سہراب الدین انکاؤنٹر کیس : ڈسچارج اعلی افسران کے خلاف ہائی کورٹ سے رجوع نہیں کرے گی سی بی آئی

سہراب الدین انکاؤنٹر معاملے میں آج انصاف کے متلاشی مقتول سہراب الدین کے اہل خانہ کو آج اس وقت شدید جھٹکالگاجب ممبئی ہائی کورٹ میں معاملے کی سماعت کے دوران سی بی آئی نے عدالت کو کہاکہ وہ اس معاملے میں نچلی عدالت سے مقدمہ سے ڈسچارج کئے گئے اعلی افسران کے خلاف ہائی کورٹ سے رجوع نہیں کرے گی

Jan 15, 2018 08:49 PM IST | Updated on: Jan 15, 2018 08:49 PM IST
سہراب الدین انکاؤنٹر کیس : ڈسچارج اعلی افسران کے خلاف ہائی کورٹ سے رجوع نہیں کرے گی سی بی آئی

علامتی تصویر

ممبئی: سہراب الدین انکاؤنٹر معاملے میں آج انصاف کے متلاشی مقتول سہراب الدین کے اہل خانہ کو آج اس وقت شدید جھٹکالگاجب ممبئی ہائی کورٹ میں معاملے کی سماعت کے دوران سی بی آئی نے عدالت کو کہاکہ وہ اس معاملے میں نچلی عدالت سے مقدمہ سے ڈسچارج کئے گئے اعلی افسران کے خلاف ہائی کورٹ سے رجوع نہیں کرے گی ۔

موصولہ اطلاعات کے مطابق سہراب الدین کے بھائی رباب الدین نے نچلی عدالت سے آئی پی ایس افسران کو ملی راحت کے خلاف ممبئی ہائی ایک عرضداشت داخل کی تھی جسکی سماعت جسٹس ریوتی موہتی ڈھیرے کے سامنے عمل میں آئی جس کے دوران سی بی آئی کے وکیل سندیش پاٹل اور ایڈیشنل سالسیٹر جنرل انیل سنگھ نے عدالت کو بتایاکہ سہراب الدین انکاؤنٹر معاملے میں نچلی عدالت سے حال ہی میں ڈسچارج کئے گئے اعلی افسران کے خلاف وہ ممبئی ہائی کورٹ میں کوئی اپیل داخل نہیں کریں گے ، اس معاملے میں نچلی عدالت نے اعلی پولس افسران ملزمین ڈی جی ونجارہ، ڈنیش ایم این، راجکمار پانڈیان کو معاملے سے ڈسچارج کردیا تھے جس کے خلاف سہراب الدین کے بھائی نے ممبئی ہائی کورٹ میں اپیل داخل کی تھی۔

اسی درمیان جسٹس ڈھیرے نے حکم دیا کہ ڈسچارج ہوئے پولس افسران کو نوٹس ایشو کیا جائے اور اسے جلد از جلد ان کے پتوں پر بھیجا جائے تاکہ معاملے کی اگلی سماعت پروہ عدالت میں حاضر ہوکراپنے موقف کا اظہارکرسکیں ۔ واضح رہے کہ اس معاملے میں اب تک 38 میں سے 15 ملزمین ڈسچارج ہوچکے ہیں جس میں 14 آئی پی ایس افسران ہیں۔

نومبر 2005 میں سہراب الدین شیخ کو گجرات اے ٹی ایس نے ایک انکاؤنٹر میں ماردیا تھا ، جس کے بعداس معاملے کے چشم دید گواہ پرجاپتی کو بھی پر اسرا طریقے سے ماردیا گیا تھا، تب ہی سے اس اس کاؤنٹر کو فرضی انکاؤنٹر کہا جانے لگا اور اس کی سی بی آئی سے تحقیقات بھی کرائی گئی تھی۔

Loading...

Loading...