உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کورونا سے اموات پر WHO کے اعداد و شمار پر ہندوستان نے کیا سخت اعتراض، جانئے کیوں

    کورونا سے اموات پر WHO کے اعداد و شمار پر ہندوستان نے کیا سخت اعتراض، جانئے کیوں ۔ فائل فوٹو ۔

    کورونا سے اموات پر WHO کے اعداد و شمار پر ہندوستان نے کیا سخت اعتراض، جانئے کیوں ۔ فائل فوٹو ۔

    World Health Organization Covid19 deaths Figures: زیادہ تر اموات جنوب مشرقی ایشیا، یورپ اور امریکہ میں ہوئیں۔ اس رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ ہندوستان میں کورونا سے 47 لاکھ اموات ہوئی ہیں۔ حالانکہ ڈبلیو ایچ او کے ان اعداد و شمار پر ہندوستان نے سخت اعتراض کیا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی : عالمی صحت تنظیم ڈبلیو ایچ او کا اندازہ ہے کہ پچھلے دو سالوں میں تقریبا ۔۔۔ کروڑ لوگوں نے یا تو کورونا وائرس یا ہیلتھ سسٹم پر پڑے اس کے اثر کی وجہ سے اپنی جانیں گنوائی ہیں ۔ یہ ممالک کے ذریعہ مہیا کرائے گئے آفیشیل اعداد و شمار کے مطابق 60 لاکھ اموات سے دوگنے سے زیادہ ہے ۔ زیادہ تر اموات جنوب مشرقی ایشیا، یورپ اور امریکہ میں ہوئیں۔ اس رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ ہندوستان میں کورونا سے 47 لاکھ اموات ہوئی ہیں۔ حالانکہ ڈبلیو ایچ او کے ان اعداد و شمار پر ہندوستان نے سخت اعتراض کیا ہے۔

       

      یہ بھی پڑھئے : جموں و کشمیر اسمبلی میں پہلی مرتبہ کشمیری پنڈتوں کو ریزرویشن، جانئے رپورٹ کی 5 اہم باتیں


      ڈبلیو ایچ او کے سربراہ ٹیڈروس ایڈنام گیبریئس نے اس اعداد و شمار کو "سنگین" بتاتے ہوئے کہا کہ اس سے ممالک کو مستقبل میں صحت کی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے اپنی صلاحیتوں میں مزید سرمایہ کاری کرنے کی ترغیب ملنی چاہئے۔

       

      یہ بھی پڑھئے : جموں و کشمیر کے کس ضلع کو ملی کتنی اسمبلی سیٹیں؟ 5 لوک سبھا سیٹوں کے بارے میں بھی یہاں جانئے


      عالمی صحت ادارہ کی جانب سے جاری اعداد و شمار پر ہندوستانی حکومت نے سخت اعتراض کیا ہے۔ حکومت کی جانب سے کہا گیا ہے کہ ڈبلیو ایچ او نے ہندوستان کے خدشات کو مناسب طریقے سے دور کئے بغیر ہی اضافی شرح اموات تخمینہ جاری کیا ہے ۔ ہندوستان نے کہا کہ ان اعداد و شمار کو جاری کرنے کے لئے جن ماڈلوں کی ویلڈیٹی اور جس ڈیٹا میتھولاجی کا استعمال کیا گیا ہے ، وہ مشتبہ ہے ۔


      حکومت ہند نے کہا کہ ’’اس ڈیٹا پر اعتراض ہے۔ ڈبلیو ایچ او کے ماڈل، ڈیٹا کلیکشن، ڈیٹا سورس، عمل (میتھوڈولاجی) پر سوالات ہیں۔ ہم سبھی آفیشیل چینلز کا استعمال کریں گے اور اس ڈیٹا کے اعتراض کو ہم ایگزیکٹو بورڈ کے سامنے رکھیں گے۔

      ہندوستان نے کہا کہ 17 ریاستوں کی بنیاد پر اعداد و شمار جاری کیا گیا تو 17 ریاستوں کا انتخاب کس بنیاد پر کیا گیا؟ ہمارے لگاتار پوچھنے پر 4 ماہ بعد ان ریاستوں کے نام بتائے گئے۔ تاہم کب تک یا کس وقت تک کا ڈیٹا ڈبلیو ایچ او نے لیا ، یہ جانکاری دنہیں دی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: