உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Bullet Traine:ملک میں کب چلے گی بلیٹ ٹرین؟ آخر کیوں ہورہی ہے دیر، جانیے سب کچھ

    ہندوستان میں بلٹ ٹرین کے چلنے میں کیوں ہورہی ہے تاخیر؟

    ہندوستان میں بلٹ ٹرین کے چلنے میں کیوں ہورہی ہے تاخیر؟

    Bullet Train Project:بلٹ ٹرین پروجیکٹ کی شروعات 2017 میں ہوئی تھی۔ بلٹ ٹرین کو 15 اگست 2022 کو ٹریک پر چلنا تھا لیکن اس کی ڈیڈ لائن بڑھا کر 15 اگست 2023 کر دی گئی اور اس کے بعد آج تک کوئی ڈیڈ لائن نہیں دی گئی۔

    • Share this:
      نئی دہلی: Bullet Train Project:ملک میں بلیٹ ٹرین(Bullet Train )سال 2023میں ہی چلنی تھی لیکن مہاراشٹر(Maharashtra) میں زمین کی حصولیابی کا کام پورا نہیں ہونے کی وجہ سے کیا اس پروجیکٹ میں مزید وقت لگے گا؟ ریلوے منسٹر اشونی ویشنو(Ashwini Vaishnaw) کے مطابق 2026 میں صرف 48 کلو میٹر کی دوری میں ہی بلیٹ ٹرین کا ٹرائل ہوپائے گا۔

      مسافروں کے لیے بلٹ ٹرین کب تک چلنا شروع ہو گی، اس کا جواب بھی وزیر ریلوے کے پاس نہیں ہے۔ جب وزیر ریلوے سے یہ سوال پوچھا گیا تو وہ اس کا کوئی سیدھا جواب نہیں دے سکے۔ مہاراشٹر میں زمین کے حصول کا کام مکمل نہ ہونے کی وجہ سے بلٹ ٹرین کا پروجیکٹ زیر التوا ہے۔ مہاراشٹر میں ابھی تک صرف 20 فیصد زمین حاصل کی گئی ہے۔ ریلوے ذرائع کے مطابق مہاراشٹر حکومت بلٹ ٹرین کے لیے زمین حاصل کرنے میں کوئی دلچسپی نہیں دکھا رہی ہے۔

      مہاراشٹر میں نہیں ہوپائی ہے زمین کی حصولیابی
      حکام کے مطابق مہاراشٹر کے لیڈروں کو لگتا ہے کہ بلٹ ٹرین سے ریاست کو کوئی خاص فائدہ نہیں ہوگا۔ اس کے برعکس ٹریفک میں سہولت کی وجہ سے ممبئی کا کاروبار سورت اور احمد آباد منتقل ہونے کا خطرہ بڑھ جائے گا۔ یہی وجہ ہے کہ مہاراشٹر بی جے پی کے لیڈر بھی بلٹ ٹرین کو لے کر کوئی بھی بیان دینے سے گریز کر رہے ہیں۔ مہاراشٹر کے بی جے پی لیڈروں نے بھی بلٹ ٹرین کے لیے زمین کے حصول کا مسئلہ نہیں اٹھایا ہے۔

      کیا ہے احمدآباد-ممبئی کا بلیٹ ٹرین پروجیکٹ؟
      حکومت، احمد آباد سے ممبئی تک 508 کلومیٹر طویل بلٹ ٹرین کے منصوبے پر کام کر رہی ہے۔ 2026 میں سورت سے نوساری کے درمیان بلٹ ٹرین کا ٹرائل تجویز کیا گیا ہے۔ اس پروجیکٹ میں مجموعی طور پر 12 اسٹیشن ہوں گے۔ ان میں سے 8 اسٹیشن گجرات میں اور 4 اسٹیشن مہاراشٹر میں ہوں گے۔ گجرات میں سابرمتی سے واپی تک کل 352 کلومیٹر بلٹ ٹرین چلائی جائے گی۔ اس سیکشن کے 61 کلومیٹر میں بلٹ ٹرین کے پلرس لگائے گئے ہیں اور 170 کلومیٹر پر کام جاری ہے۔

      سمندر کے اندر کتنے کلومیٹر چلے گی ٹرین؟
      بی کے سی سے سل پاٹا تک ایک ٹنل ہوگی، جب کہ وکرولی سے گھنسولی تک ایک بلٹ ٹرین سمندر کے نیچے تقریباً 7 کلومیٹر کا فاصلہ طے کرے گی۔ ممبئی کے سلپاٹا سے نکلنے کے بعد بلٹ ٹرین دوبارہ ایلیویٹڈ ٹریک پر آئے گی۔ احمد آباد سے ممبئی تک 508 کلومیٹر طویل بلٹ ٹرین پروجیکٹ پر تقریباً 1 لاکھ 8 ہزار کروڑ روپے خرچ کیے جانے ہیں۔ یہ تخمینہ لاگت ہے۔ اس منصوبے میں تاخیر کی وجہ سے اب اس کی لاگت کافی بڑھ چکی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Credit Debit Card New Rule: کریڈٹ اور ڈیبٹ کارڈ کا نیا اصول، جولائی سے آن لائن ادائیگی...!

      یہ بھی پڑھیں:
      Fake SMS: بلامعاوضہ بجلی، ٹیلی کام بل کی ادائیگی کی پیکش پرمبنی پیغام، ہوسکتاہےجعلی!

      15 اگست 2022 کو چلنی تھی بلیٹ ٹرین
      بلٹ ٹرین پروجیکٹ کی شروعات 2017 میں ہوئی تھی۔ بلٹ ٹرین کو 15 اگست 2022 کو ٹریک پر چلنا تھا لیکن اس کی ڈیڈ لائن بڑھا کر 15 اگست 2023 کر دی گئی اور اس کے بعد آج تک کوئی ڈیڈ لائن نہیں دی گئی۔ ریلوے کی طرف سے توقع ہے کہ یہ 2028 تک مکمل ہو جائے گی، لیکن ماہرین کا خیال ہے کہ بلٹ ٹرین کو صرف گجرات میں چلانے کے لئے بھی بہت زیادہ وقت لگ سکتا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: