உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ATM Withdrawal Alert: اے ٹی ایم سے کیش نکالنا اگلے مہینے سے ہوگا مہنگا! کتنے ہوں گے چارجز؟

    ذیل میں ہندوستان میں کچھ مشہور بینکوں کی نقد رقم نکالنے کی حد اور نقد لین دین کی حد کا ذکر کیا گیا ہے۔

    ذیل میں ہندوستان میں کچھ مشہور بینکوں کی نقد رقم نکالنے کی حد اور نقد لین دین کی حد کا ذکر کیا گیا ہے۔

    ریزرو بینک آف انڈیا (Reserve Bank of India) نے ایک نوٹیفکیشن میں کہا کہ حد سے تجاوز کرنے پر صارفین کو جنوری 2022 سے اے ٹی ایم لین دین کے لیے مزید چارجز ادا کرنے ہوں گے۔ بینکس پہلے ہی صارفین کو یاد دلانے کے لیے اس کی اطلاع دے چکے ہیں۔ اب اے ٹی ایم لین دین مہنگا ہونے کے لیے تیار ہے

    • Share this:
      اے ٹی ایم سے رقم نکالنے کا انتباہ (ATM Withdrawal Alert): اگلے مہینے سے کریڈٹ یا ڈیبٹ کارڈ والے بینکوں کے اے ٹی ایم سے رقم نکالنے کی حد ختم کردی جائے گی۔ جس کے بعد صارفین ملک بھر کے کسی بھی اے ٹی ایمز سے نقد رقم نکالنے کے اہل ہوں گے لیکن اس کے لیے اضافی چارجز بھی ادا کرنا پڑے گا۔

      ریزرو بینک آف انڈیا (Reserve Bank of India) نے ایک نوٹیفکیشن میں کہا کہ حد سے تجاوز کرنے پر صارفین کو جنوری 2022 سے اے ٹی ایم لین دین کے لیے مزید چارجز ادا کرنے ہوں گے۔ بینکس پہلے ہی اس تبدیلی کی اطلاع صارفین کو یاد دلانے کے لیے دے رہے ہیں۔ اب اے ٹی ایم لین دین مہنگا ہونے کے لیے تیار ہے کیونکہ آر بی آئی نے بینکوں کو نقد اور غیر نقد آٹومیٹڈ ٹیلر مشینوں (ATMs) پر مفت ماہانہ حد سے زیادہ چارجز بڑھانے کی اجازت دی ہے۔

      ایک بار تبدیلی لاگو ہونے کے بعد صارفین کو اپنے بینکوں کے اے ٹی ایم میں 21 روپے فی ٹرانزیکشن ادا کرنے ہوں گے تاکہ ایک بار حد سے زیادہ رقم نکال سکیں۔ فی الحال ایک بینک کا صارف 20 روپے فی ٹرانزیکشن ادا کرسکتا ہے۔ ریزرو بینک آف انڈیا تمام بینک صارفین کو اجازت دیتا ہے کہ وہ اپنے بینکوں سے پانچ بار مفت اے ٹی ایم لین دین کریں اس سے پہلے کہ یہ شرحیں وصول کی جائیں۔

      کارڈ کے لین دین کی سب سے نمایاں خصوصیت یہ ہے کہ یہ محفوظ ہے (shutterstock)
      کارڈ کے لین دین کی سب سے نمایاں خصوصیت یہ ہے کہ یہ محفوظ ہے (shutterstock)


      مرکزی بینک کے مطابق نیا اصول یکم جنوری 2022 سے نافذ العمل ہوگا۔ تاہم ڈیبٹ کارڈ والے تمام بینک صارفین اپنے اپنے بینکوں کے اے ٹی ایمز پر ماہانہ پانچ مفت ٹرانزیکشنز (نقد یا غیر نقدی لین دین) کے اہل ہوں گے۔ مزید برآں وہ میٹرو شہروں میں دوسرے بینکوں سے تین مفت ٹرانزیکشنز اور غیر میٹرو شہروں میں پانچ مفت ٹرانزیکشنز کے اہل ہوں گے۔

      آر بی آئی نے اے ٹی ایم لین دین کے بارے میں کیا کہا؟

      ریزرو بینک آف انڈیا نے 10 جون 2021 کی ایک نوٹیفکیشن میں کہا تھا کہ صارفین اپنے بینک کے اے ٹی ایم سے ہر ماہ پانچ مفت ٹرانزیکشنز (بشمول مالیاتی اور غیر مالیاتی لین دین) کے اہل ہیں۔ وہ دوسرے بینک اے ٹی ایم سے مفت لین دین (بشمول مالی اور غیر مالیاتی لین دین) کے بھی اہل ہیں۔ اس میں میٹرو سینٹرز میں تین ٹرانزیکشنز اور نان میٹرو سینٹرز میں پانچ ٹرانزیکشنز شامل ہیں۔

      نوٹیفکیشن میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ مفت لین دین کے علاوہ کسٹمر چارجز کی حد 20 روپے فی ٹرانزیکشن ہے، جیسا کہ DPSS.CO.PD.No.316/02.10.002/2014-2015 مورخہ 14 اگست 2014 کے سرکلر کے ذریعے تجویز کیا گیا ہے۔ بینکوں کو معاوضہ دینے کے لیے زیادہ انٹرچینج فیس اور اخراجات میں عمومی اضافے کو دیکھتے ہوئے انہیں کسٹمر چارجز کو 21 روپے فی ٹرانزیکشن تک بڑھانے کی اجازت ہے۔ یہ اضافہ یکم جنوری 2022 سے لاگو ہوگا‘‘۔

      قومی، بین الااقوامی، جموں و کشمیر کی تازہ ترین خبروں کے علاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں۔


      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: