உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جہانگیرپوری میں بلڈوزر پر لگی روک، MCD کو سپریم کورٹ کا حکم، جوں کی توں صورتحال بنائے رکھیں

    جہانگیرپوری میں بلڈوزر پر لگی روک، MCD کو سپریم کورٹ کا حکم، جوں کی توں صورتحال بنائے رکھیں

    جہانگیرپوری میں بلڈوزر پر لگی روک، MCD کو سپریم کورٹ کا حکم، جوں کی توں صورتحال بنائے رکھیں

    Delhi Jahangirpuri Violence : دہلی کے جہانگیر پوری میں ایم سی ڈی کی طرف سے غیر قانونی تعمیرات کو ہٹانے کا معاملہ سپریم کورٹ پہنچ گیا ہے۔ سپریم کورٹ نے بدھ کو جاری جہانگیر پوری میں ایم سی ڈی کی تجاوزات ہٹانے کی مہم پر روک لگا دی ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: دہلی کے جہانگیر پوری میں ایم سی ڈی کی طرف سے غیر قانونی تعمیرات کو ہٹانے کا معاملہ سپریم کورٹ پہنچ گیا ہے۔ سپریم کورٹ نے بدھ کو جاری جہانگیر پوری میں ایم سی ڈی کی تجاوزات ہٹانے کی مہم پر روک لگا دی ہے۔ سپریم کورٹ نے دہلی کے جہانگیر پوری میں جوں کی توں صورتحال کو برقرار رکھنے کا حکم دیا ہے۔ عدالت نے کہا کہ جہانگیرپوری میں تجاوزات ہٹانے کی مہم کے خلاف درخواست کی سماعت کل ہوگی ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : اس وجہ سے عدالت نے دی مسلم خواتین کی نیلامی کاایپ بنانے والوں کو ضمانت


      سپریم کورٹ میں پیش ہونے والے سینئر وکیل دشینت دوے نے کہا کہ تجاوزات ہٹاو مہم کا وقت دوپہر 2 بجے بتایا گیا تھا ، لیکن انہدامی کارروائی صبح 9 بجے شروع ہوگئی۔ درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ ریاستوں کو حکم دیا جائے کہ عدالت کی اجازت کے بغیر کسی کے گھر یا دکان کو نہیں گرایا جائے گا ۔


      دراصل دہلی کے جہانگیر پوری کے تشدد زدہ علاقہ میں بدھ کی صبح 9 بجے سے تجاوزات ہٹاو مہم شروع ہوئی تھی۔ سڑکوں پر بلڈوزر سے ناجائز تجاوزات ہٹانے کا کام جاری تھا، تبھی اسے روکنے کے لیے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی گئی اور سپریم کورٹ نے بلڈوزر پر بریک لگا دی۔ آپریشن کے دوران بڑی تعداد میں پولیس اور نیم فوجی دستوں کو تعینات کیا گیا ہے۔ این ڈی ایم سی کے میئر راجہ اقبال سنگھ نے اس کارروائی کو معمول کی مہم قرار دیا ہے۔

       

      یہ بھی پڑھئے: Delhi Violence:پانچ ملزمین انصار، سلیم، سونو، دلشاد اور آہیر پر لگا NSA، اب تک 26گرفتار، جانیے بڑی باتیں


      غور طلب ہے کہ کہ ہفتہ کو شمال مغربی دہلی کے جہانگیرپوری میں ہنومان جینتی جلوس کے دوران دو کمیونیٹیوں کے درمیان پتھراؤ، آتش زنی اور فائرنگ کے واقعات پیش آئے تھے ۔ اس تشدد میں آٹھ پولیس اہلکاروں کے علاوہ ایک مقامی شہری زخمی ہوگیا تھا ۔ اس کے بعد بی جے پی نے غیر قانونی تجاوزات کو ہٹانے کا مطالبہ کیا تھا ۔ اس کے بعد ایم سی ڈی نے 20 اور 21 اپریل کو تجاوزات ہٹاو مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

      اب سپریم کورٹ نے حکم امتناعی دے دیا ہے ۔ اگلے احکامات تک بلڈوزر نہیں چل سکے گا۔ حتمی فیصلہ جمعرات کی سماعت میں ہی کیا جائے گا۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: