ہوم » نیوز » وطن نامہ

چین سے کشیدگی کے درمیان فوج کو دیا گیا ایمرجنسی فنڈ ، ہتھیار اور گولہ بارود خریدنے کی چھوٹ

مشرقی لداخ (East Ladakh) میں چین کی جارحیت (Chinese Aggression) اور ایل اے سی (LAC) پر بڑی تعداد میں چینی فوجیوں کو تعینات کئے جانے کے بعد حکومت نے ان اختیارات کو پھر سے فوج کو دینے کی ضرورت محسوس کی ۔

  • Share this:
چین سے کشیدگی کے درمیان فوج کو دیا گیا ایمرجنسی فنڈ ، ہتھیار اور گولہ بارود خریدنے کی چھوٹ
لداخ میں تعینات ہندوستانی فوج کے جوان ۔ فائل فوٹو ۔

چین کے ساتھ جاری سرحدی تنازع کے درمیان تینوں افواج کو اہم گولہ بارود اور ہتھیاروں (critical ammunition and weapons)  کی خریداری کیلئے فی پروجیکٹ پانچ سو کروڑ روپے تک کی خریداری کرنے کیلئے مالی اختیارات دئے گئے ہیں ۔ ان ہتھیاروں اور گولہ بارود کی ضرورت پوری طرح سے یا محدود تصادم چھڑنے کی صورت میں پڑے گی ۔ ایک سینئر افسر نے اے این آئی کو بتایا کہ تینوں افواج کے ڈپٹی چیف کو جن بھی ہتھیاروں کی کمی یا ضرورت محسوص ہوتی ہے ، ان کی ضرورتوں کو تیزی سے پورا کرنے کیلئے ہر ویپن سسٹم حاصل کرنے کے حساب سے پانچ سو کروڑ روپے تک کے مالی اختیارات فوج کو دئے گئے ہیں ۔


مشرقی لداخ (East Ladakh)  میں چین کی جارحیت (Chinese Aggression)  اور ایل اے سی (LAC) پر بڑی تعداد میں چینی فوجیوں کو تعینات کئے جانے کے بعد حکومت نے ان اختیارات کو پھر سے فوج کو دینے کی ضرورت محسوس کی ۔ اڑی میں حملہ اور پاکستان کے خلاف بالاکوٹ ائیر اسٹرائیک کے بعد مسلح افواج کو اسی طرح کے مالی اختیارات دئے گئے تھے ۔


بالا کوٹ ائیر اسٹرائیک کے بعد حکومت کی جانب سے دئے گئے اختیارات کا سب سے زیادہ فائدہ فضائیہ نے اٹھایا تھا ۔ کیونکہ انہوں نے بڑی تعداد میں فوجی آلات کی خریداری کی تھی ۔ ان میں ہوا سے سطح پر مار کرنی والی میزائل اسپائس 2000 بھی شامل تھی ۔ علاوہ ازیں اسٹرم اٹکا نام کی ہوا سے زمین پر مار کرنے والی میزائل کے ساتھ ساتھ کئی دیگر آلات بھی خریدے تھے ۔ علاوہ ازیں اس نے اپنے بیڑے کیلئے ہوا سے ہوا میں مار کرنے والی میزائلیں بھی خریدی تھیں ۔


حکومت کی جانب سے ان اختیارات کو دینے کے پیچھے اہم مقصد کسی بھی ناگہانی صورتحال کیلئے شارٹ نوٹس پر فوج کو تیار رکھنا ہے ۔
First published: Jun 21, 2020 11:50 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading