உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بہنوئی نے اپنے سالے کا قتل کردیا، ملزم گرفتار، 30 جولائی تک پولیس تحویل میں

    بہنوئی نے اپنے سالے کا قتل کردیا، ملزم گرفتار، 30 جولائی تک پولیس تحویل میں

    بہنوئی نے اپنے سالے کا قتل کردیا، ملزم گرفتار، 30 جولائی تک پولیس تحویل میں

    ممبئی کے بوریولی کے ایم ایچ بی پولیس اسٹیشن کے حدود میں ایک واقعہ منظرعام پر آیا ہے، جس پر کوئی بھی یقین نہیں کرسکتا کہ ایک بہنوئی اپنے سالے کا چاقو اور شراب کی بوتل سے قتل کردیا۔ اس قتل کے بعد پورے علاقے میں سنسنی پھیل گئی ہے۔

    • Share this:
    ممبئی: ممبئی کے بوریولی کے ایم ایچ بی پولیس اسٹیشن کے حدود میں ایک واقعہ منظرعام پر آیا ہے، جس پر کوئی بھی یقین نہیں کرسکتا  کہ ایک بہنوئی  اپنے سالے کا چاقو اور شراب کی بوتل سے قتل کردیا۔ اس قتل کے بعد پورے علاقے میں سنسنی پھیل گئی ہے۔ فی الحال ملزم پولیس تحویل میں ہے۔ پولیس  کی اطلاع کی بنیاد پر ملزم کی شادی تقریباً دو سال قبل ہوئی تھی اور کچھ دن بعد دونوں کے مابین جھگڑا شروع ہوگیا، جس کے بعد ملزم کی اہلیہ ڈیڑھ سال تک اپنے بھائی کے ساتھ رہنے چلی گئی۔ جب وہ ڈیڑھ سال بعد واپس آئی تو ملزم کو لگا کہ اس  کے سالے کی وجہ سے اس کی اہلیہ ڈیڑھ سال تک دور رہی۔

     پولیس نے معاملے کی اطلاع کے بعد بہنوئی سے پوچھ گچھ شروع کردی اور ملزم نے اپنا جرم قبول کر لیا۔ ایم ایچ بی پولیس نے قتل کے صرف دو گھنٹوں کے اندر ہی ملزم کونالا سوپارہ سے گرفتار کر لیا۔
    پولیس نے معاملے کی اطلاع کے بعد بہنوئی سے پوچھ گچھ شروع کردی اور ملزم نے اپنا جرم قبول کر لیا۔ ایم ایچ بی پولیس نے قتل کے صرف دو گھنٹوں کے اندر ہی ملزم کونالا سوپارہ سے گرفتار کر لیا۔


    اپنی بیوی سے دور رہنے کا بدلہ لینے کے لئے بہنوئی نے نوکری لگانے کے بہانے سالے کو باہر لے گیا اور رکشہ میں چھری اور شراب کی بوتل سے یکے بعد دیگرے 6 بار حملہ  کرکےقتل کردیا۔  مہلوک کا نام سندیپ راجپوت ہے، جس کی عمر 27 سال ہے اور ملزم کا نام بھرت مکوانا ہے، جس کی عمر 30 سال ہے۔ پوپٹ گلاب ییلے (سینئر پولیس انسپکٹر، ایم ایچ بی پولیس اسٹیشن) نے بتایا کہ قتل کے وقت  اس کی بہن موقع پر پہنچی اور متوفی کی شناخت کی۔

    اس کی اطلاع کے بعد پولیس نے بہنوئی سے پوچھ گچھ شروع کردی اور ملزم نے اپنا جرم قبول کر لیا۔ ایم ایچ بی پولیس نے قتل کے صرف دو گھنٹوں کے اندر ہی ملزم کونالا سوپارہ سے گرفتار کیا اور اسے عدالت میں پیش کیا، جہاں ملزم کو 30 جولائی تک پولیس تحویل میں بھیج دیا گیا ہے۔ پولیس مزید تفتیش میں مصروف ہے۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: