استعفی کا مطالبہ کرنا کانگریس کی حماقت: آڈیو کلپ معاملے پرکرناٹک کے وزیراعلیٰ يدی یورپا کا ردعمل

یدی یورپا نےکہا کہ بی جے پی کورکمیٹی کےاجلاس میں انہوں نے جوباتیں کہی تھیں، ان کا غلط مطلب نکالا جا رہا ہےاورکانگریس اس پورے معاملہ کا سیاسی فائدہ اٹھانےکی کوشش کر رہی ہے۔

Nov 03, 2019 10:19 PM IST | Updated on: Nov 03, 2019 10:24 PM IST
استعفی کا مطالبہ کرنا کانگریس کی حماقت: آڈیو کلپ معاملے پرکرناٹک کے وزیراعلیٰ يدی یورپا کا ردعمل

کرناٹک کے وزیراعلیٰ بی ایس یدی یورپا۔ فائل فوٹو

بنگلور: کرناٹک کے وزیر اعلی بی ایس يدی یورپا نےایک آڈیوکلپ کےمعاملہ پربھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) صدراورمرکزی وزیرداخلہ امت شاہ سےاستعفی کے کانگریس کے مطالبہ پراتوارکواپنا ردعمل ظاہرکرتے ہوئےکہا کہ اس طرح کا مطالبہ کرنا کانگریس کی بیوقوفی ہے۔ انہوں نےکہا کہ17 اراکین اسمبلی کےاستعفیٰ کےلئےکانگریس امت شاہ کوذمہ دارٹھہرا رہی ہےاوراس بات کےلئےامت شاہ سےاستعفی کا مطالبہ حماقت ہے۔

وزیراعلیٰ بی ایس يديورپا نے صحافیوں سےکہا ’’ممبران اسمبلی کےاستعفیٰ کےلئےامت شاہ ذمہ دارنہیں ہیں، جن کی وجہ سے ریاست میں جنتا دل- کانگریس مخلوط حکومت گرگئی تھی۔ ان ممبران اسمبلی نےخود ہی استعفی دیا تھا اورانہوں نےاپنا مستقبل بھی خود ہی طےکیا تھا‘‘۔

وزیراعلی نےکہا کہ بی جے پی کورکمیٹی کےاجلاس میں انہوں نے جوباتیں کہی تھیں، ان کا غلط مطلب نکالا جا رہا ہےاورکانگریس اس پورے معاملہ کا سیاسی فائدہ اٹھانےکی کوشش کر رہی ہےاوریہ مسئلہ سپریم کورٹ میں ٹھہرنہیں پائےگا۔ اپوزیشن پارٹی کے رہنما اورسابق وزیراعلیٰ سدارميا پرطنزکرتے ہوئے بی ایس يديورپا نےکہا کہ انہیں بالکل بھی سمجھ نہیں ہےاورایک وکیل ہوکربھی وہ بغیرکسی معلومات کےاس طرح کےالزامات لگا رہے ہیں۔ انہوں نےکہا کہ آئندہ 5 دسمبرکوہونے والے ضمنی انتخابات میں بی جے پی ان نااہل ٹھہرائےگئے ممبران اسمبلی کوامیدواربنائے گی۔

Loading...

Loading...