உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    الہ آباد ہائی کورٹ نے یوگی حکومت کو لگائی پھٹکار، کہا- ڈاکٹر کفیل 4 سال سے معطل کیوں؟

    گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج میں آکسیجن کی کمی سے بچوں کی موت کے معاملے میں معطل ڈاکٹر کفیل احمد خان نے الہ آباد ہائی کورٹ میں عرضی داخل کی تھی۔ عدالت نے پوچھا ایسا کیا ہوا، جو ابھی تک محکمانہ کارروائی پوری نہیں ہوئی۔

    گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج میں آکسیجن کی کمی سے بچوں کی موت کے معاملے میں معطل ڈاکٹر کفیل احمد خان نے الہ آباد ہائی کورٹ میں عرضی داخل کی تھی۔ عدالت نے پوچھا ایسا کیا ہوا، جو ابھی تک محکمانہ کارروائی پوری نہیں ہوئی۔

    گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج میں آکسیجن کی کمی سے بچوں کی موت کے معاملے میں معطل ڈاکٹر کفیل احمد خان نے الہ آباد ہائی کورٹ میں عرضی داخل کی تھی۔ عدالت نے پوچھا ایسا کیا ہوا، جو ابھی تک محکمانہ کارروائی پوری نہیں ہوئی۔

    • Share this:
      الہ آباد: گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج میں آکسیجن کی کمی سے ہوئی بچوں کی موت کے معاملے میں معطل ڈاکٹر کفیل احمد خان نے اب الہ ہائی کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے۔ انہوں نے اپنی معطلی کو ہائی کورٹ میں چیلنج دیا ہے۔ ان کی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے ہائی کورٹ نے بھی یوگی حکومت کے تئیں ناراضگی کا اظہار کیا اور پھٹکار لگاتے ہوئے پوچھا کہ ڈاکٹر کفیل خان کو آخر چار سال سے معطل کیوں رکھا گیا ہے۔ عدالت نے اس کے ساتھ ہی پوچھا کہ ایسا کیا ہوا کہ ابھی تک محکمانہ کارروائی پوری نہیں کی جاسکی ہے۔

      حکومت سے طلب کیا جواب

      جسٹس یشونت ورما کی سنگل بینچ نے اب اس معاملے میں ریاستی حکومت سے 5 اگست تک جواب طلب کیا ہے۔ عدالت کا کہنا ہے کہ اتنے لمبے وقت تک محکمانہ کارروائی نہ ہونے کے پیچھے کیا وجہ ہے اور کیوں اتنے لمبے وقت تک ڈاکٹر کفیل احمد خان کو معطل رکھا جا رہا ہے۔ اس کے ساتھ ہی عدالت نے حکم دیا کہ ابھی تک کی گئی جانچ کی رپورٹ بھی پیش کی جائے۔ ساتھ ہی محکمانہ جانچ کو جلد ازجلد پورا کرکے جو کارروائی مناسب ہو، اس کو کیا جائے۔ حالانکہ لمبے وقت تک معطل رکھنے کی بات پر عدالت نے حکومت کے ساتھ ہی محکمہ پر بھی ناراضگی کا اظہار کیا۔

      گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج میں آکسیجن کی کمی سے ہوئی بچوں کی موت کے معاملے میں معطل ڈاکٹر کفیل احمد خان نے اب الہ ہائی کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے۔ انہوں نے اپنی معطلی کو ہائی کورٹ میں چیلنج دیا ہے۔
      گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج میں آکسیجن کی کمی سے ہوئی بچوں کی موت کے معاملے میں معطل ڈاکٹر کفیل احمد خان نے اب الہ ہائی کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے۔ انہوں نے اپنی معطلی کو ہائی کورٹ میں چیلنج دیا ہے۔


      چار سال سے انصاف کے لئے بھٹک رہے ہیں ڈاکٹر کفیل

      عرضی گزار ڈاکٹر کفیل احمد خان کا کہنا ہے کہ اسے 22 اگست 2017 کو آکسیجن دستیابی معاملے میں انہیں معطل کیا گیا تھا۔ معاملے کو لے کر محکمانہ جانچ بھی کرائی گئی تھی۔ انہوں نے بتایا کہ کارروائی پوری نہیں ہوتی ہوئی دیکھ کر ہائی کورٹ میں عرضی دائر کی تھی۔ ہائی کورٹ نے معاملے میں 7 مارچ 2019 کو حکم دیا کہ تین ماہ کے اندر کارروائی پوری کی جائے۔ اس کے بعد محکمہ نے 15 اپریل 2019 کو رپورٹ پیش کی، جس کے بعد 11 ماہ گزرنے پر 24 فروری 2020 کو جانچ رپورٹ قبول کرکے دو نکات پر پھر جانچ کا حکم دیا گیا۔ ڈاکٹر کفیل خان کا کہنا ہے کہ وہ چار سال سے انصاف کے لئے بھٹک رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان کے معاملے میں جو بھی فیصلہ لینا ہو، افسران لیں، لیکن جانچ کو زیر التوا میں رکھ کر معاملے کو چار سال تک لٹکا کر رکھنا مناسب نہیں ہے۔ عدالت نے اب اس معاملے میں سخت رخ اپنایا ہے اور آئندہ سماعت اب 5 اگست کو ہوگی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: