اپنا ضلع منتخب کریں۔

    بھوپال کی شاہی موتی مسجد کے گنبد پر پھر نصب کیا گیا سونے کا کلس

    شاہی مسجد کے گبند سے ماہ اکتوبر میں چوری ہوا تھا سونے کا کلس

    شاہی مسجد کے گبند سے ماہ اکتوبر میں چوری ہوا تھا سونے کا کلس

    واضح رہے کہ تاریخی موتی مسجد کے گنبد سے سونے کا کلس قریب دو ماہ قبل پانچ اور چھ اکتوبر کی درمیانی رات کو چوری ہوگیا تھا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Madhya Pradesh, India
    • Share this:
    بھوپال کی تاریخی شاہی موتی مسجد کے گنبد پر علمائے دین کی موجودگی میں پھر سونے کا کلس نصب کیاگیا۔ واضح رہے کہ تاریخی موتی مسجد کے گنبد سے سونے کا کلس قریب دو ماہ قبل پانچ اور چھ اکتوبر کی درمیانی رات کو چوری ہوگیا تھا۔ مسجد کے گنبد سے سونے کا کلس چوری ہونے کی خبر شاہی اوقاف کے ذمہ داران کو میڈیا کی خبروں سے ہوئی اس کے بعد انہوں نے اس معاملے کو لیکر بھوپال کے تھانہ تلیا میں رپورٹ درج کرائی تھی۔ نیوز ایٹین اردو کی خبر کے بعد بھوپال محکمہ پولیس اور کرائم برانچ نے مشترکہ طور پر کوشش اور مستعدی سے مسجد کے گنبد سے سونے کا کلس چوری کرنے والے شخص کو بہار سے گرفتار کیا۔ مسجد کے گنبد کا کلس برآمد ہونے کے بعد آج اسے دوبارہ شہر قاضی سید مشتاق علی ندوی اور دیگر علمائے دین کی موجودگی میں گنبد پر نصب کیاگیااور دعائیں کی گئیں۔
    واضح رہے کہ بھوپال کی شاہی موتی مسجد کی تعمیر کا سلسلہ بھوپال کی دوسری خاتون نواب سکندر جہاں بیگم کے عہد میں دہلی کی جامع مسجد کی طرز پرسرخ پتھروں سے شروع کیاگیاتھا مگر مسجد کی تعمیر ان کی زندگی میں مکمل نہیں ہوسکی۔

    نواب سکندر جہاں بیگم کے انتقال کے بعد مسجد کی تعمیر کاکام ان کی دختر اور بھوپال کی تیسری خاتون فرمانروا نواب شاہجہاں بیگم کے عہد میں مکمل کیاگیا۔ مسجد میں سفید سنگ مرمر کا کام نواب شاہجہاں بیگم کے ذریعہ کروایا گیا اور مسجد کے گنبد پر سونے کے کلس لگائے گئے تھے جسے دو ماہ قبل مسجد کے گنبد سے چوروں نے اڑا لیا تھا۔
    شاہی مسجد کے گنبد پر سونے کا کلس دوبارہ نصب کئے جانےکے موقع پر جہاں شہر قاضی اور دیگر علمائے دین موجود رہے اور انہیں دعائیں کی وہیں شاہی اوقاف کے ذریعہ محکمہ پولیس کے افسران کا اس موقعہ پر اعزاز بھی کیا گیا۔ اس سلسلہ میں بھوپال شہر قاضی سید مشتاق علی ندوی نے نیوز ایٹین اردو سے خاص بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ پولیس اور دیگر لوگوں کی مستعدی سے جو کلس چوری ہوا تھا وہ مل گیا ہے اور آج اسے دوبارہ نصب کردیا گیا ہے ۔ اسی کے ساتھ ہم یہ کہنا چاہتے ہیں کہ آئیندہ کے لئے ایسے انتظامات کر دیئے جائیں کہ دن ہو یارات ایسے واقعات دوبارہ پیش نہ آئیں ۔صرف شاہی مسجد ہی نہیں کسی مسجد میں ایسے نا خوشگوار واقعات پیش نہ آنے پائیں۔
    وہیں اس سلسلے میں جب نیوز ایٹین اردو نے شاہی اوقاف کے سکریٹری اعظم ترمِذی سے بات کی تو انہوں نے کہا کہ ہمارے آج بہت خوشی کا دن ہے کہ وہ تاریخی وراثت جسے بیگمات کے زمانے میں مسجد کے گنبد پر نصب کیاگیاتھا وہ مل گئی اور آج سے دوبارہ شہرقاضی صاحب،مفتی صاحب اور شہر کے دیگر معزز حضرات کی موجودگی میں مسجد کے گنبد پر نصب کیاگیا۔میں محکمہ پولیس کے ساتھ ان سبھی لوگوں کا شکر گزار ہوں جنہوں نے مسجد کے کلس کی برآمدگی میں اپنا کردار ادا کیاہے۔ دومہینے کس کرب میں گزرے ہیں اس کا بیان نہیں کیاجاسکتا ہے ۔ جب مسجد کے گنبد سے کلس چوری ہوا تو نہ جانے کیسے کیسے الزامات لگائے گئے لیکن الحمد اللہ اب وہ برآمد ہوگیا اور اسے دوبارہ اسی جگہ نصب کردیاگیا ہے۔شاہی موتی مسجد سے کلس چوری ہونے کی خبر کے بعد جو سب سے بڑا قدم اٹھایا گیا وہ یہ ہے کہ مسجد میں پہلے جہاں اندرونی حصوں میں کیمرے نصب کئے گئے تھے اب مسجد کے مینار اور محراب پر بھی ہائی ریزرولیشن کیمرے نصب کردیئے گئے ہیں اور ان شا اللہ ایسے انتظامات کئے گئے ہیں کہ آئیندہ ایسے نا خوشگوار واقعات دوبارہ نہ ہوں۔

    ووہان ریسرچ سینٹر میں کام کرچکے سائنٹسٹ نےکیا چونکانے والا انکشاف، لیب میں بنا تھا وائرس

    کارتک آرین کو شادی کیلئے ماں سے ملی خاص صلاح، بولے 3-4 سال تک کسی چیز پر دھیان نہیں دینا

    وہیں بھوپال کے ڈی سی پی ریاض اقبال نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ بھوپال کی قدیم مسجد سے جو تقریبا ایک سو ساٹھ سال قدیم ہے اس سے سونے کا کلس چوری ہوگیا تھا ۔یہ معاملہ پولیس کے لئے بڑا چیلنجنگ تھا۔ کرائم برانچ ،کوتوالی اور تھانہ تلیا کی ٹیم نے مشترکہ طور پر کوشش کی اور ملزم کو بہار و نپیال کے بارڈر سے گرفتار کیااور کلس کو برآمد کیا۔ آج شہر قاضی کی موجودگی میں اس کلس کو دوبارہ لگایا گیاہے۔آ ج شاہی اوقاف کے ذریعہ پولیس ٹیم کا اعزاز بھی کیاگیا ۔ہمارے لئے بھی خوشی کا موقع ہے کہ سماج کے لوگ پولیس کی کارکردگی کو پسند کر رہے ہیں۔آگے اور اچھا کام کرنے کے لئے ہمیں اس سے حوصلہ ملتا ہے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: