منموہن سنگھ کو شریک ملزم بنائے جانے سے متعلق درخواست پر فیصلہ محفوظ

نئی دہلی۔ مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) نے کوئلہ بلاك الاٹمنٹ گھپلے میں سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ کو جھارکھنڈ کے سابق وزیر اعلی مدھو کوڑا کے شریک ملزم بنائے جانے کی آج مخالفت کی۔

Sep 28, 2015 09:14 PM IST | Updated on: Sep 28, 2015 09:20 PM IST
منموہن سنگھ کو شریک ملزم بنائے جانے سے متعلق درخواست پر فیصلہ محفوظ

نئی دہلی۔  مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) نے کوئلہ بلاك الاٹمنٹ گھپلے میں سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ کو جھارکھنڈ کے سابق وزیر اعلی مدھو کوڑا کے شریک ملزم بنائے جانے کی آج مخالفت کی۔

کوڑا نے عدالت میں عرضی دائرکرکے ڈاکٹر سنگھ کو معاملے میں شریک ملزم بنائے جانے کی مانگ کی تھی۔ کوڑا نے اس معاملے میں دلیل دی تھی کہ سابق وزیر اعظم یہ کہہ کر بری الذمہ نہیں ہو سکتے کہ انہیں اس معاملے کی معلومات نہیں تھی۔ انہوں نے کانگریس کے سابق ایم پی نوین جندل کو کوئلہ بلاک الاٹمنٹ کے معاملے میں سابق وزیر اعظم کو ملزم کے طور پر طلب کرنے کی درخواست کی تھی۔

کوڑا کی کی اس اپیل پر عدالت نے سی بی آئی سے جواب طلب کیا تھا۔ سی بی آئی نے جواب داخل کر کے ڈاکٹر سنگھ کا دفاع کیا ہے۔ سی بی آئی نے کہا ہے کہ جندل اسٹیل جھارکھنڈ کے امركونڈا مرگدنگل میں کوئلہ بلاک الاٹ کرنے کے معاملے میں جانچ ایجنسی کو ڈاکٹر سنگھ کے کردار میں بادی النظر میں خطا نظر نہیں آیا ہے۔ سی بی آئی کی دلیلوں کے بعد پٹیالہ ہاؤس واقع بھرت پراشر کی خصوصی عدالت نے 16 اکتوبر تک کے لئے فیصلہ محفوظ رکھ لیا۔ غور طلب ہے کہ اس پورے معاملے کے سلسلے میں سی بی آئی نے 2013 میں مقدمہ درج کیا تھا، جن میں کوڑا اور سابق مرکزی وزیر داسري نارائن راؤ سمیت 10 لوگوں کے علاوہ پانچ کمپنیوں کو بھی ملزم بنایا گیا تھا۔

سی بی آئی نے ان سب کو تعزیرات ہند کی مختلف دفعات کے تحت مجرمانہ سازش، دھوکہ دہی اور بدعنوانی کی روک تھام ایکٹ کے تحت ملزم بنایا ہے۔ اس معاملے میں عدالت نے تمام ملزمان سے اپنا موقف 21 ستمبر تک پیش کرنے کو کہا تھا۔ مسٹر جندل کی طرف سے عدالت کو بتایا گیا تھا کہ وہ نہ تو ڈاکٹر سنگھ کو ملزم بنائے جانے کی حمایت کرتے ہیں اور نہ ہی اس کی مخالفت کرتے ہیں۔

Loading...

Loading...