உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہنی مون سے لوٹتے ہی بیوی نے شوہر کے آفس میں فون کرکے کہہ دی ایسی بات، شوہر پہنچ گیا کورٹ

    ہنی مون سے لوٹتے ہی بیوی نے شوہر کے آفس میں فون کرکے کہہ دی ایسی بات، شوہر پہنچ گیا کورٹ

    ہنی مون سے لوٹتے ہی بیوی نے شوہر کے آفس میں فون کرکے کہہ دی ایسی بات، شوہر پہنچ گیا کورٹ

    Chhattisgarh News : چھتیس گڑھ کے بلاس پور کا ایک جوڑا نئی نئی شادی کے بعد ممبئی گیا اور وہاں سے پھر میاں بیوی ہنی مون پر راجستھان کے دارالحکومت جے پور چلے گئے ۔ تاہم جیسے ہی جوڑا ہنی مون سے واپس آیا ، شادی کی خوشیاں ایک خاندانی جھگڑے میں تبدیل ہوگئیں ۔

    • Share this:
      رائے پور : چھتیس گڑھ کے بلاس پور کا ایک جوڑا نئی نئی شادی کے بعد ممبئی گیا اور وہاں سے پھر میاں بیوی ہنی مون پر راجستھان کے دارالحکومت جے پور چلے گئے ۔ تاہم جیسے ہی جوڑا ہنی مون سے واپس آیا ، شادی کی خوشیاں ایک خاندانی جھگڑے میں تبدیل ہوگئیں ۔ ڈاکٹر بیوی نے شوہر کی مردانگی پر سوالات اٹھا دئے۔ بیوی نے اپنے دوستوں اور شوہر کے ساتھیوں کو فون کرنا شروع کردیا اور کہنے لگی کہ میرا شوہر 'ہم جنس پرست' ہے ، شادی کے بعد ہمارے درمیان کوئی جسمانی تعلقات نہیں بنے ۔ تقریبا 3 سال پرانے اس معاملہ کی بحث چھتیس گڑھ میں گزشتہ پیر سے کافی زیادہ ہو رہی ہے۔

      دراصل بلاس پور کی رہنے والی ڈاکٹر آکانشا شکلا کی شادی 4 فروری 2018 کو ابھینو شرما سے ہوئی تھی ۔ شادی کے بعد شوہر آکانشا کو اپنے ساتھ ممبئی لے گیا۔ اس کے بعد دونوں ہنی مون کے لیے جے پور بھی گئے ، لیکن ہنی مون سے واپس آنے کے کچھ دنوں بعد میاں بیوی کے درمیان جھگڑا شروع ہوگیا ۔ ڈاکٹر بیوی نے اپنے شوہر پر سنگین الزامات لگائے۔ ڈاکٹر بیوی نے اپنے ساتھیوں کو بتایا کہ اس کا شوہر 'ہم جنس پرست' ہے ۔ یہی نہیں شوہر کے خلاف جہیز کیلئے ہراساں کرنے کا مقدمہ بھی درج کروایا دیا۔

      بیوی کے ان الزامات سے شوہر کی کافی بدنامی ہوئی اور اس کے دوست بھی اس کو کمتر نظروں سے دیکھنے لگے ۔ اس کے بعد شوہر ابھینو نے رائے پور کی ایک عدالت میں ہتک عزت کا مقدمہ دائر کیا ۔ ابھینو نے بیوی اور اس کے دیگر رشتہ داروں کے خلاف سنگین الزامات عائد کئے ۔ اس کے بعد پیر کو جوڈیشل مجسٹریٹ فرسٹ کلاس رائے پور کی عدالت نے بیوی اور اس کے رشتہ داروں کو سمن جاری کیا ہے ۔

      شوہر ابھینو شرما نے بتایا ہے کہ ان کی ممبئی میں نوکری تھی ۔ شادی کے بعد وہ اپنی بیوی ڈاکٹر آکانشا شکلا کے ساتھ ممبئی چلا گیا ۔ بیوی دن بھر گھر میں کوئی کام نہیں کرتی تھی اور 'بورن ویٹا' کے نام سے اپنے موبائل پر محفوظ نمبر پر گھنٹوں بات کرتی تھی ۔ شوہر نے عدالت کو بتایا کہ بورن ویٹا کے نام سے محفوظ نمبر بیوی کے عاشق ڈاکٹر وویک اپادھیائے کا ہے۔ شوہر نے عدالت میں یہ بھی بتایا کہ کالج کے زمانے سے دونوں کے درمیان معاشقہ ہے اور اس لئے اس کی بیوی اس پر دباؤ ڈالتی تھی کہ وہ بلاسپور منتقل ہو جائے ، جبکہ وہ کینیڈا جانا چاہتا تھا۔

      ابھینو نے عدالت کو بتایا کہ بیوی آکانشا نے اس کے دفتر میں فون کرکے اس کی خاتون دوستوں کو یہ بھی کہا کہ اس کا شوہر 'ہم جنس پرست' ہے اور شادی کے بعد دونوں کے درمیان کوئی رشتہ قائم نہیں  ہوا ۔ یہ بات دھیرے دھیرے اس کے دفتر میں پھیل گئی اور اس کو (شوہر) دفتر میں کمتر نگاہوں دیکھا جانے لگا ۔ شوہر نے اپنی بیوی پر شراب پی کر ہنگامہ برپا کرنے کا الزام بھی لگایا ہے ۔ ابھینو نے اپنا میڈیکل ٹیسٹ کروا کر عدالت میں اس کی رپورٹ بھی پیش کی ، جس میں ڈاکٹروں نے بتایا ہے کہ وہ خواتین کے ساتھ جسمانی تعلقات قائم کرنے کے قابل ہے ۔

      ابھینو شرما نے اپنی بیوی کی بڑی بہن سمیکشا دوبے ، بہنوئی پرشانت دوبے ، بڑے بھائی مینک شیکھر شرما اور باپ شیورام پرساد شکلا کے خلاف عدالت میں شکایت کی ہے۔ اس شکایت پر عدالت نے ڈاکٹر آکانشا شکلا شرما اور دیگر چار کے خلاف مقدمہ درج کرکے سمن جاری کرنے کا حکم دیا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: