مہاراشٹر: بی جے پی نےشیوسینا کودیا زبردست جھٹکا، 48 گھنٹےمیں بنائیں گےحکومت، شیو سینا نےکہا- نہیں ملا کوئی پرپوزل

مہاراشٹرکی سیاست میں شیوسینا کےساتھ چل رہی سیاسی جنگ کےدرمیان بی جے پی نےکہا ہے کہ ریاست میں اگلے 48 گھنٹوں کےاندرنئی حکومت بن سکتی ہے۔

Nov 06, 2019 09:24 PM IST | Updated on: Nov 06, 2019 09:33 PM IST
مہاراشٹر: بی جے پی نےشیوسینا کودیا زبردست جھٹکا، 48 گھنٹےمیں بنائیں گےحکومت، شیو سینا نےکہا- نہیں ملا کوئی پرپوزل

بی جے پی کا دعویٰ- مہاراشٹرمیں جلد ملنے والی ہے خوشخبری

ممبئی: مہاراشٹرکی سیاست میں شیوسینا اوربی جے پی میں حکومت بنانے کےلئے جاری رسہ کشی کے درمیان بی جے پی نےفرنٹ فٹ پرآتے ہوئےاگلے 48 گھنٹوں میں حکومت بنانےکا اعلان کردیا ہے۔ بی جے پی کے سینئرلیڈردھیرمنگنٹی وارنے بدھ کوکہا کہ مہاراشٹر کا اتحاد (شیوسینا- بی جے پی) برقرارہےاورلوگ کبھی بھی 'خوشخبری' کی امید کرسکتے ہیں۔ 'ہم ساتھ ساتھ ہیں'۔ دوسری جانب شیوسینا نے واضح طورپرکہا ہےکہ انہیں ابھی تک بی جے پی کی طرف سے حکومت بنانےکے لئے کوئی تجویزنہیں بھیجی گئی ہے۔

واضح رہے کہ 24 اکتوبرکواسمبلی انتخابات کے نتائج کےبعد سے ہی بی جے پی شیوسینا میں حکومت بنانےکےفارمولے پررضامندی نہیں بن پائی ہے۔ تووہیں کانگریس - این سی پی کےاتحاد کواتنی سیٹیں نہیں ملی ہیں کہ وہ حکومت بنانےکا دعویٰ پیش کریں۔ ایسے میں سب کی نظریں سب سے بڑی پارٹی بی جے پی پرمرکوزہیں۔ جمعرات کوحکومت بنانےکےلئے دعویٰ پیش کرنےکا آخری دن ہے۔ بی جے پی اورشیوسینا دونوں نے ہی گورنرسےملاقات کا وقت بھی مانگا ہے۔ شیوسینا لیڈرسنجے راؤت نے بدھ کی شام کوواضح طورپرکہا کہ ادھو ٹھاکرے کوبی جے پی کی طرف سےابھی تک حکومت بنانےکےلئےکسی بھی طرح کی تجویزنہیں ملی ہے۔

Loading...

گورنرسے ملے بی جے پی لیڈر

اسی ضمن میں بدھ کو شیوسینا لیڈرسنجے راؤت نےکہا کہ گورنرسے ہم بھی ملےاورسبھی دیگرپارٹی کے لیڈران بھی ملے ہیں۔ جمعرات کو بی جے پی کےاہم لیڈران ملنے والے ہیں۔ اچھی بات ہے، ہم گزشتہ کئی روزسے یہی مطالبہ کررہے ہیں کہ سب سے بڑی پارٹی بی جے پی ہےاوران کے لیڈران گورنرسےملیں اورحکومت بنانے کا دعویٰ پیش کریں۔

شیوسینا نےکیا بی جے پی پرطنز

شیوسینا لیڈرسنجے راؤت نے بی جے پی پرطنزکرتےہوئےکہا کہ ان کے پاس اگر145 کا اعداد وشمارہےاوراگرحکومت بنتی ہے توہمیں خوشی ہوگی۔ انہوں نے واضح کیا کہ جوباتیں کہی جارہی ہیں وہ سب جھوٹ ہیں کیونکہ پارٹی سربراہ ادھوٹھاکرے کے پاس اب تک کسی بھی بی جے پی لیڈرکا فون نہیں آیا ہے۔ سنجے راؤت مسلسل کہہ رہے ہیں کہ اگربی جے پی کومہاراشٹر میں حکومت بنانی ہے توانہیں شیوسینا کی شرطیں تسلیم کرنی ہی ہوں گی۔

بی جے پی کواقتدارسے دوررکھنا چاہتی ہے کانگریس

وہیں دوسری طرف مہاراشٹرمیں حکومت تشکیل کولےکرجاری سرگرمی کےدرمیان کانگریس کے راجیہ سبھا رکن حسین دلوائی نے بدھ کوممبئی میں شیو سینا کے سینئر لیڈر سنجے راؤت سے ملاقات کی۔ حسین دلوائی نے بعد میں میڈیا سےکہا کہ سنجے راؤت کے ساتھ ان کی بات چیت مثبت رہی اورکانگریس اورنیشنلسٹ کانگریس پارٹی کوساتھ مل کربی جے پی کواقتدارسے دوررکھنےکےلئےکام کرنا چاہئے۔

بی جے پی اورشیوسینا کو161 سیٹیں

واضح رہےکہ 288 اراکین والی مہاراشٹراسمبلی کے حال ہی میں اعلان شدہ انتخابی نتائج میں کوئی بھی پارٹی اکیلے145 سیٹوں کی اکثریت کےاعدادوشمارتک نہیں پہنچ پائی۔ اس کےسبب حکومت سازی میں تاخیرہورہی ہے۔ الیکشن میں بی جے پی 105 ، شیوسینا کو56، این سی پی کو54 اورکانگریس کو44 سیٹوں پرجیت حاصل ہوئی ہے۔ اتحاد کرکےالیکشن لڑنے والی بی جے پی اورشیوسینا کو161 سیٹیں ملی ہیں۔ مہاراشٹراسمبلی کی حالیہ مدت 9 نومبرکوختم ہورہی ہے۔ٓ

Loading...