ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

بہار : پٹنہ کے سبزی باغ میں سی اے اے اور این آر سی کے خلاف خواتین کا احتجاج چوتھے دن بھی جاری

احتجاج میں شامل خواتین کے مطابق جب تک انکی مانگ پوری نہیں ہوگی ، ان کا احتجاج جاری رہےگا۔

  • Share this:
بہار : پٹنہ کے سبزی باغ میں سی اے اے اور این آر سی کے خلاف خواتین کا احتجاج چوتھے دن بھی جاری
پٹنہ کے سبزی باغ میں سی اے اے اور این آر سی کے خلاف خواتین کا احتجاج چوتھے دن بھی جاری . تصویر محفوظ عالم ۔

پٹنہ کا سبزی باغ کسی تعارف کا محتاج نہیں ہے۔ سبزی باغ میں اٹھائے جانے والے اقدامات پر بہار کی نظر ہوتی ہے خاص طور سے ریاست کا مسلمان سبزی باغ کے لائحہ عمل کو کافی سنجیدگی سے لیتا ہے۔ سی اے اے، این پی آر اور این آر سی کے معاملے پر دہلی کے شاہین باغ میں جاری احتجاج کی لو سبزی باغ پہنچ چکا ہے۔ خواتین  بڑی تعداد میں سڑکوں پر اتر چکی ہیں اور اپنے حق کو حاصل کرنے کا نعرہ لگا رہی ہیں۔


سبزی باغ میں جہاں احتجاج کا اسٹیج بنایا گیا ہے وہ راستہ کھیتان مارکیٹ، ہتھوا مارکیٹ کو جوڑتا ہے۔ یہ پورا علاقہ پٹنہ کا تجارتی مرکز ہے۔ سبزی باغ کے دکانداروں نے احتجاج کررہی خواتین کی حمایت کی ہے۔ دوکاندار زیادہ تر ہندو سماج کے ہیں ، جنہوں نے اس قانون کے خلاف آواز اٹھا رہی خواتین کی آواز میں آواز ملایا ہے۔سبزی باغ کے احتجاج کا اسٹیج سبھی کو خیرمقدم کررہا ہے۔ احتجاج کے اسٹیج سے کنہیا کمار، آرجےڈی ایم ایل اے اخترالاسلام شاہین، بہار اسمبلی کے سابق اسپیکر ادے نارائن چودھری، کانگریس پارٹی کے ایم ایل اے شکیل احمد خان کے علاوہ روزانہ الگ الگ تنظیموں کے لیڈر، سماجی کارکن، عالم دین خطاب کررہے ہیں۔


سبزی باغ میں جہاں احتجاج کا اسٹیج بنایا گیا ہے وہ راستہ کھیتان مارکیٹ، ہتھوا مارکیٹ کو جوڑتا ہے۔ تصویر : محفوظ عالم ۔
سبزی باغ میں جہاں احتجاج کا اسٹیج بنایا گیا ہے وہ راستہ کھیتان مارکیٹ، ہتھوا مارکیٹ کو جوڑتا ہے۔ تصویر : محفوظ عالم ۔


احتجاج میں شامل خواتین کے مطابق جب تک انکی مانگ پوری نہیں ہوگی ، ان کا احتجاج جاری رہےگا۔ حالانکہ پولیس نے خواتین اور مقامی لوگوں کو سمجھانے کی کوشش کی ، لیکن مظاہرین نے اس کا کوئی نوٹس نہیں لیا۔ سبزی باغ کے مین سڑک پر ہو رہے احتجاج سے لوگوں کو کوئی مشکل پیش نہیں آئے ، اس کا بھی خاص خیال رکھاگیا ہے ۔ سڑک کے آدھے حصے میں خواتین دھرنے پر بیٹھی ہیں اور آدھے حصے کو کھلا چھوڑ دیاگیا ہے جہاں مقامی لوگ ٹریفک کا انتظام سبنھال رہے ہیں ۔ یعنی تجارتی کام بھی علاقہ میں جاری ہے اور احتجاج بھی اپنے شباب پر ہے۔

احتجاج میں شامل خواتین کے مطابق جب تک انکی مانگ پوری نہیں ہوگی ، ان کا احتجاج جاری رہےگا۔ تصویر : محفوظ عالم ۔
احتجاج میں شامل خواتین کے مطابق جب تک انکی مانگ پوری نہیں ہوگی ، ان کا احتجاج جاری رہےگا۔ تصویر : محفوظ عالم ۔


جو خواتین اپنے گھروں کی دہلیز سے نکلنا گوارہ نہیں کرتی تھیں ، اب انہیں مظاہرہ کرتے اور احتجاج کرتے دیکھا جارہا ہے۔ ہاتھوں میں جہاں ترنگا ہے تو وہیں زبان پر آئین کی حفاظت کا نعرہ ہے۔
First published: Jan 15, 2020 07:26 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading