دہشت گردوں کے حملے میں شہید ہوئے تھے اورنگ زیب، بدلہ لینے کے لئے دو بھائی فوج میں شامل

پچھلے سال 14 جون کو پلوامہ میں ہوئے ایک تصادم میں دہشت گردوں نے 44 راشٹریہ رائفلز کے جوان اورنگ زیب کا اغوا کر کے ان کا قتل کر دیا تھا۔

Jul 23, 2019 12:06 PM IST | Updated on: Jul 23, 2019 12:07 PM IST
دہشت گردوں کے حملے میں شہید ہوئے تھے اورنگ زیب، بدلہ لینے کے لئے دو بھائی فوج میں شامل

دونوں بیٹوں کے انرولمنٹ پریڈ میں اورنگ زیب کے والد محمد حنیف بھی پہنچے تھے۔

جموں وکشمیر کے پلوامہ میں گزشتہ سال دہشت گردانہ حملہ میں شہید رائفل میں اورنگ زیب کے دو چھوٹے بھائی بھی اب فوج میں شامل ہو گئے ہیں۔ محمد طارق اور محمد شبیر نے پیر کے روز راجوری میں 10 نئے جوانوں کے ساتھ انرولمنٹ پریڈ میں حصہ لیا۔ اس کے بعد اورنگ زیب کے دونوں بھائیوں نے ایک ٹی وی چینل سے بات چیت کی۔ اس دوران انہوں نے کہا کہ ’’ اپنی ریاست اور ہندوستان کو بچانے اور اپنے بھائی کا بدلہ لینے کے لئے ہم فوج میں شامل ہوئے ہیں‘‘۔

انرولمنٹ پریڈ میں اورنگ زیب کے والد محمد حنیف بھی پہنچے تھے۔ انہوں نے اس موقع پر کہا ’’ میرے بیٹے کو دہشت گردوں نے دھوکہ سے مارا۔ اگر وہ لڑ کر مر جاتا تو کوئی دکھ نہیں تھا۔ اس کی جان دھوکہ سے لی گئی‘‘۔ محمد حنیف مزید کہتے ہیں کہ ’’ دونوں بیٹوں کے فوج میں بھرتی ہونے پر فخر سے میرا سینہ چوڑا ہو رہا ہے لیکن سینہ پر زخم بھی ہیں۔ میرا دل کرتا ہے کہ ان دشمنوں سے میں خود لڑوں جنہوں نے میرے بیٹے کو مارا۔ میرے دونوں بیٹے اورنگ زیب کے قتل کا بدلہ لیں گے‘‘۔

Loading...

اورنگ زیب کے چھوٹے بھائی محمد طارق نے کہا ’’ ہمارے بھائی نے وطن کی خاطر جان دے دی اور ریجمنٹ کا نام اونچا کیا۔ اسی طرح ہم بھی اچھے کام کریں گے اور بھائی کی طرح ہی ملک کے لئے جان دینے سے پیچھے نہیں ہٹیں گے‘‘۔

شہید رائفل مین اورنگ زیب شہید رائفل مین اورنگ زیب

اورنگ زیب کے ساتھ کیا ہوا تھا؟

بتا دیں کہ پچھلے سال 14 جون کو پلوامہ میں ہوئے ایک تصادم میں دہشت گردوں نے 44 راشٹریہ رائفلز کے جوان اورنگ زیب کا اغوا کر لیا تھا۔ وہ اس وقت پونچھ ضلع میں اپنے کنبہ کے ستھ مل کر عید منانے جا رہے تھے۔ گولی سے چھلنی ان کا جسم اگلے دن پلوامہ کے پاس ملا تھا۔

 

Loading...