اجودھیا تنازع : ظفریاب جیلانی نے کہا : ہم مصالحت کےعمل میں کریں گے پورا تعاون

بابری مسجد ایکشن کمیٹی کی کنوینر ظفریاب جیلانی نے کہا کہ ہم پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ مصالحت کے عمل میں ہم پوری طرح سے تعاون کریں گے ۔ ہمیں جو کچھ بھی کہنا ہوگا ، ہم وہ ثالثی کمیٹی کے سامنے کہیں گے ۔ ہم اس سلسلہ میں باہر کچھ بھی نہیں کہیں گے۔

Mar 08, 2019 03:00 PM IST | Updated on: Mar 08, 2019 03:00 PM IST
اجودھیا تنازع : ظفریاب جیلانی نے کہا : ہم مصالحت کےعمل میں کریں گے پورا تعاون

ظفریاب جیلانی ۔ فائل فوٹو

سپریم کورٹ نے اجودھیا تنازع میں بڑا فیصلہ سناتے ہوئے مصالحت کا حکم دیا ہے ۔ سپریم کورت نے اس کیلئے ایک تین رکنی ثالثی کمیٹی بھی تشکیل دی ہے ۔ سپریم کورٹ کے اس حکم پر رد عمل بھی سامنے آنے لگے ہیں ۔ اس سلسلہ میں مسلم پرسنل لا بورڈ کے رکن ایڈووکیٹ ظفریاب جیلانی نے بھی بیان دیا ہے۔

بابری مسجد ایکشن کمیٹی کی کنوینر ظفریاب جیلانی نے کہا کہ ہم پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ مصالحت کے عمل میں ہم پوری طرح سے تعاون کریں گے ۔ ہمیں جو کچھ بھی کہنا ہوگا ، ہم وہ ثالثی کمیٹی کے سامنے کہیں گے ۔ ہم اس سلسلہ میں باہر کچھ بھی نہیں کہیں گے۔

خیال رہے کہ ثالثی کمیٹی میں تین اراکین کو شامل کیا گیا ہے ۔ ثالثی کمیٹی کے اراکین میں شری شری روی شنکر کے ساتھ شری رام پنچو کو بھی شامل کیا گیا ہے جبکہ اس کمیٹی کی سربراہی سپریم کورٹ کے ریٹائرڈ جج جسٹس ایف ایم کلیف اللہ کریں گے ۔ ثالثی کمیٹی کی میٹنگ اگلے ہفتہ فیض آباد میں ہوگی ، جس کے بعد 8 ہفتوں میں صلح کی رپورٹ سپریم کورٹ کو سونپی جائے گی ۔

یہ بھی پڑھیں : اجودھیا تنازع : سپریم کورٹ کے حکم کی وہ پانچ بڑی باتیں ، جن کا آپ کیلئے جاننا ہے انتہائی ضروری

 

Loading...