امت شاہ کے جموں دورہ کے بعد حکومت سازی پرفیصلہ کرسکتی ہے بی جے پی

جموں وکشمیر میں ابھی گورنر راج نافذ کردیا گیا ہے، لیکن جمہوری طریقے سے حکومت بنانے کے امکانات ابھی ختم نہیں ہوئے ہیں۔ بی جے پی کے اعلیٰ ذرائع کے مطابق بی جے پی جلد جموں وکشمیر میں حکومت بنانے کی کوشش کرسکتی ہے۔

Jun 20, 2018 11:27 PM IST | Updated on: Jun 20, 2018 11:27 PM IST
امت شاہ کے جموں دورہ کے بعد حکومت سازی پرفیصلہ کرسکتی ہے بی جے پی

بی جے پی صدر امت شاہ: فائل فوٹو۔

نئی دہلی: جموں وکشمیر میں ابھی گورنر راج نافذ کردیا گیا ہے، لیکن جمہوری طریقے سے حکومت بنانے کے امکانات ابھی ختم نہیں ہوئے ہیں۔  بی جے پی کے اعلیٰ ذرائع کے مطابق بی جے پی جلد جموں وکشمیر میں حکومت بنانے کی کوشش کرسکتی ہے

بی جے پی کے پاس گرچہ حکومت بنانے کے لئے اعدادوشمار نہ ہوں، لیکن ذرائع کی باتوں پر یقین کریں تو بی جے پی جلد اکثریت کے لئے کوشش کرسکتی ہے۔ حالانکہ ابھی اس پر بی جے پی کچھ دنوں کے بعد فیصلہ لے گی۔

Loading...

جمں وکشمیر میں  اس وقت پی ڈی پی کے پاس 28 ممبران اسمبلی ہیں جبکہ بی جے پی کے پاس 25 ممبران اسمبلی ہیں۔ اس کے علاوہ نیشنل کانفرنس کے 15 اور کانگریس کے 12 ممبران اسمبلی ہیں۔ اس کے علاوہ جموں وکشمیر پیپلز کانفرنس کے دو، سی پی آئی ایم کے ایک، جموں وکشمیر پیپلز ڈیموکریٹک فرنٹ کا ایک اور 3 آزاد ممبران اسمبلی ہیں۔

بی جے پی ذرائع کے مطابق پی ڈی پی سے ناراض چل رہے سابق وزیر حاسب درابو سمیت کئی ممبران اسمبلی بی جے پی کے ریاستی لیڈران سے رابطہ میں ہیں۔ اس کے علاوہ جموں وکشمیر کے کئی آزاد ممبران اسمبلی بھی بی جے پی کے ساھ مل کر حکومت بنانے کے حق میں ہیں۔

بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ 23 جون کو جموں پہنچ رہے ہیں۔ وہاں جموں وکشمیر بی جے پی ممبران اسمبلی کی میٹنگ کریں گے اور آگے کی حکمت عملی پرغوروخوض کریں گے۔

کہاجارہا ہے کہ امت شاہ کی جموں میں ہونے والی میٹنگ میں ہی آگے کا خاکہ تیار کیا جائے گا اور اس بات پر بھی مہر لگے گی کہ آگے حکومت کیسے بنائی جائے۔

جموں میں امت شاہ کا والہانہ استقبال کیا جائے گا، پارٹی اس موقع پر بڑا پروگرام کرنے والی ہے۔ بی جے پی صدر امت شاہ 23 جون کو صبح 11 بجے جموں پہنچیں گے۔ وہ رات کو جموں میں ہی قیام کریں گے اور 24 جون کو صبح 11 بجے دہلی لوٹیں گے۔

امت شاہ کے ساتھ قومی جنرل سکریٹری رام لال اور ڈاکٹر شیاما پرساد مکھرجی فاونڈیشن کے ڈائریکٹر ڈاکٹر انیربن گانگولی بھی رہیں گے۔

اس کے علاوہ جموں میں امت شاہ بی جے پی ممبران پارلیمنٹ کے کام کرنے کے طریقہ کار پر آرایس ایس کی رائے جانیں گے۔ بی جے پی کی الیکشن منیجمنٹ کمیٹی سے میٹنگ کے علاوہ آرایس ایس سے بھی تقریباً ایک گھنٹے کی میٹنگ ہوگی۔ آرایس ایس کے رہنماوں، پرچارک، صوبائی کارگزاررہنماوں سے لے کر وشو ہندو پریشد اور دیگر تنظیموں کے لیڈر شامل رہیں گے۔

Loading...