ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

بھوپال: سی اے اے اور این پی آر کے خلاف صوبائی سطح پر تحریک چلانے کا فیصلہ

مدھیہ پردیش کی راجدھانی بھوپال میں یکم جنوری سے شہریت ترمیمی قانون کے خلاف ستیہ گرہ جاری ہے ۔

  • Share this:
بھوپال: سی اے اے اور این پی آر کے خلاف صوبائی سطح پر تحریک چلانے کا فیصلہ
بھوپال: سی اے اے اور این پی آر کے خلاف صوبائی سطح پر تحریک چلانے کا فیصلہ

بھوپال۔ مدھیہ پردیش میں اقلیتوں کے مسائل کو لیکر جمعیت علما ایم پی کی صوبائی میٹنگ کا بھوپال میں انعقاد کیاگیا۔ مولانا برکت اللہ بھوپالی ہائر سیکنڈری اسکول کیمپس میں منعقدہ میٹنگ میں جمعیت علما مدھیہ پردیش کے ضلع صدور نے شرکت کی۔ میٹنگ میں سی اے اے، این آرسی اور این پی آر کے خلاف صوبائی سطح پر تحریک چلانے اور تحریک کو تیز کرنے کے لئے زیادہ سے زیادہ تعداد میں ممبر سازی پر زور دیا گیا۔




واضح رہے کہ مدھیہ پردیش کی راجدھانی بھوپال میں یکم جنوری سے شہریت ترمیمی قانون کے خلاف ستیہ گرہ جاری ہے اور اسی ستیہ گرہ میں شامل ہو کر سابق وزیر اعلی دگ وجے سنگھ نے اعلان کیا تھا کہ جہاں جہاں پر کانگریس کی حکومتیں ہیں وہاں پر این پی آر کا نفاذ نہیں ہوگا مگر دوسری طرف جس طرح سے کمل ناتھ حکومت نے خاموشی سے این پی آر کا گزٹ نوٹیفکیشن کر کے عوام کے ساتھ دھوکہ کیا ہے، اس کو لے کر جمعیت نے اس کے خلاف ہر محاذ پر احتجاج کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور کہا ہے کہ یہ احتجاج تب تک جاری رہے گا جب تک اسے واپس نہیں لیا جاتا ہے۔


بھوپال میں جمعیت علما مدھیہ پردیش کے زیر اہتمام منعقدہ صوبائی میٹنگ میں سی اے اے، این آرسی اور این پی آر کے ساتھ کمل ناتھ حکومت کے رویہ کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ آشٹہ سے جمیعت علما کے ضلع صدر مرزا شبیر بیگ نے اپنی ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کمل ناتھ حکومت سے انتخابی منشور میں کئے گئے وعدے کو پورا کرنے اور اردو اساتذہ کی تقرری کرنے کا مطالبہ کیا۔
First published: Feb 17, 2020 12:50 PM IST