ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

پاک فیسٹ میں ششی تھرور کے بیان پر گھمسان ، بی جے پی نے کہا : کانگریس نے ہندوستان کا مذاق بنایا

بی جے پی کے ترجمان سمبت پاترا نے کہا : کوئی اورملک ہندوستان جیسا جمہوریت پسند نہیں ہے ۔ یہان سب کی فکر کی جاتی ہے ۔ تھرور نے پاکستانی میڈیا سے ہندوستان کی برائی کی ۔ یہ تصور بھی نہیں کیا جاسکتا کہ ہندوستان کا ایک رکن پارلیمنٹ اس طرح کا بیان دے سکتا ہے ۔

  • UNI
  • Last Updated: Oct 18, 2020 04:56 PM IST
  • Share this:
پاک فیسٹ میں ششی تھرور کے بیان پر گھمسان ، بی جے پی نے کہا : کانگریس نے ہندوستان کا مذاق بنایا
ششی تھرور ۔ فائل فوٹو ۔ ( پی ٹی آئی ) ۔

پاکستان کے پلیٹ فارم سے کانگریس کے رکن پارلیمنٹ ششی تھرور کے متنازعہ بیان کی مذمت کرتے ہوئے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے کہا ہے کہ وہ (تھرور) پاکستان میں ملک کونیچا دیکھانے اور بدنام کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ بی جے پی کے ترجمان سمبت پاترا نے اتوار کو یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ کانگریس پاکستان میں انتخابات لڑنا چاہتی ہے؟ انہوں نے کہا ’’ششی تھرور نے ہندوستان کا مذاق اڑایا ہے اورہندوستان کی خراب تصویر دکھانے کی کوشش کی ہے‘‘۔


مسٹر پاترا نے کہا ’’ تھرور نے لاہورلٹریچر فیسٹیول میں ورچوئل میڈیم کے ذریعے پاکستان کے پلیٹ فورم سے کہا تھاکہ ہندوستان میں مسلمانوں اور شمال مشرق کے لوگوں کے ساتھ امتیازی سلوک کیا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں ایک دوسرے سے خوف کا ماحول ہے۔ چینی جیسے دیکھنے والے لوگوں کے ساتھ امتیازی سلوک کیا جاتا ہے۔ انہوں نے تبلیغی جماعت کے حق میں کہا کہ کورونا کے دوران مسلمانوں کو ہراساں کیا گیا تھا ۔ ایسا بیان دے کرانہوں نے ہندوستان کی توہین کی ہے ‘‘۔


مسٹر پاترا نے کہا ’’کوئی اورملک ہندوستان جیسا جمہوریت پسند نہیں ہے ۔ یہان سب کی فکر کی جاتی ہے ۔ تھرور نے پاکستانی میڈیا سے ہندوستان کی برائی کی ۔ یہ تصور بھی نہیں کیا جاسکتا کہ ہندوستان کا ایک رکن پارلیمنٹ اس طرح کا بیان دے سکتا ہے ‘‘۔ بی جے پی کے ترجمان نے کہا کہ تھرور پاکستان کے پلیٹ فارم سے کہتے ہیں کہ تبلیغی جماعت کے تعلق سے کس طرح حکومت ہند تعصب کر ہی ہے اور مسلمانوں کے خلاف تعصب کا مظاہرہ کیا جارہا ہے۔ تھرور یہ بات پاکسان جا کر بول رہے ہیں ۔


انہوں نے کبھی پاکستان سے یہ پوچھنے کی جرات نہیں کی کہ پاکستان کس طرح اقلیتوں پرمظالم ڈھاتا ہے اور تعصب کا مظاہرہ کرتا ہے۔ روزانہ معلوم ہوتا ہے کہ وہاں ہندوؤں ، عیسائیوں اور سکھوں کے ساتھ کیا ہورہا ہے ۔ وہاں کسی اقلیت کا اغوا ، عصمت دری اور قتل عام بات ہو چکی ہے ۔ آخر یہ لوگ کیا چاہتے ہیں؟ کیا کانگریس پاکستان سے الیکشن لڑنا چاہتی ہے؟۔ مسٹر پاترا نے کہا کہ کووڈ کے کے حوالے سے پوری دنیا دیکھ رہی ہے کہ ہندوستان کو وزیر اعظم نریندر مودی نے کس طرح محفوظ رکھا ، بروقت لاک ڈاؤن نافذ کیا ، کس طرح 80 کروڑ لوگوں کو کھانا پہنچانے کا کام کیا اور یہ آئندہ چھٹ پوجا تک جاری رہے گا ۔

انہوں نے کہا ’’راہل گاندھی چین اور پاکستان میں پہلے ہی ہیرو بن چکے ہیں ۔ انہوں نے آرٹیکل 370 کو ہٹانے کے بعد بیان دیا تھا کہ کشمیر میں سیکڑوں افراد مارے گئے ہیں ۔ اس کے بعد ان کے بیان کا استعمال اقوام متحدہ میں پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے کیا تھا اور کہا تھا کہ ہندوستان کے ایک بہت بڑے لیڈر نے جموں و کشمیر میں مظالم کی بات کہی ہے‘‘ ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Oct 18, 2020 04:50 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading