شکست میں بھی جیت تلاش رہی ہے کانگریس، عوامی مینڈیٹ کے خلاف ناپاک اتحاد: امت شاہ

بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ نے آج پریس کانفرنس کرکے کرناٹک اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کی سبقت پر کرناٹک کی عوام کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کانگریس اور جے ڈی ایس کے اتحاد کو ناپاک قرار دیا ہے۔

May 21, 2018 09:45 PM IST | Updated on: May 21, 2018 09:45 PM IST
شکست میں بھی جیت تلاش رہی ہے کانگریس، عوامی مینڈیٹ کے خلاف ناپاک اتحاد: امت شاہ

نئی دہلی: بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ نے آج پریش کانفرنس کرکے کرناٹک اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کی سبقت پر کرناٹک کی عوام کا شکریہ ادا کیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے پارٹی پر لگے ہارس ٹریڈنگ کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کانگریس پر جم کر تنقید کی۔ انہوں نے کانگریس اور جے ڈی ایس پر الزامات عائد کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس ان کی پارٹی پر ہارس ٹریڈنگ کا الزام لگا رہی ہے، لیکن اپنے ممبران اسمبلی کو ہوٹل میں بند کرکے انہون نے کیا کیا ہے، وہ اس کا جواب دے سکتے ہیں کیا؟

امت شاہ نے کہا کہ کرناٹک میں سدارمیا کے دوراقتدار میں 3700 کسانوں نے خود کشی کی۔ یہ سدارمیا حکومت کی ناکامی ہے۔ کرناٹک کی عوام نے ہمیں سب سے بڑی پارٹی کے طور پر منتخب کیا تھا۔ کرناٹک میں سدارمیا حکومت کے خلاف ووٹ دیا تھا۔ کانگریس کے خلاف کرناٹک کی عوام نے ووٹنگ کی تھی۔

Loading...

انہوں نے یہ بھی کہاکہ کرناٹک میں کانگریس کی 122 سیٹ سے گھٹ کر 78 ہوگئی ہیں، ان کے نصف سے زیادہ وزرا الیکشن ہار گئے، ان کے وزیراعلیٰ تک کو شکست کا سامنا کرنا پڑا پھر بھی وہ جشن منارہے ہیں۔ کانگریس کے لیڈروں کو بتانا چاہئے کہ وہ کرناٹک میں کس بات کا جشن منارہے ہیں۔

شاہ نے مزید کہا کہ کرناٹک الیکشن میں کانگریس نے حد کردی۔ جے ڈی ایس نے عوامی مینڈیٹ کے خلاف جاکر کانگریس کے ساتھ اتحاد کیا۔ یہ ناپاک اتحاد ہے۔ شاہ نے کانگریس پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ ہم نے کبھی ہارس ٹریڈنگ میں یقین نہیں کیا۔ کانگریس کو اس بات کا جواب دینا چاہئے کہ انہوں نے ممبران اسمبلی کو فائیو اسٹار ہوٹل میں بند کرکے ان کے ساتھ کیا کیا؟

لوک سبھا انتخابات 2019 میں اپنی جیت پر اعتماد کااظہار کرتے ہوئے امت شاہ نے کہا کہ بی جے پی اکثریت کے ساتھ حکومت بنائے گی۔ انہوں نے کہا کہ آرٹیکل 356 کی خلاف ورزی کرکے کانگریس نے 50 سے زیادہ حکومتوں کو گرایا ہے تو انہیں ہمیں جمہوریت کے بارے میں پیغام دینے کا حق نہیں ہے۔

سدارمیا خود اپنی سیٹ نہیں بچا سکے۔ اس لئے ہمیں یہ ماننا پڑا کہ کرناٹک کی عوام نے کانگریس پارٹی کو نہیں، ہمیں منتخب کیا ہے۔ کانگریس یہ ہرگز نہ سوچے کہ لوگوں نے معلق (ہنگ) اسمبلی منتخب کی ہے۔ ہم اکثریت سے صرف 7 سیٹ دور ہیں۔

 

Loading...