உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سیکس ورکر کو اب ایڈریس پروف کے بغیر ملے گا آدھارکارڈ، UIDAI نے سپریم کورٹ میں کہا، جانئے کیوں

    سیکس ورکر کو اب ایڈریس پروف کے بغیر ملے گا آدھارکارڈ، UIDAI نے سپریم کورٹ میں کہا، جانئے کیوں

    سیکس ورکر کو اب ایڈریس پروف کے بغیر ملے گا آدھارکارڈ، UIDAI نے سپریم کورٹ میں کہا، جانئے کیوں

    Aadhaar Card For Sex Workers : یو آئی ڈی اے آئی نے سپریم کورٹ کو مطلع کیا ہے کہ وہ NACO کے ذریعہ دئے جانے والے سرٹیفکیٹ کی بنیاد پر سیکس ورکرس کو آدھار کارڈ جاری کرے گا ۔ آدھار کارڈ جاری کرنے کیلئے کوئی دوسرا رہائشی سرٹیکفیٹ نہیں مانگا جائے گا۔

    • Share this:
      نئی دہلی : UIDAI نے سپریم کورٹ کو مطلع کیا ہے کہ وہ NACO کے ذریعہ دئے جانے والے سرٹیفکیٹ کی بنیاد پر سیکس ورکرس کو آدھار کارڈ جاری کرے گا ۔ آدھار کارڈ جاری کرنے کیلئے کوئی دوسرا رہائشی سرٹیکفیٹ نہیں مانگا جائے گا۔ UIDAI ایک قانونی اتھاریٹی جو درخواست گزار کے نام ، جنس ، عمر اور پتہ کے ساتھ ساتھ متبادل ڈیٹا جیسے ای میل یا موبائل نمبر شامل کرنے کے ضروری تفصیلات جمع کرنے کے بعد آدھار کارڈ جاری کرتا ہے ۔

      سیکس ورکرس کے معاملہ میں UIDAI نے ایڈریس پروف نہیں مانگنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس کی بجائے وہ سرٹیکفیٹ قبول کرنے کا فیصلہ کیا ہے جو سیکس ورکرس کو NACO کے گزیٹیڈ افسر یا ریاست کے محکمہ صحت کے ذریعہ جاری کیا گیا ہو ۔ NACO ، مرکزی وزارت صحت اور خاندانی بہبود کے تحت ایک محکمہ ہے اور سیکس ورکرس پر ایک مرکزی ڈیٹابیس مینٹین کرتا ہے ۔

      2011 سے چل رہی ہے سماعت

      پیر کو UIDAI نے سرٹیفکیٹ کا ایک مجوزہ پروفارما عدالت عظمی کے سامنے اس وقت پیش کیا جب اس معاملہ پر جسٹس ایل این راو پورے ہندوستان میں سیکس ورکرس کو سماجی تحفظ کا فائدہ پہنچانے سے متعلق ایک عرضی پر سماعت کررہے تھے ۔ اس عرضی میں ان لوگوں کیلئے بازآبادکاری اسکیم تیار کرنے کا معاملہ بھی شامل ہے ، جو جسم فروشی کے دھندہ سے باہر نکلنا چاہتے ہیں ۔ بتادیں کہ سپریم کورٹ اس معاملہ میں 2011 سے سماعت کررہی ہے ۔

      UIDAI کا حلف نامہ ، عدالت کے 10 جنوری کے اس حکم کے جواب میں آیا ہے ، جس میں اتھاریٹی سے یہ پتہ لگانے کیلئے کہا گیا تھا کہ کیا NACO  کے پاس موجود جانکاری کو سیکس ورکرس کے ایڈریس پروف کے طور پر مانا جاسکتا ہے اور اسی کی بنیاد پر انہیں آدھار کارڈ جاری کیا جاسکتا ہے ؟
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: