رمضان المبارک :اورنگ آباد میں ٹیلروں کی دکانوں پرہاؤس فل کے بورڈ آویزاں

رمضان المبارک میں یوں تو سب کے کاروبارعروج پر ہوتے ہیں لیکن ٹیلروں کی مصروفیات دیکھنے لائق رہتی ہے

May 19, 2019 04:13 PM IST | Updated on: May 19, 2019 04:15 PM IST
رمضان المبارک :اورنگ آباد میں ٹیلروں کی دکانوں پرہاؤس فل کے بورڈ آویزاں

رمضان المبارک اورٹیلروں کاچولی دامن کاساتھ ہے۔ رمضان ٹیلرو ں کا سیزن کہلاتا ہے۔ لیکن کیا واقعی یہ سچ ہے۔ تہوار ٹیلرس کے لیے مدد گار ثابت ہورہے ہیں یا یہ پیشہ دم توڑ رہا ہے۔ رمضان المبارک میں یوں تو سب کے کاروبار عروج پر ہوتے ہیں لیکن ٹیلروں کی مصروفیات دیکھنے لائق رہتی ہے۔

مہاراشٹر کے اورنگ آباد میں شروع رمضان میں ہی ٹیلروں کی دکانوں پرہاؤس فل کے بورڈ آویزاں کردیئے جاتے ہیں، یعنی مزید کپڑے سینے کی گنجائش نہیں ، یہ روایت بہت پہلے سے جاری ہے ، پہلے ایک ٹیلر کے پاس درجنوں کاریگر ہوا کرتے تھے اور اچھی خاصی آمدنی بھی ہو جاتی تھی لیکن اب منظر نامہ بد ل رہا ہے ۔

کسی بھی پیشے میں انسان اسی وقت ترقی کرسکتا ہے جب وہ حالات کے تقاضوں سے خود کو ہم آہنگ کریں، ٹیلرنگ پیشہ بھی اس سے اچھوتا نہیں بدلتے فیشن اور نت نئے ڈیزائن کو اپنانا اس پیشے کی ضرورت ہے۔ چونکہ بندھے ٹکے انداز میں روایتی کام کرنے والوں کو وقت پیچھے چھوڑدیتاہے ٹیلرنگ سے وابستہ زیادہ ترافراد اس گتھی کو سمجھنے سے قاصر نظر آتے ہیں۔ یہی وجہ ہیکہ اب نئی نسل اس پیشے کو اپنانے سے کتراتی نظر آرہی ہے۔ کئی نسلوں سے اس پیشے سے وابستہ ٹیلر بھی اس بات کا اعتراف کرتے نظر آرہے ہیں ۔

Loading...

۔(تصویر:نیوز18 اردو)۔ ۔(تصویر:نیوز18 اردو)۔

اس میں کوئی شک نہیں کہ ٹیلرنگ پیشہ محنت اور وقت طلب ہے۔ جبکہ موجودہ نسل مختصر وقت میں زیادہ کمانا چاہتی ہے ، ٹیلرنگ پیشے سے دوری کی ایک وجہ یہ بھی بتائی جارہی ہے۔ تاہم جو لوگ نسل در نسل اس پیشے سے وابستہ ہیں وہ اس پیشے کو چار چاند بھی لگا رہے ہیں اور ان کا دعویٰ ہیکہ یہ کاروبار کبھی ختم نہیں ہوسکتاramzan_tailor2

نیوز18اردو کے لئے اورنگ آباد سے اظہرالدین کی رپورٹ

Loading...