سی بی آئی رپورٹ کے بعد آگسٹا ویسٹ لینڈ کو بلیک لسٹ کرے گی مرکزی حکومت

نئی دہلی۔ وی وی آئی پی ہیلی کاپٹر گھوٹالہ کو لے کر ہوئے تنازعہ کے درمیان حکومت نے کہا ہے کہ معاہدے کے بارے میں وہ سی بی آئی سے رپورٹ مانگے گی اور آگسٹا ویسٹ لینڈ اور اس کی کمپنی فنمکینکا کو بلیک لسٹ میں ڈالنے کے اقدامات کرے گی۔

Apr 28, 2016 09:20 AM IST | Updated on: Apr 28, 2016 09:21 AM IST
سی بی آئی رپورٹ کے بعد آگسٹا ویسٹ لینڈ کو بلیک لسٹ کرے گی مرکزی حکومت

نئی دہلی۔ وی وی آئی پی ہیلی کاپٹر گھوٹالہ کو لے کر ہوئے تنازعہ کے درمیان حکومت نے کہا ہے کہ معاہدے کے بارے میں وہ سی بی آئی سے رپورٹ مانگے گی اور آگسٹا ویسٹ لینڈ اور اس کی کمپنی فنمکینکا کو بلیک لسٹ میں ڈالنے کے اقدامات کرے گی۔ ساتھ ہی حکومت نے دعوی کیا کہ پیشرو یو پی اے حکومت نے گھوٹالے میں گھری کمپنی پر کوئی پابندی نہیں لگائی تھی۔ مودی حکومت کے اعلیٰ ذرائع نے دعوی کیا کہ رشوت کے الزامات کے باوجود آگسٹا ویسٹ لینڈ کو یو پی اے حکومت کے دور حکومت میں بلیک لسٹ میں نہیں ڈالا گیا اور این ڈی اے حکومت کے 2014 میں اقتدار میں آنے کے بعد داغدار کمپنی کی تمام تجاویز پر روک لگائی گئی تھی۔

صدر اور وزیر اعظم سمیت وی وی آئی پی کے لئے 12 ہیلی کاپٹروں کا سودا کرنے کے لئے ہندوستانیوں کو کمپنی کی طرف سے مبینہ طور پر رشوت دینے کے سلسلے میں سی بی آئی نے 2013 میں معاملہ درج کیا تھا۔ اس سے پہلے کانگریس نے دعوی کیا تھا کہ آگسٹا ویسٹ لینڈ کو یو پی اے حکومت کے دور میں بلیک لسٹ میں ڈالا گیا تھا لیکن مودی حکومت نے اسے بلیک لسٹ سے خارج کر دیا۔ کانگریس لیڈر اور سابق مرکزی وزیر آنند شرما نے کہا تھا کہ ہیلی کاپٹر سودے کو منسوخ کر دیا گیا تھا۔ یو پی اے حکومت نے کارروائی کی تھی۔ اس وقت وزیر دفاع اے کے انٹونی نے پارلیمنٹ میں بیان دیا تھا اور آگسٹا ویسٹ لینڈ کو بلیک لسٹ میں ڈال دیا گیا تھا۔

Loading...

Loading...