உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان کی جیل میں قید ہے چھتیس گڑھ کا یہ نوجوان ، رہائی کیلئے اہل خانہ نے مانگی مدد

    علامتی تصویر

    علامتی تصویر

    • Share this:
      چھتیس گڑھ کے جانجگیر – چانپا ضلع کا رہنے والا ایک نوجوان گزشتہ پانچ سالوں سے پاکستان کی جیل میں بند ہے ۔ بتایا جارہا ہے کہ ضلع کے مال کھرودہ تھانہ حلقہ کے گاوں پیہرید میں رہنے والے سمیلال جاٹور اپنے کنبہ کے ساتھ روزی روٹی کی تلاش میں جموں گیا تھا ۔ اس دوران اس کا بیٹا گھنشیام اچانک غائب ہوگیا ۔ کافی تلاش کے بعد بھی کنبہ کو نوجوان کا کہیں پتہ نہیں چلا ۔ پھر انہیں بی ایس ایف کے جوانوں سے یہ اطلاع ملی کہ گھنشیام پاکستان کی سرحد میں داخل ہوگیا ہے ، اس کے بعد اہل خانہ کو یہ پتہ چلا کہ گھنشیام پاکستان کی اسلام آباد کی جیل میں بند ہے ۔ گزشتہ کئی سالوں سے کنبہ گھنشیام کی رہائی کیلئے مدد کی فریاد کررہا ہے ۔

      mp youth in pakistan

      موصولہ اطلاعات کے مطابق جانجگیر – چانپا ضلع کے مال کھرودہ تھانہ کے پیہرید گاوں میں رہنے والا سمیلال جاٹور 2014 میں اپنے کنبہ کے ساتھ جموں کے نواشہر کے اینٹ بھٹہ میں کام کرنے گیا تھا ۔ یہاں سے سمیلال کا بیٹا گھنشیام جاٹور 14 اپریل 2014 کو لاپتہ ہوگیا ۔ اہل خانہ کے مطابق نوجوان ذہنی طور پر کمزور تھا ۔ پھر اہل خانہ نے کافی تلاش کی ، مگر اس کا کوئی سراغ نہیں ملا ۔ پھر انہیں بی ایس ایف سے پتہ چلا کہ گھنشیام ہندوستان کی سرحد پار کرکے پاکستان کی سرحد میں چلا گیا ہے ۔ اہل خانہ گھنشیام کی جلد واپسی کی امید میں اپنے گاوں واپس آگئے ، لیکن اب پانچ سال بعد بھی گھنشیام واپس نہیں آیا ہے ۔ اس وقت سے ہی وزارت خارجہ سے لے کر ضلع کے افسران تک سے ، یہ کنبہ مسلسل گھینشیام کی واپسی کیلئے مدد کی فریاد کررہا ہے ۔

      mp youth letter

      اہل خانہ کے مطابق انہیں مال کھرودہ تھانہ کے توسط سے پتہ چلا ہے کہ پاکستان کے اسلام آباد کی جیل سے ہندوستان کی حکومت کو خط موصول ہوا ہے ، جس میں لاپتہ گھنشیام جاٹور کی جانکاری مانگی گئی ہے ۔ اس معاملہ میں جب جانجگیر – چانپا ضلع کے ایس پی پارول ماتھر سے بات کی گئی ، تو ان کا کہنا ہے کہ گھنشیام نشے کا بھی عادی تھا ۔ نشے کی حالت میں شاید پاکستان چلاگیا ۔ پاکستان کے اسلام آباد سے مرکزی حکومت کو خط بھیج کر گھنشیام سے متعلق معلومات طلب کی گئی تھیں ، جو بھیج دی گئی ہیں ۔
      First published: