ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش میں کاؤ کیبنٹ کے بعد ٹورزم کیبنٹ کی تشکیل

وزیر اعلی شیوراج سنگھ کی صدارت میں منعقدہ میٹنگ میں مدھیہ پردیش میں گایوں کے تحفظ اور ان کی نسلوں کی افزائش کو لیکر نہ صرف خاکہ تیار کیاگیا بلکہ کاؤ کیبنٹ کو تشکیل دیتے ہوئے اس میں وزیر اعلی کو صدر اور کابینہ کے پانچ وزیروں کو بطور رکن شامل کیاگیا ہے۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش میں کاؤ کیبنٹ کے بعد ٹورزم کیبنٹ کی تشکیل
مدھیہ پردیش میں کاؤ کیبنٹ کے بعد ٹورزم کیبنٹ کی تشکیل

مدھیہ پردیش اسمبلی ضمنی انتخابات میں بڑی کامیابی کے بعد شیوراج سنگھ حکومت ایک کے بعد ایک نئے کام سے سرخیوں میں ہے۔ پہلے وزیر اعلی شیوراج سنگھ کے ذریعہ لو جاد کو لیکر قانون وضع کرنے کا اعلان کیاگیا ۔ ابھی اس معاملے پر سیاست تھمی بھی نہیں تھی کہ صبح وزیر اعلی شیوراج سنگھ نے مدھیہ پردیش میں کاؤ کیبنٹ کی تشکیل کئے جانے کو لیکر ٹوئیٹ کیا اور شام کو نہ صرف کاؤ کیبنٹ  بلکہ ٹورزم کیبنٹ کی تشکیل کا حکم جاری کردیا گیا۔


وزیر اعلی شیوراج سنگھ کی صدارت میں منعقدہ میٹنگ میں مدھیہ پردیش میں گایوں کے تحفظ اور ان کی نسلوں کی افزائش کو لیکر نہ صرف خاکہ تیار کیاگیا بلکہ کاؤ کیبنٹ کو تشکیل دیتے ہوئے اس میں وزیر اعلی کو صدر اور کابینہ کے پانچ وزیروں کو بطور رکن شامل کیاگیا ہے۔ کاؤ کابینہ میں دیگر جن وزرا کو شامل کیاگیاہے ان میں وزیر داخلہ ڈاکٹرنروم مشرا،وزیر جنگلات  وجے شاہ،وزیر زراعت کمل پٹیل ،وزیر پنچایت و دیہی ترقی  مہیند ر سنگھ سسودیا اور وزیر مویشی پریم سنگھ پٹیل کے نام شامل ہیں جبکہ ٹورزم کیبنٹ میں وزیر اعلی صدر ہونوگے جبکہ کابینہ کے چھ وزیروں کو ٹورزم کیبنٹ میں شامل کیاگیا ہے۔ ٹورزم کیبنٹ میں جن وزیروں کو شامل کیاگیا ہے ان میں گوپال بھارگو،جگدیش دیوڑا،وجے شاہ،مینا سنگھ،مہیندر سنگھ سسودیا اور اوشا ٹھاکر کے نام شامل ہیں۔



مدھیہ پردیش میں لو جہاد کے خلاف قانون بنانے کا معاملہ ہو یا کاؤ کیبنٹ اور ٹورزم کیبنٹ کی تشکیل کی بات ہو بی جے پی کے لیڈران اسے وقت کی ضرورت سے تعبیر کرتے ہیں ۔ مدھیہ پردیش بی جے پی ترجمان کے جی پاٹھک کہتے ہیں کہ لو جہاد کا معاملہ کسی طبقے یا مذہب کے خلاف نہیں ہے بلکہ شادی کے نام پر بہلا پھسلا کر تبدیلی مذہب کرنے والوں کے خلاف ہے۔ کانگریس کے لوگ اس میں عوام کو گمراہ کرنے کا کام کر رہے ہیں ۔ مدھیہ پردیش میں گئؤ ماتا کے تحفظ اور ان کی نسل کی افزائش کے لئے شیوراج سنگھ سرکار نے کام شروع کیا تھا مگر کمل ناتھ حکومت نے اقتدار میں آنے کے بعد سب کام کو روک دیاتھا۔ اب پھر شیوراج سنگھ نے صوبہ میں گایوں کو تحفظ دینے کے ساتھ ان کے فروغ کے لئے قدم اٹھایا ہے۔ کاؤ کیبنٹ سے گایوں کے تحفظ اور صوبہ میں گئؤ شالہ کو کھول کر کے اس کے لئے کام کیا جائے گا۔ اسی طرح سے مدھیہ پردیش میں سیاحت کے لئے بہت مواقع ہیں  أج ٹورزم کیبنٹ کی تشکیل کا بھی احکام جاری کردیا گیا ہے۔ یہ ساری کوششیں مدھیہ پردیش کو خود کفیل بنانے کو لیکر ہیں۔ کانگریس کمل ناتھ کی قیادت میں تو کچھ کر نہیں سکی اور اب شیوراج سنگھ کام کر کے دکھا رہےہیں تو اس سے دیکھا نہیں جا رہا ہے ۔ اب بھی اگر کانگریس نے اپنے کردار کو نہیں بدلا تو آنے والے دنوں میں صرف کاغذوں میں ہی کانگریس کا نام پڑھنے کو ملے گا۔

وہیں مدھیہ پردیش کانگریس کے ترجمان بھوپیندر گپتا کہتے ہیں کہ احکام جاری کرنے سے کچھ نہیں ہوتا ہے کام کرنے سےہوتا ہے ۔ شیوراج سنگھ کو سبھی جانتے ہیں کہ یہ صرف اعلانات کرتے ہیں۔ صوبہ میں گایوں کے تحفظ کے لئے کمل ناتھ جی نے زمینی سطح پر کام کر کے دکھایا تھا۔ اب کا اس کاکریڈٹ لینے کے لئے کاؤ کیبنٹ بنائی گئی ہے ۔ کمل ناتھ جی نے صوبہ میں جو ایک ہزار گئؤ شالہ کو کھولا تھا اگر اس کی ہی یہ لوگ ٹھیک سے دیکھ بھال کرلیں تو صوبہ میں نہ صرف گایوں کا تحفظ ہوگا بلکہ اس سے روزگار کے مواقع بھی فرام ہونگے۔ اسی طرح ٹورزم کیبنٹ  بنانے کا بھی حکم جاری کیاگیا ہے۔ اس سے کیا لوگوں کو روزگار مل جائیں گے ۔ میں شیوراج سنگھ جی سے پوچھنا چاہتاہوں کہ کورونا قہر اور لاک ڈاؤن میں جن لوگوں کے روزگار گئے ہیں ان کو روزگار دینے کا کام کب ہوگا۔ چھل اور کپٹ سے سرکار ضرور بن گئی ہے مگر جب عام انتخابات ہونگے سرکار کو اپنے منھ کی کھانی پڑے گی۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Nov 18, 2020 10:49 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading