اعظم خان کا دعوی ، لاہور میں نواز شریف کے ساتھ داؤد ابراہیم سے بھی ملے تھے مودی

غازی پور: اترپردیش کے وزیر محمد اعظم خاں نے ایک مرتبہ پھر وزیر اعظم مودی پر تیکھا حملہ بولتے ہوئے دعوی کیا ہے کہ اپنے اچانک دورہ پاکستان کے موقع پر وزیر اعظم مودی نے وہاں مطلوب ترین مجرم داؤد ابراہیم سے بھی ملاقات کی تھی ۔

Feb 06, 2016 07:45 PM IST | Updated on: Feb 06, 2016 07:45 PM IST
اعظم خان کا دعوی ، لاہور میں نواز شریف کے ساتھ داؤد ابراہیم سے بھی ملے تھے مودی

غازی پور: اترپردیش کے وزیر محمد اعظم خاں نے ایک مرتبہ پھر وزیر اعظم مودی پر تیکھا حملہ بولتے ہوئے دعوی کیا ہے کہ اپنے اچانک دورہ پاکستان کے موقع پر وزیر اعظم مودی نے وہاں مطلوب ترین مجرم داؤد ابراہیم سے بھی ملاقات کی تھی ۔

اعظم خان نے کہا کہ بادشاہ (مودی) کہیں تو ثبوت کے طور پر فوٹو گراف بھی دکھا سکتا ہوں۔ نواز شریف کے یہاں ان کی ماں سے مودی کی ملاقات کے دوران ان کے ساتھ اڈانی اور جندل بھی تھے۔

غازی پور ضلع کے كرڈا علاقے کے بڑسرا گاؤں میں واقع انٹر کالج کی سالانہ تقریب کے موقع پر اعظم خان نے صحافیوں سے یہ بات کہی۔ اعظم خاں نے مرکزی حکومت کو 'ڈیل والی حکومت قرار دیتے ہوئے کہا کہ وارانسی تو کیوٹو نہیں بن پایا، لیکن جاپان کے وزیر اعظم اسی نام پر ہزاروں کروڑ روپے کی 'ڈیل کر کے ضرور چلے گئے۔

اعظم خاں نے یہ بھی کہا کہ ہمارے وزیر اعظم پاکستان کے وزیر اعظم کو پشمينہ شال اور ملیح آبادی آم بھیجتے ہیں ، تو وہاں سے سیخ کباب آتا ہے۔ اس کے بھی میرے پاس ثبوت ہیں ۔ کباب لوکی سے نہیں بنتا۔

Loading...

اسمارٹ سٹی اسکیم پر نشانہ سادھتے ہوئے اعظم خان نے کہا کہ مغربی بنگال، اتر پردیش اور بہار کو مودی حکومت نے اس اسکیم میں اس لئے شامل نہیں کیا کیونکہ ان ریاستوں میں بی جے پی کی حکومت نہیں ہے۔

یوپی میں لا اینڈ آڈر سے متعلق ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ بی جے پی حکومت والی ریاستوں میں سب سے زیادہ جرائم ہو رہے ہیں۔ میڈیا پر نشانہ سادھتے ہوئے اعظم نے کہا کہ مودی سے ملی بھگت کی وجہ سے الیکٹرانک میڈیا بی جے پی حکومت والی ریاستوں میں ہو رہے جرائم کو نہیں دکھاتا۔

کابینی وزیر نے کہا کہ شہر کی ترقی کا بجٹ مرکزی حکومت نے 40 فیصد کم کر دیا ہے۔ بی جے پی یہاں پہلے ہی ہار مان چکی ہے، اسی لئے بجٹ روک دیا گیا ہے ۔ بی جے پی کو اسمبلی انتخابات لڑنے والے لوگ نہیں مل رہے ہیں۔ کانگریس کا یوپی میں کچھ بچا نہیں ہے۔ بی ایس پی کا بھی حال گزشتہ انتخابات جیسا ہی ہوگا۔

Loading...