ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

بی جے پی لیڈر کے بینک میں نوٹ بندی کے بعد کھلے 100 کھاتے، نئے کھاتوں میں کروڑوں کا لین دین

محکمہ انکم ٹیکس کی اب تک کی تحقیقات میں انکشاف ہوا ہے کہ سشیل واسوانی کے بیراگڑھ واقع مہانگر کوآپریٹیو بینک میں نوٹ بندی کے بعد پانچ دنوں میں 100 کھاتے کھولے گئے۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Dec 22, 2016 12:06 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
بی جے پی لیڈر کے بینک میں نوٹ بندی کے بعد کھلے 100 کھاتے، نئے کھاتوں میں کروڑوں کا لین دین
محکمہ انکم ٹیکس کی اب تک کی تحقیقات میں انکشاف ہوا ہے کہ سشیل واسوانی کے بیراگڑھ واقع مہانگر کوآپریٹیو بینک میں نوٹ بندی کے بعد پانچ دنوں میں 100 کھاتے کھولے گئے۔

بھوپال۔ مدھیہ پردیش کے دارالحکومت بھوپال میں بی جے پی لیڈر سشیل واسوانی کے ٹھکانوں پر انکم ٹیکس محکمہ کے چھاپے کی کارروائی تیسرے دن بھی جاری ہے۔ محکمہ انکم ٹیکس کی اب تک کی تحقیقات میں انکشاف ہوا ہے کہ سشیل واسوانی کے بیراگڑھ واقع مہانگر کوآپریٹیو بینک میں نوٹ بندی کے بعد پانچ دنوں میں 100 کھاتے کھولے گئے۔ ان میں تقریبا دو درجن بینک اکاؤنٹ ایسے ہیں، جن میں ایک کروڑ سے زیادہ کی رقم جمع کی گئی۔


خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ نوٹ بندی کے بعد بڑے پیمانے پر بینک کے ذریعے کالے دھن کو سفید کیا گیا۔ تحقیقات میں شامل افسر یہ بھی پتہ لگانے کی کوشش کر رہے ہیں کہ بینک کے ذریعے 500 اور 1000 روپے کے کتنے پرانے نوٹ ایکسچینج کئے گئے۔ دراصل، کوآپریٹیو بینکوں کے ذریعے 10 سے 15 نومبر کے درمیان پرانے نوٹ بدلے جا رہے تھے۔ اس کے بعد ریزرو بینک نے شکایتیں ملنے پر کوآپریٹیو بینکوں سے نوٹ تبدیل کرنے پر روک لگا دی تھی۔


منگل کی صبح سے جاری ہے کارروائی


محکمہ انکم ٹیکس کے ذرائع سے ملی معلومات کے مطابق، واسوانی کے بیراگڑھ علاقے میں واقع رہائش کے علاوہ ہوٹل اور مہانگر کوآپریٹیو بینک پر ایک ساتھ منگل کی صبح دبش دی گئی تھی۔ منگل کو شروع ہوئی کارروائی اب بھی جاری ہے۔
First published: Dec 22, 2016 12:06 PM IST