ہوم » نیوز » No Category

حکومت نے جمیعۃ علما کو بھوپال میں اجلاس کی نہیں دی اجازت، جمیعۃ نے حکومت کے رویہ کو بتایا افسوسناک

بھوپال۔ اقبال میدان میں سیمی قیدیوں کی یاد میں مجوزہ جلسے کو منسوخ کئے جانے سے مسلم سماج میں سخت ناراضگی دیکھنے کو مل رہی ہے۔

  • ETV
  • Last Updated: Nov 05, 2016 11:11 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
حکومت نے جمیعۃ علما کو بھوپال میں اجلاس کی نہیں دی اجازت، جمیعۃ نے حکومت کے رویہ کو بتایا افسوسناک
بھوپال۔ اقبال میدان میں سیمی قیدیوں کی یاد میں مجوزہ جلسے کو منسوخ کئے جانے سے مسلم سماج میں سخت ناراضگی دیکھنے کو مل رہی ہے۔

بھوپال۔  اقبال میدان میں سیمی قیدیوں کی یاد میں مجوزہ جلسے کو منسوخ کئے جانے سے مسلم سماج میں سخت ناراضگی دیکھنے کو مل رہی ہے۔ حکومت سیمی قیدیوں کو خطرناک دہشت گرد قرار دیتے ہوئے جہاں اپنے اقدام کو جائز قرار دے رہی ہے وہیں مسلم سماج حکومت کے اقدام کو قتل سے تعبیر کر رہا ہے۔ بھوپال کے اقبال میدان میں احتجاجی جلسہ تو نہیں ہو سکا لیکن حکومت کی جانب سے سخت سیکوریٹی کے انتظامات کئے گئے تھے۔ اس بیچ اقبال میدان میں کافی تعداد میں مسلم سماج کے لوگ پہنچے۔


بھوپال انکاؤنٹر کے خلاف  جمیعۃ علما ہند کی جانب سے  بھوپال میں منعقد کئے جانے والے جلسے کوحکومت کی جانب سے اجازت نہیں دئے جانے پر جمیعت علما ہند نے اپنے سخت رد عمل کا اظہار کیا ہے۔ جمیعت علما ہند مدھیہ پردیش شاخ کے نائب صدر مولانا محمود احمد کا ماننا ہے کہ حکومت کا رویہ اس پورے معاملے میں جابرانہ ہے اور اپنے رویہ سے آواز کو دبانے کا کام کر رہی ہے۔ ادھر بھوپال میں سیمی قیدیوں کےانکاؤنٹراورنماز جمعہ کے بعد بھوپال کی مساجد میں خاص دعا کےاعلان کے بعد شہر کی مساجد کی سیکوریٹی میں اضافہ کردیا گیا تھا۔ شہر میں آر پی ایف،سی آرپی ایف کے ساتھ مقامی پولیس کو بڑی تعداد میں تعینات کیا گیا تھا۔ بھوپال کے اقبال میدان اور مسجد ترجمے والی کے قریب  سب سے زیادہ سیکوریٹی کا بند و بست کیا گیا تھا کیونکہ انہیں دو مقامات پر احتجاجی جلسے کے انعقاد کا اعلان کیا گیا تھا۔

First published: Nov 05, 2016 11:11 AM IST