உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    عجب پریم کی غضب کہانی: اپنی معشوقہ کی دوست سے کرائی کورٹ میریج اور 5 گھنٹے بعد خود کرلیا نکاح

    نوجوان نے اپنی معشوقہ سے نکاح کے لئے ایسا کام کیا، جسے سن کر ہر کوئی حیران ہے۔

    نوجوان نے اپنی معشوقہ سے نکاح کے لئے ایسا کام کیا، جسے سن کر ہر کوئی حیران ہے۔

    اترپردیش کے بریلی (Bareilly News) واقع نواب گنج میں محبت کی شادی (Love Marriage) کا بے حد انوکھا معاملہ سامنے آیا ہے۔ یہاں ایک نوجوان نے اپنی معشوقہ سے نکاح کے لئے ایسا کام کیا، جسے سن کر ہر کوئی حیران ہے۔ اس نے پہلے تو اپنے ایک بے حد قریبی دوست سے اپنی معشوقہ کی کورٹ میریج (Court Marriage) کروائی اور پھر پانچ گھنٹے بعد ہی اس کے ساتھ نکاح کرلیا۔

    • Share this:
      بریلی: اترپردیش کے بریلی (Bareilly News) واقع نواب گنج میں لومیریج (Love Marriage) یعنی محبت کی شادی کا بے حد انوکھا ہی معاملہ سامنے آیا ہے۔ یہاں ایک نوجوان نے اپنی معشوقہ سے شادی کا ایسا کام کیا، جسے سن کر ہرکوئی حیران ہے۔ اس نے پہلے تو اپنے ایک بے حد قریبی دوست سے اپنی معشوقہ کی کورٹ میریج (Court Marriage) کروائی اور پھر پانچ گھنٹے بعد ہی اس کے ساتھ نکاح کرلیا۔

      یہ معاملہ بریلی کے تھانہ نواب گنج واقع ایک گاوں کا ہے۔ موصولہ اطلاع کے مطابق، یہاں ایک لڑکی کا حافظ گنج تھانہ علاقہ کے رہنے والے ایک نوجوان سے دو سال سے معاشقہ چل رہا تھا۔ دونوں نے اپنے پیار کو شادی کے مقام تک پہنچانے کے لئے گھر سے بھاگنے کا فیصلہ کیا۔ اس دوران لڑکے نے اپنے ایک دوست کو بھی بھروسے میں لے لیا۔

      پولیس سے موصولہ جانکاری کے مطابق، طے منصوبے کے مطابق گھر سے بھاگنے کے بعد لڑکے نے پہلے اپنی معشوقہ کی اپنے ہی دوست سے کورٹ میریج کروا دی اور پھر اسی شام لڑکی کے ساتھ نکاح پڑھا لیا۔

      وہیں اپنی بیٹی کو گھر پر نہ پاکر لڑکی کے اہل خانہ پولیس اسٹیشن پہنچ گئے۔ انہوں نے اپنی بیٹی کی گمشدگی کی رپورٹ درج کرائی، جس کے بعد پولیس نے بھی حرکت میں آتے ہوئے چھان بین شروع کی۔ انہوں نے لڑکی کے اس عاشق کو تھانے بلایا اور جب لڑکے نے پورا معاملہ بتایا تو پولیس بھی حیران رہ گئی۔



      پولیس کے مطابق، لڑکے نے بتایا کہ اس نے لڑکی کے گھر والوں کو گمراہ کرنے کے لئے جھوٹی کورٹ میریج نوجوان کے دوست کے نام کرلیا تھا۔ دوسری جانب لڑکی نے بتایا کہ وہ نکاح کرکے ایک ساتھ کر رہے ہیں۔ انہیں کوئی پریشان نہ کرے، اس لئے کورٹ میریج کا ڈراما رچا تھا۔ لڑکی نے اپنے والد کے ساتھ جانے سے بھی انکار کردیا اور کہا کہ وہ اپنے شوہر کے ساتھ ہی رہے گی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: