ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

مغربی بنگال کے وزیر ذاکر حسین پر بم سے حملہ، اسپتال میں داخل

Attack on West Bengal Minsiter: جب ذاکر حسین پر حملہ کیا گیا تب وہ اسٹیشن کے پلیٹ فارم نمبر -2 پر تقریباً 10 بجے کولکاتا جانے کے لئے ٹرین پکڑنے کے لئے انتظار کر رہے تھے۔

  • Share this:
مغربی بنگال کے وزیر ذاکر حسین پر بم سے حملہ، اسپتال میں داخل
مغربی بنگال کے وزیر ذاکر حسین پر بم سے حملہ، اسپتال میں داخل

کولکاتا: مغربی بنگال کے ریاستی وزیر ذاکر حسین کے اوپر (West Bengal minister Jakir Hossain) بم سے حملہ ہونے کی خبر سامنے آئی ہے۔موصولہ اطلاعات کے مطابق، اس حملے میں ذاکر حسین سنگین طور پر زخمی ہوگئے ہیں۔ اب تک ملی اطلاع کے مطابق، ذاکر حسین نے گاڑی پر نامعلوم بدمعاشوں نے کچھ وقت پہلے کچے بم سے حملہ کیا۔ جب وہ کولکاتا (Kolkata) کے لئے ٹرین میں سوار ہونے کے لئے نمیتا اسٹیشن کی طرف پیدل جا رہے تھے، تب ان کے اوپر یہ حملہ کیا گیا۔ اس کے بعد وہ فی الحال جنگی پور کے سب ڈویژن اسپتال میں داخل ہیں۔


اس حادثے میں ان کے ساتھ موجود دو دیگر لوگ بھی زخمی ہوگئے ہیں۔ جب وزیر پر حملہ کیا گیا تو وہ مبینہ طور پر اسٹیشن کے پلیٹ فارم نمبر 2 پر تقریباً 10 بجے کولکاتا جانے کے لئے ٹرین پکڑنے کے لئے انتظار کر رہے تھے۔ مرشدآباد ضلع کے جنگی پور کے رکن اسمبلی اور کچھ دیگر زخمی لوگوں کو جنگی پور سپراسپیشلٹی اسپتال لے جایا گیا، جہاں سے ذاکر حسین کو مرشد آباد میڈیکل کالج ریفر کیاگیا۔ ابتدائی علاج کے بعد، انہیں کولکاتا کے ایک اسپتال میں منتقل کردیا گیا۔


تقریباً 13 کارکن ہوئے زخمی


ذاکر حسین جو علاقہ کے ایک اہم تاجر بھی ہیں، پر مبینہ طور پر مکمل عوامی طور پر بھیڑ والی جگہ پر حملہ کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق، حملے میں وزیر کے ساتھ گئے کم از کم 13 لوگ زخمی ہوگئے۔ بتایا جا رہا ہے کہ ذاکر حسین کے بائیں حصے میں زیادہ چوٹیں آئی ہیں۔ ایک ڈاکٹر نے نام نہ بتانے کی شرط پر کہا کہ زخمی ٹی ایم سی کارکنان میں کچھ کے جسم کے حصے کاٹنے پڑ سکتے ہیں۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Feb 18, 2021 05:13 AM IST