உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    12 سال کے لمبے انتظار کے بعد بھوپال گیس متاثرین کے اضافی معاوضہ کو لیکر سپریم کورٹ میں ہوگی سماعت

    بارہ سال کے لمبے انتظؔار کے بعد کل سے سپریم کورٹ میں شروع ہونے والی سماعت سے گیس متاثرین کو جہاں علاج و معاوضہ کو لیکر نئی امید جاگی ہے۔

    بارہ سال کے لمبے انتظؔار کے بعد کل سے سپریم کورٹ میں شروع ہونے والی سماعت سے گیس متاثرین کو جہاں علاج و معاوضہ کو لیکر نئی امید جاگی ہے۔

    بارہ سال کے لمبے انتظؔار کے بعد کل سے سپریم کورٹ میں شروع ہونے والی سماعت سے گیس متاثرین کو جہاں علاج و معاوضہ کو لیکر نئی امید جاگی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Madhya Pradesh, India
    • Share this:
    دو اور تین دسمبر انیس سو چوراسی کی درمیانی رات کو بھوپال میں پیش آئے یونین کاربائیڈ گیس حادثہ کے متاثرین کے اضافی معاوضہ کے معاملے کو لیکر سپریم کورٹ کے ذریعہ کل سے سماعت شروع کی جائے گی ۔ بارہ سال کے لمبے انتظؔار کے بعد کل سے سپریم کورٹ میں شروع ہونے والی سماعت سے گیس متاثرین کو جہاں علاج و معاوضہ کو لیکر نئی امید جاگی ہے۔ وہیں مرکزی اور صوبائی حکومتوں کے موقف سے گیس متاثرین سخت ناراض ہیں ۔ بھوپال گیس متاثرین نے اپنے مطالبات کو لیکر بھوپال میں جہاں دستخط مہم شروع کی ہے تاکہ علاج اور معاوضہ کو لیکر زمینی حقیقت کو عدالت کے ساتھ وزیر آعظم اور مدھیہ پردیش کے وزیر اعلی شیوراج سنگھ کو پیش کیا جائے سکے۔
    بھوپال گیس متاثرین کے لئے کام کرنے والی سماجی تنظیم بھوپال گروپ فار ایکشن اینڈ انفارمیشن کی کنوینر رچنا ڈھنگرا نے نیوز ایٹین اردو سے خاص بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ بارہ سال کے انتظار کے بعد بیس ستمبر سے سپریم کورٹ اضافہ معاوضہ کے مطالبہ کو لیکر سماعت کرنے جا رہا ہے ۔ جن گیس متاثرین کوبرسوں پہلے پچیس پچیس ہزار روپیہ معاوضہ دیاگیا تھا مجھے افسوس کے ساتھ کہنا پڑرہا ہے کہ انہیں لیکر ہماری دونوں سرکاریں جس میں مرکزی اور صوبائی حکومتیں دونوں شامل ہیں دونوں عدالت کو گمراہ کر رہی ہیں اور دونوں کا کہنا ہے کہ جن لوگوں کو پچیس پچیس ہزار روپیہ کا معاوضہ دیاگیا تھا وہ گیس متاثرین نہیں ہیں  جبکہ دوہزار دس میں اسی سرکار نے یہ تسلیم کیا تھا کہ گیس متاثرین کو جو معاوصہ دیا گیا تھا وہ ناکافی تھا اور انہیں لوگوں نے یونین کاربائیڈ اور ڈاؤ کیمیکل سے اضافی معاوضہ کا مطالبہ کیاتھا مگر اب بدلے ہوئے حالات مںی ملٹی نیشنل کے دباؤ کے سامنے سرکاروں کے سر بدلے ہوئے ہیں۔



    بیس ستمبر سے سپریم کورٹ میں پانچ ججوں کی بینچ معاملے کی سماعت کریگی اور ہمیں امید ہے کہ ہمیں عدالت سے انصاف ملے گا۔اسی کے ساتھ ہم لوگوں نے گیس متاثرین کے بیچ دستخط مہم شروع کی ہے تاکہ سرکاروں کے موقف کا پردہ فاش کیا جا سکے ۔گیس متاثرین کے علاوج و معاوضہ کو لیکر اس دستخط مہم کے کے دستاویز کو ہم وزیر اعظم نریندر مودی کے ساتھ سی ایم شیوراج سنگھ  اورعدالت میں بھی پیش کرینگے ۔




    وہیں بھوپال گیس راحت وزیر وشواس سارنگ کا کہنا ہے کہ گیس متاثرین کے مسائل کو لیکر سرکار سنجیدہ ہے ۔ گیس متاثرین یہ بات بہت اچھی طرح جانتے ہیں کہ ان کے مسائل بی جے پی کی سرکار نے ہی حل کیا ہے۔ گیس متاثرین کے مسائل اگر ناسور بنے ہیں تو اس کے لئے کانگریس کی سرکار ذمہ دار رہی ہے ۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: