உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Budget 2022 : سرکار ان سبسڈی کو گھٹا سکتی ہے، معیشت اور عام آدمی پر ہوگا سیدھا اثر

    Budget 2022 : سرکار ان سبسڈی کو گھٹا سکتی ہے، معیشت اور عام آدمی پر ہوگا سیدھا اثر

    Budget 2022 : سرکار ان سبسڈی کو گھٹا سکتی ہے، معیشت اور عام آدمی پر ہوگا سیدھا اثر

    یکم فروری 2022 کو پیش ہونے والے عام بجٹ میں مرکزی حکومت فوڈ اور کھاد کی سبسڈی کو کم کر سکتی ہے ۔ ذرائع سے ملی جانکاری کے مطابق اس سبسڈی کو 2.60 لاکھ کروڑ اور 90 ہزار کروڑ تک لانے کی تیاری ہے ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : یکم فروری 2022 کو پیش ہونے والے عام بجٹ میں مرکزی حکومت فوڈ اور کھاد کی سبسڈی کو کم کر سکتی ہے ۔ ذرائع سے ملی جانکاری کے مطابق اس سبسڈی کو 2.60 لاکھ کروڑ اور 90 ہزار کروڑ تک لانے کی تیاری ہے ۔ یہ مالی سال 2022 کیلئے نظرثانی شدہ تخمینوں کے مقابلے کم ہوگی ۔ آپ کو بتادیں کہ اس سے کسانوں کو مہنگی کھاد سستے داموں میں دستیاب ہوتی ہے ۔ سبسڈی ایک چھوٹ ہے جو حکومت ہند کی طرف سے ملک بھر میں لوگوں کو سستی قیمتوں پر ضروری مصنوعات فراہم کرنے کے لئے دی جاتی ہے ۔ سبسڈی وہ رقم ہے جو حکومت اس صنعت کو دیتی ہے جو لوگوں کو سبسڈی والی مصنوعات فروخت کرتی ہے ۔

      سرکار کسانوں کو کھیتی کیلئے دی جانے والی کھاد ، مٹی کے تیل ، رسوئی گیس سلنڈر ، کھانے پینے کی چیزوں پر ، کچھ معاملات میں سود پر سبسڈی دیتی ہیں ۔ حالانکہ  سبسڈی کے اعداد و شمار حکومت کی بیلنس شیٹ پر بہت زیادہ اثر ڈالتے ہیں۔ اسی بنیاد پر اندازہ لگایا جاتا ہے کہ آیا حکومت اپنے مالیاتی خسارے کا ہدف پورا کر پائے گی یا نہیں۔ بجٹ دیکھتے وقت اس بات پر ضرور نظر رکھیں کہ سبسڈی کہاں اور کتنی مل رہی ہے۔

      بجٹ میں کیا ہوگا؟

      ذرائع کا کہنا ہے کہ موجودہ مالی سال کیلئے کل سبسڈی بل تقریباً 5.35 سے 5.45 لاکھ کروڑ روپے ہونے کی امید ہے، جسے حکومت اگلے مالی سال میں کم کرنا چاہتی ہے۔ اس بار کے عام بجٹ کے فوراً بعد ملک کی پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات ہونے جا رہے ہیں۔ ایسے میں بتایا جا رہا ہے کہ یہ بجٹ لوگوں کو لبھانے والے ہونے کا پورا امکان ہے۔

      رواں مالی سال کیلئے فوڈ سبسڈی بل کے لئے نظر ثانی شدہ تخمینہ لگ بھگ 3.90 لاکھ کروڑ روپے رہنے کی امید ہے، جو کہ بجٹ میں کئے گئے 2.43 لاکھ کروڑ روپے سے زیادہ ہے۔ لیکن یہ مالی سال 2021 کے 4.22 لاکھ کروڑ روپے سے کم ہے۔ اس کے علاوہ رپورٹ کے مطابق مالی سال 2022 کے لئے پردھان منتری غریب کلیان ان یوجنا  کی کل لاگت کا تخمینہ 1.47 لاکھ کروڑ روپے ہے۔

      سبسڈی عام طور پر نقد ادائیگی یا ٹیکس کٹوتی کی صورت میں دی جاتی ہے۔ مالی مدد سبھی چاہتے ہیں ، اس لئے سرکار بجٹ میں سبسڈی دیتی ہے ۔ بجٹ کا اندازہ اس بات پر لگایا جاتا ہے کہ حکومت کم یا زیادہ سبسڈی دے رہی ہے۔ حکومت اپنے خزانے سے سبسڈی کا اعلان کرتی ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: