علی اور ان کے کنبہ کے دیگر اراکین کے نام حالانکہ اس فہرست میں شامل ہیں ۔

کرگل جنگ میں حصہ لینے والے اور ریٹائرڈ فوجی محمد ثنا اللہ کو اس فہرست میں جگہ نہیں ملی ہے ، جنہیں فارن ٹربیونل کے ذریعہ غیر ملکی قرار دئے جانے کے بعد اس سال مئی میں کچھ دنوں تک حراست میں بھی رکھا گیا تھا ۔ ثنا اللہ کی دو بیٹیاں اور ایک بیٹے کو بھی مبینہ طور پر شامل نہیں کیا گیا ہے جبکہ ان کی بیوی کا نام فہرست میں شامل ہے ۔

Loading...

اے آئی یو ڈی ایف کے ممبر اسمبلی اننت کمار مالو جو بونگئی گاوں ضلع کے ابھے پوری جنوبی اسمبلی حلقہ کی نمائندگی کرتے ہیں ، نے کہا کہ وہ حتمی این آر سی فہرست میں اپنا نام نہیں تلاش کرسکے ہیں ۔ ممبر اسمبلی نے کہا کہ میرے بیٹے کا نام بھی این آر سی کی حتمی فہرست میں نہیں ہے ۔

اے آئی یو ڈی ایف کے ہی سابق ممبر اسمبلی عطا الرحمان کا نام بھی اس فہرست میں شامل نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آئین یہ طے کرتا ہے کہ کون ہندوستان کا شہری ہے اور میرے پاس اس کو ثابت کرنے کیلئے سبھی ضروری دستاویز ہیں ۔ میں کٹیگورا سے دو مرتبہ ممبر اسمبلی رہ چکا ہوں ۔ سابق ممبر اسمبلی نے کہا کہ وہ قانون کی مدد لیں گے اور فارن ٹربیونل میں جاکر اپنا نام این آر سی میں شامل کروائیں گے ۔

خیال رہے کہ این آر سی کی حتمی فہرست گزشتہ روز جاری کی گئی ، جس میں 19 لاکھ سے زیادہ درخواست دہندگان کو باہر رکھا گیا ہے ۔

Loading...