உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ایکسکلوزیو: مضبوط وزرائے اعلیٰ کو نشانہ بناتی ہے کانگریس، اشوک گہلوت ہوں گے اگلا شکار: کیپٹن امریندر سنگھ کا بڑا الزام

    مضبوط وزرائے اعلیٰ کو نشانہ بناتی ہے کانگریس، اشوک گہلوت ہوں گے اگلا شکار: کیپٹن امریندر سنگھ

    مضبوط وزرائے اعلیٰ کو نشانہ بناتی ہے کانگریس، اشوک گہلوت ہوں گے اگلا شکار: کیپٹن امریندر سنگھ

    Captain Amarinder Singh Interview: پنجاب کے سابق وزیر اعلیٰ کیپٹن امریندر سنگھ کا کہنا ہے کہ وہ چاہتے ہیں کہ پنجاب میں وزیر اعظم نریندر مودی ان کے لئے تشہیر کریں، جبکہ وہ 2022 کے اترپردیش اور اتراکھنڈ الیکشن میں بی جے پی کے لئے تشہیر کریں گے۔ اس کے علاوہ کیپٹن امریندر سنگھ نے کانگریس پر نشانہ سادھتے ہوئے کہا کہ راجستھان کے وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت پارٹی کا اگلا نشانہ ہوسکتے ہیں کیونکہ کانگریس کو مضبوط وزیر اعلیٰ پسند نہیں ہیں۔

    • Share this:
      چندی گڑھ: پنجاب کے وزیر اعلیٰ کیپٹن امریندر سنگھ (Captain Amarinder Singh) اپنی نئی پارٹی کے رجسٹریشن کا انتظار کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ چاہتے ہیں کہ 2022 میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے لئے وزیر اعظم نریندر مودی (PM Narendra Modi) ان کے لئے تشہیر کریں اور وہ اترپردیش اور اتراکھنڈ انتخابات میں بی جے پی کے لئے تشہیر کریں گے۔ سی این این نیوز 18 کو دیئے ایک ایکسکلوزیو انٹرویو (Captain Amarinder Singh Exclusive Interview) میں کیپٹن امریندرسنگھ نے کہا کہ راجستھان کے وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت کانگریس کا اگلا نشانہ ہوں گے کیونکہ پارٹی مضبوط وزرائے اعلیٰ کو پسند نہیں کرتی ہے۔

      زرعی قوانین کی واپسی پر خوشی کا اظہار

      تین زرعی قوانین (Three Farm Laws) کو منسوخ کرنے پر، پنجاب کے سابق وزیر اعلیٰ نے خوشی ظاہر کی اور کہا کہ انہیں ہمیشہ سے معلوم تھا کہ نئے قوانین ان کی ریاست کے لئے اچھے نہیں تھے۔ انہوں نے کہا، ’کسان اس کی مخالفت کر رہے ہیں کیونکہ اس کا آنے والی نسلوں پر اثر پڑے گا‘۔

      سوال: زرعی قوانین کو منسوخ کیا جائے گا، کیا اس سے آپ کے لئے چیزوں میں تبدیلی ہوگی؟

      جواب: ہمیں پہلے دن سے ہی اس پر یقین تھا اور حقیقت میں اسے اسمبلی میں پیش کرنے والوں میں ہم سب سے پہلے تھے۔ مجھے لگا کہ یہ میری ریاست کے لئے اچھا نہیں ہے۔ ہم نے لوگوں کو احتجاجی مظاہرہ پر جانے سے کبھی نہیں روکا۔ مجھے بہت خوشی ہے کہ یہ کیا گیا ہے۔ یہ میری ریاست کی معیشت کو متاثر کرے گا۔ اس سے آنے والی نسل پر پڑنے والے اثر کو لے کر کسان مخالفت کر رہے ہیں۔

      سوال: کسان ایم ایس پی کا مطالبہ کر رہے یہں، کیا یہ مناسب مطالبہ ہے؟

      جواب: ایم ایس پی ضروری ہے۔ ہر قیمت اِن پُٹ کی لاگت سے متعلق ہے۔ اگر اِن پُٹ کی لاگت بڑھ رہی ہے، تو کون متاثر ہوتا ہے؟ کسان۔ ایم ایس پی سالانہ مہنگائی پر مبنی ہونا چاہئے۔

      سوال: کیا انہیں (کسانوں کو) گھر واپس جانا چاہئے؟

      انہیں جانا چاہئے۔ میں نے انہیں گروپرو پر گھر واپس جانے کے لئے کہا تھا۔ وزیر اعظم نے (انہیں) یقین دہانی کرائی ہے۔

      جواب: جب آپ نے بی جے پی کے ساتھ اتحاد کا اعلان کیا تھا، تب زرعی قانون تھے۔ کانگریس میں کئی لوگوں نے آپ کو ملک کا غدار کہا۔

      کانگریس کو نہیں پتہ کہ وہ کیا کہتی ہے۔ مجھے معلوم ہے کہ یہ کس نے کہا۔ بات یہ ہے کہ یہ میرے کسانوں کے لئے تھا اور میں نے ان کے لئے کیا ہے۔ اشوک گہلوت اور بھوپیش بگھیل کا کیا؟ جب انہیں کسی چیز کی ضرورت ہوتی ہے تو کیا وہ وزیر اعظم سے رابطہ نہیں کرتے؟

      سوال: لیکن کیا آپ ہمیشہ کانگریس میں رہتے ہوئے بی جے پی پر حملہ نہیں کرتے رہے ہیں؟

      جواب: تو کیا ہوا؟ آج میں کانگریس پر حملہ کروں گا کیونکہ میں اپوزیشن میں ہوں۔

      سوال: پنجاب اسمبلی انتخابات کرو یا مرو کی لڑائی ہونے جا رہا ہے۔ کیا آپ فکر مند ہیں؟ کیا آپ کو ایک بار پھر خود کو ثابت کرنا ہوگا؟

      جواب: بالکل نہیں۔ ہم جیتیں گے۔ مجھے کسی کے سامنے خود کو ثابت کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ پنجاب میں ہر کوئی جانتا ہے کہ میں ان کے لئے کیا کر رہا ہوں۔ میں ان لوگوں میں سے نہیں ہوں جو خود کو اپنے تک ہی محدود رکھتے ہیں۔

      سوال: راجستھان کے بارے میں کیا؟ وہاں کابینہ میں ردوبل کا فیصلہ کانگریس کی مرکزی قیادت نے لیا ہے۔

      جواب: میری یہ بات مانیں، اس کے بعد گہلوت ہوں گے۔ انہیں نشانہ بنایا جائے گا۔ وہ باہر ہوجائیں گے۔ مجھے پیٹھ میں چھرا گھونپنے سے نفرت تھی، جو انہوں نے (میرے لئے) کیا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: