உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی سے دبئی جارہی Spicejet کی فلائٹ کی کراچی میں ہوئی لینڈنگ، مسافروں کو بحفاظت اتارا گیا، جانئے کیوں

    دہلی سے دبئی جارہی Spicejet کی فلائٹ کی کراچی میں ہوئی لینڈنگ، مسافروں کو بحفاظت اتارا گیا، جانئے کیوں ۔ علامتی تصویر ۔

    دہلی سے دبئی جارہی Spicejet کی فلائٹ کی کراچی میں ہوئی لینڈنگ، مسافروں کو بحفاظت اتارا گیا، جانئے کیوں ۔ علامتی تصویر ۔

    Delhi-Dubai SpiceJet Flight Diverted To Karachi: اسپائس جیٹ کی دہلی سے دبئی جانے والی SG-11 فلائٹ کی تکنیکی خرابی کے بعد کراچی (پاکستان) میں ایمرجنسی لینڈنگ کی گئی ہے ۔ طیارے میں سوار تمام مسافر محفوظ ہیں ۔

    • Share this:
      نئی دہلی: اسپائس جیٹ کی دہلی سے دبئی جانے والی SG-11 فلائٹ کی تکنیکی خرابی کے بعد کراچی (پاکستان) میں ایمرجنسی لینڈنگ کی گئی ہے ۔ طیارے میں سوار تمام مسافر محفوظ ہیں ۔ اس سلسلہ میں ایک بیان جاری کرتے ہوئے اسپائس جیٹ کے ترجمان نے کہا کہ اسپائس جیٹ کے B737 ائیرکرافٹ آپریٹنگ فلائٹ SG-11 (دہلی - دبئی) کو ایک انڈیکیٹر لائٹ کی خرابی کی وجہ سے کراچی کی طرف موڑ دیا گیا تھا۔ طیارہ کراچی میں بحفاظت لینڈ کر گیا ہے اور مسافروں کو بحفاظت اتار لیا گیا ہے ۔ اسپائس جیٹ کے ترجمان نے کہا کہ کسی ہنگامی صورتحال کا اعلان نہیں کیا گیا اور طیارہ کی معمول کے مطابق لینڈنگ ہوئی ۔ طیارہ میں کسی خرابی کی پہلے کوئی رپورٹ نہیں تھی ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: ملک کی 177 اہم شخصیات کا CJI کو خط، 'نوپور شرما معاملہ میں SC نے پار کی لکشمن ریکھا'


      مسافروں کو ناشتہ کرایا گیا ہے۔ دوسرا طیارہ کراچی بھیجا جا رہا ہے جو مسافروں کو دبئی لے کر جائے گا۔ بتادیں کہ اس سے پہلے بھی اسپائس جیٹ کے طیارے کو لے کر کئی واقعات سامنے آ چکے ہیں۔ حال ہی میں دہلی سے جبل پور جا رہے اسپائس جیٹ کے طیارہ کو خرابی کی وجہ سے دوبارہ دہلی واپس آنا پڑا تھا ۔ دراصل جب طیارہ 5000 میٹر کی بلندی پر تھا تو اچانک کیبن میں دھواں پھیلنے لگا، جس کی وجہ سے طیارہ کی دہلی میں لینڈنگ کرانی پڑی تھی ۔ تاہم کچھ دیر بعد مسافروں کو دوسرے طیارہ سے جبل پور لے جایا گیا۔

       

      یہ بھی پڑھئے: موسمی خرابی کے بعد کشمیر میں امرناتھ یاترا کو کیا گیا عارضی طور پر معطل


      وہیں اس واقعہ سے پہلے بھی پٹنہ میں اسپائس جیٹ کا ایک طیارہ پرندے سے ٹکرا گیا تھا، جس کی وجہ سے انجن میں آگ لگ گئی تھی۔ اس کے بعد طیارہ نے پٹنہ ایئرپورٹ پر ایمرجنسی لینڈنگ کی تھی ۔

      ڈی جی سی اے نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ اسٹاف نے بائیں ٹینک سے ایندھن کی مقدار میں غیر معمولی کمی دیکھی۔ متعلقہ غیر معمولی چیک لسٹ کی گئی۔ حالانکہ ایندھن کی مقدار کم ہوتی رہی۔ اے ٹی سی کی مدد سے طیارے کو کراچی بھیجا گیا۔ اڑان بھرنے کے بعد کے معائنہ کے دوران پایا گیا کہ بائیں مین ٹینک سے کوئی رساو نہیں دیکھا گیا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: