உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Haryana News: مہرشی دیانند یونیورسٹی کے گیٹ پر تابڑتوڑ فائرنگ، گولی لگنے سے چار طلبہ زخمی

    Haryana News: مہرشی دیانند یونیورسٹی کے گیٹ پر تابڑتوڑ فائرنگ، گولی لگنے سے چار طلبہ زخمی

    Haryana News: مہرشی دیانند یونیورسٹی کے گیٹ پر تابڑتوڑ فائرنگ، گولی لگنے سے چار طلبہ زخمی

    Haryana News: مہرشی دیانند یونیورسٹی کے گیٹ نمبر ایک کے پاس ایک کار میں سوار ہوکر آئے نوجوانوں نے تابڑتوڑ فائرنگ کردی ۔ اس واقعہ میں چار نوجوان گولی لگنے سے زخمی ہوگئے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Haryana | Chandigarh | Rohtak
    • Share this:
      روہتک : مہرشی دیانند یونیورسٹی کے گیٹ نمبر ایک کے پاس ایک کار میں سوار ہوکر آئے نوجوانوں نے تابڑتوڑ فائرنگ کردی ۔ اس واقعہ میں چار نوجوان گولی لگنے سے زخمی ہوگئے ، جس میں سے ایک مہرشی دیانند یونیورسٹی کا طالب علم بتایا جارہا ہے ۔ باقی کے تین طلبہ کے بارے میں ابھی کوئی جانکاری سامنے نہیں آئی ہے ۔ وہیں اطلاع ملنے کے بعد جائے واقعہ پر پہنچی پولیس نے چاروں طلبہ کو علاج کیلئے روہتک پی جی آئی میں بھرتی کرایا ہے، جہاں سے اہل خانہ انہیں پرائیویٹ اسپتال میں لے گئے ہیں ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ معاملہ کی جانچ کی جارہی ہے اور جلد ہی پورے معاملہ کا انکشاف ہوجائے گا ۔ وہیں مہرشی دیانند یونیورسٹی کے سیکورٹی اہلکاروں کا کہنا ہے کہ پیسوں کے لین دین کو لے کر دو گروپ کے درمیان تنازع تھا اور جس میں یہ فائرنگ ہوئی ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: Delhi News: مصطفی آباد علاقہ میں دیوار گری، ایک مزدور کی دب کر موت


      دراصل آج مہرشی دیانند یونیورسٹی میں ہریانہ کے گورنر بنڈارو دتاتریہ کا پروگرام تھا ۔ گورنر کے یونیورسٹی سے نکلنے کے تقریبا 20 منٹ بعد لائبریری گیٹ نمبر ایک کے پاس تابڑتوڑ فائرنگ ہوگئی ، جس میں چار نوجوان سنگین طور پر زخمی ہوگئے، جو کلدیپ ، سشیل ، وجیت اور ہرش بتائے گئے ہیں ۔ ان میں سے ایک مہرشی دیانند یونیورسٹی کا طالب علم بھی ہے جبکہ دیگر تینوں کے بارے میں ابھی تک پوری جانکاری نہیں مل سکی ہے ۔ انہیں زخمی حالت میں روہتک پی جی آئی لے جایا گیا ، جہاں سے ان کے اہل خانہ چاروں زخمیوں کو پرائیویٹ اسپتال میں لے گئے ۔



       

      یہ بھی پڑھئے: پائلٹ نے والمارٹ اسٹور سے طیارہ ٹکرانے کی دی دھمکی، پولیس ہائی الرٹ


      یونیورسٹی کے چیف سیکورٹی افسر بلراج سنگھ نے بتایا کہ یہ واقعہ ہریانہ کے گورنر بنڈارو کے یونیورسٹی سے نکلنے کے صرف 20 منٹ بعد پیش آیا اور کوئی پیسے کے لین دین کے معاملہ کی وجہ سے یہ دو گروپوں کے درمیان آپسی تنازع تھا ۔ وہیں واقعہ کی اطلاع ملنے کے بعد پی جی آئی تھانہ پولیس اور ایف ایس ایل کی ٹیمیں جائے واقعہ پر پہنچ کر جانچ شروع کردی ہیں ۔

      پی جی آئی تھانہ انچارج پربھاری پرمود نے بتایا کہ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی وہ جائے واقعہ پر پہنچ گئے تھے ۔ فی الحال زخمیوں کے بیانات درج کرنے کے بعد اگلی کارروائی عمل میں لائی جائے گی ۔ ان کے بیانات درج ہونے کے بعد ہی اس واقعہ کے پیچھے کی وجہ کا پتہ چل سکے گا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: