உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    تعلیم سے ملے گی منزل : کورونا قہر میں سرپرستوں سے محروم بچوں کو تعلیم کیلئے تقسیم کئے گئے چیک

    تعلیم سے ملے گی منزل : کورونا قہر میں سرپرستوں سے محروم بچوں کو تعلیم کیلئے تقسیم کئے گئے چیک

    تعلیم سے ملے گی منزل : کورونا قہر میں سرپرستوں سے محروم بچوں کو تعلیم کیلئے تقسیم کئے گئے چیک

    مسلم ایجوکیشن اینڈ کیریر پروموشن سو سائٹی کے سکریٹری ڈاکٹر ظفر حسن کہتے ہیں کہ سو سائٹی کے ذریعہ سماج کے ہونہار اور پسماندہ طبقہ کی تعلیمی ضرورت کے لئے مواقع فراہم کرنے کا کام تو پہلے بھی کیا جاتا رہا ہے لیکن اس بار کورونا نے جو قہر برپا کیا ہے اس کا بیان لفظوں میں نہیں کیا جا سکتا ہے ۔ایسے بچے جنہوں نے کورونا میں اپنا سب کچھ کھو دیا ہے اور اپنے والدین کی سرپرستی سے محروم ہوگئے ہیں ان کی تعلیمی ضرورت کو پورا کرنا نہ صرف ہماری بلکہ سماج کی مشترکہ ذمہ داری ہے ۔

    • Share this:
    بھوپال : کورونا قہر میں اپنوں کی سرپرستی سے محروم بچوں کی کفالت اور تعلیمی سلسلہ جاری رکھنے کا اعلان یوں تو سرکاری اور غیر سرکاری طور پر بہت کیا گیا لیکن وقت گزرنے کے ساتھ نوے  فیصد سے زیادہ اداروں نے اپنے وعدے کو فراموش کردیا۔ مگر بھوپال مسلم ایجوکیشن اینڈ کیریر پروموشن سو سائٹی نہ صرف اپنے وعدے پر قائم ہے بلکہ کورونا قہر میں اپنے سرپرستوں سے محروم ہوئے بچوں کی تعلیمی ضرورت اور ادھورے خواب کو پورا کرنے کے لئے عملی اقدامات شروع کر دیئے ہیں ۔سو سائٹی کے ذریعہ طلبا کی تعلیمی ضرورت کے مد نظر پہلی بار پانچ نومبر کو چیک تقسیم کئےگئے تھے اور آج پھر انکی اور سماج کے کمزور طبقہ کے ہونہار طلبا کی تعلیمی ضرورت کے پیش نطر پھر چیک تقسیم کئے گئے ۔سو سائٹی کا ماننا ہے کہ زیور تعلیم سے ہم آہنگ ہوکر یہ طلبا نہ صرف اپنے خواب بلکہ اپنے والدین  یا سرپرستوں کے ادھورے خواب کو شرمندہ تعبیر کر سکیں گے ۔

    مسلم ایجوکیشن اینڈ کیریر پروموشن سو سائٹی کے سکریٹری ڈاکٹر ظفر حسن کہتے ہیں کہ سو سائٹی کے ذریعہ سماج کے ہونہار اور پسماندہ طبقہ کی تعلیمی ضرورت کے لئے مواقع فراہم کرنے کا کام تو پہلے بھی کیا جاتا رہا ہے لیکن اس بار کورونا نے جو قہر برپا کیا ہے اس کا بیان لفظوں میں نہیں کیا جا سکتا ہے ۔ایسے بچے جنہوں نے کورونا میں اپنا سب کچھ کھو دیا ہے اور اپنے والدین کی سرپرستی سے محروم ہوگئے ہیں ان کی تعلیمی ضرورت کو پورا کرنا نہ صرف ہماری بلکہ سماج کی مشترکہ ذمہ داری ہے ۔ ایسے طلبہ کے ساتھ سماج کے مالی طور پر کمزور طبقہ کی تعلیمی ضرورت کے پیش نظر پانچ نومبر کو بھی چیک تقسیم کئے گئے تھے اور آج پھر چیک تقسیم کرنے کے ساتھ ان کی کاؤنسلنگ کی گئی ہے تاکہ ان طلبا کو اس ذہنی دباؤ سے باہر نکالا جا سکے اور یہ تعلیم پر تمام مسائل سے آزاد ہوکر پوری طرح فوکس کر سکیں ۔ایسے طلبا سے تو ہمارا صرف یہی کہنا ہے کہ آپ تعلیم کے حصول میں اپنا سب کچھ لگائیں آپ کی تعلیم ضرورت کو پورا کرنا ہماری ذمہ داری ہے ۔

    معروف کونسلر امینہ خان کہتی ہیں کہ مسلم ایجوکیشن کی تعلیمی سرگرمیوں کے بارے میں یوں تو بہت سنا تھا مگر جب یہاں پر آکر بچوں کے لئے کئے جانے والے تعلیمی کام کو دیکھا تو آنکھیں کھلی رہ گئیں۔ایسے کام کی سماج کو بہت ضرورت ہے ۔ہمارے مسلم بچوں میں صلاحیت کی کمی نہیں ہےبس انہیں صحیح سمت دیکھانے کی ضرورت ہے ۔ سو سائٹی کے ذریعہ جو تعلیمی سلسلہ شروع کیا گیا ہے وہی وقت کی ضرورت ہے۔

    ماہر تعلیم رخشاں صدیقی کہتی ہیں کہ موبائل نے ہمارے بچوں کو بہت خراب کردیا ہے ۔خراب کرنے کی وجہ یہ ہے کہ بچے موبائل پر اپنا وقت تعلیم کے حصول یا علم سیکھنے کے لئے صرف نہیں کرتے ہیں بلکہ ان کا زیادہ وقت دوسرے چیزوں کے سرچ میں گزرتا ہے ۔اگر بچوں کو صحیح تربیت دی جائے گی تو یہی ٹیکنالوجی ان کی زندگی میں انقلاب لائے گی۔ تعلیم کے حصول میں مالی  کمی بڑا دشوار مرحلہ ہوتا ہے اور جس سماج کے پاس ایسے ادارہ ہے اس سماج کے لوگوں کو اور بڑھ چڑھ  کر اپنی تعلیمی ضرورت کو پورا کرنے کے لئے آگے آنا چاہیئے۔

    نویں جماعت کی طالبہ علما کہتی ہیں کہ کورونا قہر،اپنوں سے محرومی اور مالی مشکلات کے سبب تعلیم کا سلسلہ بند ہوگیا تھا۔ دوستوں نے بتایا تو یہاں تک ڈرتی ہوئی آئی کہ لوگ نہ جانیں کیا کہیں گے اور کیا سوچیں گے۔کوئی جو جانتا نہیں وہ ہمیں تعلیم کے لئے پیسہ کیوں دے گا لیکن جب یہاں کے ذمہ دارا ن سے بات کی اور اپنی حقیقت بتائی تو سارے خیال دھرے رہ گئے ۔سو سائٹی نے نہ صرف ہماری تعلیم کے لئے کونسلنگ شروع کی ہے بلکہ ہمیں چیک بھی دیا ہے تاکہ ہم اپنا اور اپنے والدین کا خواب پورا کرسکیں ۔

    مسلم ایجوکیشن اینڈ کیریر پروموشن سوسائٹی کے پروگرام میں تعلیم کے لئے چیک حاصل کرنے والی منتشہ کہتی ہیں کہ سو سائٹی نے تو میرے مسائل ہی حل کردیئے ۔انہوں نے چیک دیکر اپنا کام کردیا ہے اب ہمارا کام ہے ان کے خواب کے ساتھ اپنے اور اپنے سرپرستوں کے خواب کوپورا کریں ۔ان شااللہ پوری محنت سے پڑھوںگی  تاکہ سماج کے لئے آئیڈیل بن سکوں اور جب منزل پہنچ جاؤں تو لوگوں کی تعلیمی مدد کا حصہ بن سکوں ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: