ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بھگود گیتا کے اردو ترجمہ سے مسلمانوں کا دل جیتنے کی کوشش

تقریباً 9 سو سے زیادہ صفحات پر مشتمل بھگود گیتا کا اردو ترجمہ کئی اعتبار سے اہم ہے ۔ اسکان کی طرف سے شائع ہونے والے اس ترجمے میں شری کرشنا کی تعلیمات کو عام فہم لیکن معیاری اردو زبان میں پیش کرنے کی کوشش کی گئی ہے ۔

  • Share this:
بھگود گیتا کے اردو ترجمہ سے مسلمانوں کا دل جیتنے کی کوشش
بھگود گیتا کے اردو ترجمہ سے مسلمانوں کا دل جیتنے کی کوشش

الہ آباد : یوں تو بھگوت گیتا کے متعدد ترجمے اردو میں پہلے سے موجود ہیں ، لیکن بیشتر ترجمے کافی پرانے ہو گئے ہیں اور ان کی زبان بھی اب عام فہم نہیں رہی ۔ شریمد بھگوت گیتا کے پیغام کو مسلمانوں تک پہنچانے کیلئے اب گیتا کو آسان اردو زبان میں دستیاب کرایا جا رہا ہے ۔ دنیا کی مختلف زبانوں میں گیتا کی تعلیم کی تشہیر کرنے والی تنظیم اسکان سے وابستہ ادارے ’’ بھگوتی ویدانت ٹرسٹ ‘‘ نے گیتا کو مسلمانوں کیلئے معیاری اردو ترجمے کے ساتھ شائع کیا ہے ۔ اردومیں گیتا کے ترجمے کے ساتھ ساتھ بھگوان شری کرشنا کی تعلیمات کی مختصر تشریح  بھی پیش کی گئی ہے ۔


تقریباً 9 سو سے زیادہ صفحات پر مشتمل بھگود گیتا کا اردو ترجمہ کئی اعتبار سے اہم ہے ۔ اسکان کی طرف سے شائع ہونے والے اس ترجمے میں شری کرشنا کی تعلیمات کو عام فہم لیکن معیاری اردو زبان میں پیش کرنے کی کوشش کی گئی ہے ۔ اس ترجمے کی ایک خاص بات یہ بھی ہے کہ اس کو براہ راست سنسکرت سے اردو زبان میں منتقل کیا گیا ہے ۔ اسکان سے وابستہ افراد کا کہنا ہے کہ وہ اردو ترجمہ کے ذریعے مسلمانوں تک گیتا کا پیغام پہنچانا چاہتے ہیں ۔ گیتا کی تعلیمات کو اردو قالب میں ڈھالنے کے لئے سنسکرت اشلوک کا ترجمہ اوراس کی تشریح اردو میں پیش کی گئی ہے ۔


الہ آباد کے گئو گھاٹ پر واقع اسکان کے دفتر میں بھگوت گیتا کے اردو ترجمے موجود ہیں ۔ اسکان کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ عام طور سے اردو ترجمہ کو برائے نام قیمت پر ہدیہ کیا جاتا ہے ۔ تاہم اگر کوئی اس کو مفت حاصل کرنا چاہتا ہے تو وہ اس کو مایوس نہیں کریں گے ۔ اسکان کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ گیتا کا پیغام ساری انسانیت کیلئے عام ہے ۔ حالانکہ اسکان اس پہلے بھی اردو میں گیتا کا ترجمہ شائع کر چکا ہے ۔ تاہم گیتا کی تعلیمات کی تشریح اور فرہنگ کے ساتھ اس کو پہلی مرتبہ شائع کیا گیا ہے ۔ ملک کے بدلے ہوئے فرقہ وارانہ ماحول کے پیش نظر اسکان نے اردو گیتا کو مسلمانوں کیلئے تحفے کے طور پر پیش کیا ہے۔

First published: Feb 20, 2020 10:55 PM IST