ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

سیمی تصادم معاملہ: شیوراج حکومت نے تحقیقات سے پہلے پولیس اہلکاروں کو انعام دینے پر لگائی روک

بھوپال۔ مدھیہ پردیش حکومت نے جیل سے فرار سیمی کے آٹھ افراد کو تصادم میں مار گرانے کے واقعہ میں شامل پولیس اہلکاروں کو دو دو لاکھ روپے کا انعام دینے کے فیصلے پر فی الحال روک لگا دی ہے۔

  • IBN Khabar
  • Last Updated: Nov 05, 2016 09:08 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سیمی تصادم معاملہ: شیوراج حکومت نے تحقیقات سے پہلے پولیس اہلکاروں کو انعام دینے پر لگائی روک
بھوپال۔ مدھیہ پردیش حکومت نے جیل سے فرار سیمی کے آٹھ افراد کو تصادم میں مار گرانے کے واقعہ میں شامل پولیس اہلکاروں کو دو دو لاکھ روپے کا انعام دینے کے فیصلے پر فی الحال روک لگا دی ہے۔

بھوپال۔ مدھیہ پردیش حکومت نے جیل سے فرار سیمی کے آٹھ افراد کو تصادم میں مار گرانے کے واقعہ میں شامل پولیس اہلکاروں کو دو دو لاکھ روپے کا انعام دینے کے فیصلے پر فی الحال روک لگا دی ہے۔ ریاستی حکومت کے ایک سینئر افسر نے بتایا کہ اس پورے معاملے کی عدالتی انکوائری کا اعلان ہونے کے بعد اس کی تحقیقات مکمل ہونے تک اب حکومت اس معاملے میں کسی کو انعام نہیں دے سکتی۔


افسر نے کہا کہ یہ ایوارڈ دینے کا اعلان عدالتی جانچ ہونے سے پہلے کیا گیا تھا۔ لہذا یہ مناسب ہو گا کہ اس معاملے میں تفتیش مکمل ہونے تک یہ ایوارڈ نہیں دیے جائیں۔ انسانی حقوق اور سماجی کارکنوں نے بھی جیل سے فرار سیمی کے آٹھ افراد کے ساتھ تصادم میں انہیں مار گرانے میں شامل  پولیس اہلکاروں کو مدھیہ پردیش حکومت کی طرف سے دو دو لاکھ روپے کا انعام دینے کے فیصلے پر تنقید کی تھی۔


مدھیہ پردیش کے وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان نے یکم نومبر کو یہاں ریاست کے یوم تاسیس کی تقریب میں پورے واقعے میں شامل مدھیہ پردیش پولیس کے افسران اور سپاہیوں کی عزت افزائی کے علاوہ انہیں دو دو لاکھ روپے انعام دینے کا اعلان کیا تھا۔

First published: Nov 05, 2016 09:08 PM IST