ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

بہار : انسانی زنجیر کے دوران دربھنگہ میں اردو ٹیچر محمد داود کی موت ، چار لاکھ کے معاوضہ کا اعلان

انسانی زنجیر کے قطار میں کھڑے محمد داؤد نام کے ایک اردو ٹیچر کی موت ہوگئی ۔ محمد داؤد کیوٹی کے دیگھیار مڈل اسکول میں اردو کے ٹیچر تھے ۔

  • Share this:
بہار : انسانی زنجیر کے دوران دربھنگہ میں اردو ٹیچر محمد داود کی موت ، چار لاکھ کے معاوضہ کا اعلان
انسانی زنجیر کے دوران دربھنگہ میں اردو ٹیچر محمد داود کی موت

بہار میں نتیش کمار کی حکومت نے ایک مرتبہ پھر سے ریکارڈ بنایا ہے۔ 2018 میں 14 ہزار کیلومیڑ کی انسانی زنجیر بنائی گئی تھی جبکہ اس مرتبہ 18 ہزار کلومیٹر طویل انسانی زنجیر بنائی گئی ہے ۔ پٹنہ سے لے کر ریاست کے تمام ضلعوں میں لوگ قطار میں کھڑے دیکھائی دئے ، جس میں اسکولوں کے بچے اور ٹیچروں کی بڑی تعداد بھی موجود تھی۔


دربھنگہ کے کیوٹی میں اس وقت ایک بڑا حادثہ پیش آگیا ، جب انسانی زنجیر کے قطار میں کھڑے محمد داؤد نام کے ایک اردو ٹیچر کی موت ہوگئی ۔ محمد داؤد کیوٹی کے دیگھیار مڈل اسکول میں اردو کے ٹیچر تھے ۔ ان کی عمر قریب 54 سال بتائی جارہی ہے ۔ محمد داؤد کیوٹی کے رنوے چوک پر قطار میں کھڑے تھے اور اچانک ان کی حالت بگڑ گئی اور وہ گر پڑے ۔ محمد داؤد کو اسپتال پہنچایا گیا ، لیکن اسپتال پہنچنے سے پہلے ہی ان کی موت ہوگئی ۔


محمد داؤد اسکول کے بچوں کو لے کر جل ، جیون ، ہریالی پروگرام کے تحت انسانی زنجیر میں شرکت کرنے رنوے چوک پر آئے تھے۔ ان کےساتھ اسکول کے دیگر اساتذہ بھی موجود تھے۔ اسکول کے بچوں کے ساتھ وہ بھی قطار میں کھڑے تھے ، تب ان کے ساتھ یہ حادثہ پیش آیا۔ جیسے ہی ان کی موت کی خبر ملی ، ضلع کے ڈی ایم تیاگ راجن سمیت سبھی بڑے افسران جائے واقعہ پر پہنچ گئے ۔ ضلع انتظامیہ نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے محمد داؤد کے گھروالوں کو ہر ممکن مدد کرنے کا بھروسہ دلایا ہے ۔ ادھر حکومت نے چار لاکھ روپے کے معاوضہ کا اعلان کیا ہے ۔


ادھر سابق مرکزی وزیر اور جے ڈی یو لیڈر علی اشرف فاطمی نے بھی ٹیچر کے انتقال پر گہرے صدمہ کا اظہار کیا ہے ۔ فاطمی نے اس کی جانکاری وزیر اعلی کو دی ۔ نیوز 18 سے بات چیت کرتے ہوئے علی اشرف فاطمی نے کہا کی ہم نے وزیر اعلیٰ سے فون پر بات کی ہے، ہمیں افسوس ہے کہ محمد داؤد کا انتقال ہوگیا ۔ ضلع انتظامیہ سے بھی ہماری بات ہوئی ہے۔ محمد داؤد کو حکومت کی طرف سے ہر ممکن مدد کی جائے گی ۔
First published: Jan 19, 2020 05:41 PM IST