ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

ہندو پرست تنظیموں نے بھوجشالا کے باہر شروع کی دیوی سرسوتی کی پوجا

دھار۔ مدھیہ پردیش کے دھار میں واقع بھوجشالا میں آج بنست پنچمی کے موقع پرد یوی سرسوتی کی اکھنڈ پوجا کرنے کی اجازت نہ ملنے پرہندو پرست تنظیموں نے بھوجشالا کے باہر ایک جگہ پوجا کا پروگرام شروع کر دیا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Feb 12, 2016 12:33 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ہندو پرست تنظیموں نے بھوجشالا کے باہر شروع کی دیوی سرسوتی کی پوجا
دھار۔ مدھیہ پردیش کے دھار میں واقع بھوجشالا میں آج بنست پنچمی کے موقع پرد یوی سرسوتی کی اکھنڈ پوجا کرنے کی اجازت نہ ملنے پرہندو پرست تنظیموں نے بھوجشالا کے باہر ایک جگہ پوجا کا پروگرام شروع کر دیا ہے۔

دھار۔  مدھیہ پردیش کے دھار میں  واقع بھوجشالا میں آج بنست پنچمی کے موقع پرد یوی سرسوتی کی اکھنڈ پوجا کرنے کی اجازت نہ ملنے پرہندو پرست تنظیموں نے بھوجشالا کے باہر ایک جگہ پوجا کا پروگرام شروع کر دیا ہے۔ بھوج اتسو کمیٹی اور ہندو جاگرن منچ کی طرف سے بھوجشالا میں پورے دن اکھنڈ پوجا کرنے کا مطالبہ کیا گیا تھا، جبکہ انتظامیہ نے ہندستانی آثار قدیمہ کے ضابطوں کے تحت صبح سات بجے سے لے کر 12 بجے تک پوجا، اس کے بعد ایک سے تین بجے تک نماز اور دوپہر ساڑھے تین بجے سے غروب آفتاب تک پھر پوجا کرنے کی اجازت دی تھی۔ دونوں فریقوں کے درمیان اس معاملے میں اتفاق رائے قائم نہیں ہو سکا ۔


اس کے بعد صبح تقریبا ساڑھے نو بجے سے بھوجشالا کے باہر موتي باغ چوک واقع مندر میں پوجا کا پروگرام شروع کر دیا گیا۔ اس درمیان ہندو پرست تنظیموں کا الزام ہے کہ بھوجشالا کے اندر انتظامیہ کی طرف سے ڈمی عقیدت مندوں سے پوجا کروائی جا رہی ہے۔ وہیں انتظامیہ نے بھوجشالا کے باہر پوجا کرنے والوں سے اپیل کی ہے کہ جو بھی عقیدت مند پوجا کرنا چاہتا ہے وہ وہاں پر امن طریقے سے پوجا کرے۔ ایڈیشنل پولیس ڈائریکٹر جنرل وپن مہیشوری نے بتایا کہ بسنت پنچمی کے موقع پر بھوجشالا میں پرامن طریقے سے پوجا اور نماز کی ادائیگی کے لئے انتظامیہ کی طرف سے پختہ انتظامات کئے گئے ہیں۔ بھوجشالا کے اندر اور باہر 650 جوانوں کی تعیناتی کی گئی ہے۔ اس میں آر اے ایف، خصوصی مسلح فورس سمیت تین رینج کے آئی جی، 16 آئی پی ایس افسران، 22 ایڈیشنل پولیس سپرنٹنڈنٹ تعینات کئے گئے ہیں۔


بھوجشالا کمپلکس ہندستانی آثار قدیمہ (اے ایس آئی) کے محکمہ کے تحت ہے اور ایک دہائی سے زیادہ عرصہ قبل اس وقت کی کانگریس حکومت کے وقت یہ مسئلہ سنگین شکل اختیار کر گیا تھا۔ اس کے بعد سے مرکزی حکومت کی ہدایات کے مطابق منگل کو پوجا اور جمعہ کو نماز پڑھنے کا اہتمام کیا گیا ہے۔ ہر سال بسنت پنچمی پر یہاں ہندو تنظیموں کی طرف سے سرسوتی دیوی کی پوجا کی جاتی ہے۔ ایسے میں بسنت پنچمی اور جمعہ ایک ہی دن ہونے کی صورت میں انتظامیہ کو نظم و نسق برقرار رکھنے کے لئے خصوصی بندو بست کرنے ہوتے ہیں ۔ انتظامیہ کے افسران متعلقہ تنظیموں کے نمائندوں سے بات چیت کر رہے ہیں اور انتظامیہ کو امید ہے کہ سب کچھ پرامن طریقے سے گزر جائیگا۔

First published: Feb 12, 2016 12:33 PM IST