ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

بریکنگ نیوز: بی جے پی کا بڑا اعلان، سشیل کمار مودی ہوں گے بہار سے راجیہ سبھا امیدوار

سابق مرکزی وزیر اور ایل جے پی لیڈر رام ولاس پاسوان کے انتقال کے بعد خالی ہوئی راجیہ سبھا سیٹ کے لئے بی جے پی نے امیدوار کا اعلان کردیا ہے۔ بی جے پی نے بہار کے سابق نائب وزیر اعلیٰ سشیل کمار مودی کو راجیہ سبھا کا امیدوار بنایا ہے۔

  • Share this:
بریکنگ نیوز: بی جے پی کا بڑا اعلان، سشیل کمار مودی ہوں گے بہار سے راجیہ سبھا امیدوار
بریکنگ نیوز: بی جے پی کا بڑا اعلان، سشیل کمار مودی ہوں گے بہار سے راجیہ سبھا امیدوار

پٹنہ/ نئی دہلی: سابق مرکزی وزیر اور ایل جے پی لیڈر رام ولاس پاسوان (Ram Vilas Paswan) کے انتقال کے بعد خالی ہوئی راجیہ سبھا سیٹ کے لئے بی جے پی نے امیدوار کا اعلان کردیا ہے۔ بی جے پی نے بہار کے سابق نائب وزیر اعلیٰ سشیل کمار مودی (Sushil Kumar Modi) کو راجیہ سبھا کا امیدوار بنایا ہے۔ یہی نہیں، راجیہ سبھا امیدوار بنائے جانے کے بعد جے ڈی یو کے ریاستی صدر وششٹھ نارائن سنگھ نے سشیل کمار مودی کو فون کرکے مبارکباد دی ہے۔ ویسے راجیہ سبھا کی اس ایک سیٹ پر الیکشن کمیشن (Election commission) کی تیاری مکمل ہوچکی ہے اور اس پر 14 دسمبر کو ضمنی انتخابات ہوں گے۔ واضح رہے کہ رام ولاس پاسوان بی جے پی اور جے ڈی یو کے تعاون سے 2019 بلامقابلہ منتخب ہوئے تھے۔ اس سیٹ کی مدد 2 اپریل 2024 تک ہے۔ بہار سے ایوان بالا کے رکن رام ولاس پاسوان کا اسی سال 8 اکتوبر کو انتقال ہوگیا ہے۔


آپ کو بتادیں کہ اس بار نتیش کمار کے ’سرکاری ساتھی’ مانے جانے والے سشیل کمار مودی کو بہار میں این ڈی اے کی جیت کے بعد کابینہ میں جگہ نہیں ملی ہے۔ حالانکہ انہیں نائب وزیر اعلیٰ نہ بنانے پر قیاس آرائیوں کا دور شروع ہوگیا تھا۔ اس دوران نتیش کمار نے میڈیا سے واضح طور پر کہا تھا کہ سشیل کمار مودی کو نائب وزیر اعلیٰ نہ بنانے کا فیصلہ بی جے پی کا ہے اور ان سے ہی سوال پوچھیں۔ جبکہ بی جے پی لیڈروں نے کہا تھا کہ ہم سب پارٹی کے کارکن ہیں اور یہ ہماری خوش قسمتی ہے۔ ویسے قیاس آرائی یہ بھی تھی کہ بی جے پی بہار کے اس عظیم لیڈر کو راجیہ سبھا لے جاسکتی ہے اور اب اس بات پر مہر لگ گئی ہے۔


ایسا ہی ضمنی انتخاب کا پروگرام


اس ایک سیٹ کے ضمنی انتخاب کے لئے 14 دسمبر کو ووٹنگ کرائے جانے کا پروگرام طے کیا گیا ہے۔ اس کے پہلے 3 دسمبر تک پرچہ نامزدگی داخل کی جاسکے گی۔ 4 دسمبر کو جانچ کی آخری تاریخ طے کی گئی ہے۔ امیدوار 7 ستمبر تک اپنی دعویداری واپس لے سکتے ہیں۔ ضرورت پڑنے پر 14 دسمبر کو ووٹنگ ہوگی۔ صبح 9 بجے سے شام چار بجے تک ووٹنگ کا وقت متعین کیا گیا ہے۔ اس کے بعد نتائج کا اعلان کردیا جائے گا۔



بی جے پی نے کی تھی رام ولاس پاسوان کو پیشکش

رام ولاس پاسوان گزشتہ سال راجیہ سبھا ضمنی انتخاب جیتے تھے۔ بی جے پی نے این ڈی اے اتحادی لوک جن شکتی پارٹی کے لیڈر رہے رام ولاس پاسوان کو اس سیٹ کی پیشکش کی تھی۔ جبکہ مرکزی وزیر اور بی جے پی لیڈر روی شنکر پرساد کے 2019 کے لوک سبھا الیکشن جیتنے اور ان کے ایوان زیریں میں جانے کے بعد یہ سیٹ خالی ہوئی تھی۔ آپ کو بتادیں کہ راجیہ سبھا میں رام ولاس پاسوان ایل جے پی کے واحد امیدوار تھے۔

8 بار رہے لوک سبھا کے رکن

ماہر سیاسی موسمیات کہے جانے والے رام ولاس پاسوام 8 بار لوک سبھا رکن رہ چکے تھے اور فی الحال وہ راجیہ سبھا کے رکن تھے۔ پہلی بار وہ 1977 میں حاجی پور لوک سبھا سیٹ سے جنتا پارٹی کے امیدوار کے طور پر لوک سبھا پہنچے تھے۔ اس کے بعد وہ 1980، 1989، 1996 اور 1998، 1999، 2004 اور 2014 میں لوک سبھا رکن کے طور پر ملک کی پارلیمنٹ میں پہنچے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Nov 27, 2020 09:24 PM IST