ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

قبرستانوں میں مفت تدفین کے لئے تلنگانہ وقف بورڈ کا بڑا قدم، اپنےطرز کے پہلے ہیلپ ڈیسک کا قیام

وقف بورڈ چیئرمین محمد سلیم نے قبرستان میں دفنانے کی اجازت نہ دینے والوں کے خلاف سخت کارروائی کا انتباہ دیا۔

  • Share this:
قبرستانوں میں مفت تدفین کے لئے تلنگانہ وقف بورڈ کا بڑا قدم، اپنےطرز کے پہلے ہیلپ ڈیسک کا قیام
قبرستانوں میں مفت تکفین کے لئے تلنگانہ وقف بورڈ کا بڑا قدم

حیدرآباد: ماہ رمضان کے آخری جمعہ یعنی جمعتہ الوداع  کے دن حیدرآباد کے مضافات حیدر شاہ کوٹ  میں ایک مسلمان شخص محمد خواجہ میاں کا دل کا دورہ پڑھنے سے انتقال اور مقامی مسلم قبرستانوں میں انھیں دفنانے کی اجازت دینے سے متولیوں اور انتظامی کمیٹیوں کے انکار کے بعد متوفی کے رشتہ داروں نے مجبوراً قریب کے ہندو قبرستان میں تکفین کی نیوز 18 اردو  کی جانب سے سب سے پہلے اس خبر کے اشاعت کے بعد نہ صرف پورے ہندوستان بلکہ دنیا بھر میں مقیم ہندوستانی مسلمانوں نے اپنے غم و غصہ کا اظہار کیا اور بورڈ سے مطالبہ کیا گیا کہ کسی بھی مسلم شخص کو اپنے علاقہ میں ہی نہیں  ضرورت کے مطابق دیگر علاقوں میں بھی دفنانے کا انتظام کیا جائے۔


وقف بورڈ چیئرمین محمد سلیم نے قبرستان میں دفنانے کی اجازت نہ دینے والوں کے خلاف سخت کارروائی کا انتباہ دیا۔ چیئرمین محمد سلیم نے ایک سرکولر جاری کرتے ہوئے مسلم میت کو ضرورت کے مطابق کسی بھی قبرستان میں دفنانےکی اجازت دینےکے احکامات جاری کئے بصورت دیگر اجازت نہ دینے والے متولیوں کے خلاف قانونی کارروائی کی بات کی گئی۔


تلنگانہ وقف بورڈ کے چیئرمین محمد سلیم نے کہا کہ مسلم متوفی کی غیر مسلمانوں کے قبرستان میں تدفین کے  واقعہ کی جانچ  کروائی جائے گی۔ اس کے بعد تلنگانہ اسٹیٹ وقف بورڈ نے ملک میں اپنے طرز کا پہلا اقدام کرتے ہوئے ایک ہیلپ لائن ڈیسک  کا قیام عمل میں لایا۔ اس ہیلپ لائن ڈیسک کا مقصد مسلم میتوں کو بغیرکسی مشکل ہر قبرستان میں مفت تدفین کو یقینی بنانا ہے۔ ہیلپ لائن ڈیسک کا نمبر 7995560136 ہے۔ محمد سلیم نےکہا کہ اس نمبر پر ہردن اور ہر وقت وقف بورڈ کا اسٹاف دستیاب رہے گا۔


تدفین کیلئے مشکلات کی صورت میں اس نمبر پر کال کرتے ہوئے اپنی شکایات درج کروا سکتے ہیں۔ کسی بھی طرح کی مشکل پیش آنے کی صورت میں ریاستی وقف بورڈ کا عملہ فوری اس مقام پر پہنچ کر مسئلہ کو حل کرے گا۔ وقف کا عملہ ضرورت پڑنے پر پولیس کی مدد بھی لے سکتا ہے۔ اسی دوران یہ بھی یہ بھی تجویز پیش کی جا رہی ہے کہ ہندو قبرستان میں مدفون مذکورہ مسلم شخص محمد خواجہ میاں کی میت کو منتقل کرتے ہوئے مسلم قبرستان میں دفن کیا جائے، لیکن مرحوم کے افراد خاندان اس تجویز پر کسی بھی قسم کا فیصلہ نہیں لے پا رہے ہیں۔
First published: May 31, 2020 05:38 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading