உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    انسٹاگرام پر نیوڈ گینگ کی دہشت، انجینئر نے کی خودکشی، لڑکی بن کر ایسے کرتے ہیں بلیک میل

    سوشل میڈیا پر نیوڈ گینگ نے مچائی دہشت۔ (علامتی تصویر)

    سوشل میڈیا پر نیوڈ گینگ نے مچائی دہشت۔ (علامتی تصویر)

    پولیس کے مطابق خودکشی کے پیچھے نیوڈ گینگ کا رول شک کے گھیرے میں ہے۔ اس درمیان، ریلوے کے ایڈیشنل ڈی جی پی بھاسکر راؤ نے نوجوانوں سے اپیل کی ہے کہ اگر کسی کو سوشل میڈیا یا کسی بھی طرح سے اس طرح سے بلیک میل کیا جاتا ہے تو خوف یا شرمندگی سے ایسا بھیانک قدم نہ اٹھائیں ۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے سوشل میڈیا کی عادت کو کنٹرول کرنے پر بھی زور دیا ہے۔

    • Share this:
      بنگلورو: سائبر کرائم دنیا بھر میں تیزی سے بڑھتا جارہا ہے۔ سائبر کرائم (Cyber Crime) کا ایک حیران کرنے والا کیس سامنے آیا ہے۔ بنگلورو، کرناٹک(Karnataka) میں، ایک شخص نے انسٹاگرام پر بلیک میلنگ سے پریشان ہو کر اپنی زندگی کو الوداع کہہ دیا۔ بتایا جا رہا ہے کہ خودکشی کرنے والا شخص پیشہ سے انجینئر تھا۔ اس نے ملیشور کے قریب ٹرین کے سامنے کود کر اپنی جان دے دی۔

      پولیس کے مطابق خودکشی کے پیچھے نیوڈ گینگ کا رول شک کے گھیرے میں ہے۔ اس درمیان، ریلوے کے ایڈیشنل ڈی جی پی بھاسکر راؤ نے نوجوانوں سے اپیل کی ہے کہ اگر کسی کو سوشل میڈیا یا کسی بھی طرح سے اس طرح سے بلیک میل کیا جاتا ہے تو خوف یا شرمندگی سے ایسا بھیانک قدم نہ اٹھائیں ۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے سوشل میڈیا کی عادت کو کنٹرول کرنے پر بھی زور دیا ہے۔

      ریلوے اہلکار بھاسکر راؤ نے بتایا کہ ایک اور 24 سالہ انجینئر نے بھی ریلوے لائن پر خودکشی کر لی۔ نوٹ میں انکشاف کیا گیا کہ اسے انسٹاگرام پر جنسی تعلقات کے لیے بلیک میل کیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ میں نوجوانوں سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ خوف یا شرمندگی کی وجہ سے خودکشی نہ کریں بلکہ اگر ایسا ہوتا ہے تو شکایت درج کروائیں۔

      پولیس کے مطابق نیوڈ گینگ کا ایک ملزم مختلف سوشل میڈیا ایپس پر لڑکی بن کر پوز دیتا ہے اور اس میں دلچسپی ظاہر کرنے والے لڑکوں سے چیٹنگ شروع کر دیتا ہے۔ بعد میں وہ لڑکوں سے رشتہ بناتا ہے اور پھر ملزم متاثرہ کو کیمرے کے سامنے نیوڈ ہونے کو کہتا ہے۔ اس کے بعد یہ دکھایا جاتا ہے کہ لڑکی کی موت ہوچکی ہے اور اس کے بعد یہ گینگ متاثرہ سے پیسے بٹورنے لگتا ہے۔

      اس نیوڈ گینگ کا تازہ ترین نشانہ ایک 24 سالہ نوجوان تھا جو مالیشورم کے قریب اپنے خاندان کے ساتھ رہتا تھا۔ اس کی لاش منگل کو برآمد ہوئی تھی۔ اگرچہ ابتدائی طور پر ایسا لگتا تھا کہ نوجوان نے کسی ذاتی وجوہات کی بنا پر خودکشی کی ہے لیکن جیسے جیسے تفتیش آگے بڑھی، اس میں نیوڈ گینگ کا رول مشکوک ہونے لگا۔ پولیس نے بتایا کہ موبائل چیک کرنے پر پتہ چلا کہ انجینئر کو مسلسل دھمکی آمیز پیغامات اور کالیں کی جارہی ہیں۔ نوجوان کو انسٹاگرام پر دھمکیاں بھی دی جارہی تھیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: