ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

چھتیس گڑھ : ہومیوپیتھک دوا کھانے سے ایک ہی کنبہ کے 8 افراد کی موت ، چار کی حالت سنگین

ہومیوپیتھک دوا لینے والے کنبہ کے پانچ اراکین ابھی بھی اسپتال میں بھرتی ہیں ۔ سی ایم او بلاسپور نے بتایا کہ دوا دینے والا ڈاکٹر واقعہ سے بعد سے ہی فرار ہوگیا ہے اور اس کی تلاش کی جارہی ہے ۔

  • Share this:
چھتیس گڑھ : ہومیوپیتھک دوا کھانے سے ایک ہی کنبہ کے 8 افراد کی موت ، چار کی حالت سنگین
چھتیس گڑھ : ہومیوپیتھک دوا کھانے سے ایک ہی کنبہ کے 8 افراد کی موت ، چار کی حالت سنگین

رائے پور : کورونا وائرس سے بچنے کیلئے اب لوگ الگ الگ طرح کے نسخے اپنا رہے ہیں ، جو خطرناک بھی ثابت ہوتے جارہے ہیں ۔ ایسا ہی ایک معاملہ چھتیس گڑھ کے بلاس پور میں سامنے آیا ہے ۔ یہاں پر ہومیوپیتھک دوا لینا ایک پورے کنبہ کو بھاری پڑگیا ۔ دوا کھانے کی وجہ سے آٹھ لوگوں کی موت ہوگئی ۔ وہیں چار دیگر افراد کی حالت سنگین بنی ہوئی ہے ۔ بلاس پور کے سی ایم او نے بتایا کہ سبھی نے ہومیوپیتھی دوائی لی تھی ، جس کے بعد آٹھ لوگوں کی موت ہوگئی اور پانچ کو اسپتال میں بھرتی کرایا گیا ہے ۔


سی ایم او نے بتایا کہ اس میں الکحل کی مقدار کافی زیادہ تھی ۔ فی الحال محکمہ صحت کی ٹیم معاملہ کی جانچ کررہی ہے ۔ محکمہ کی جانچ ہونے کے بعد رپورٹ سے ہی یہ صاف ہوسکے گا کہ موت کی صحیح وجہ کیا ہے ۔ حالانکہ بادی النظر میں ہومیوپیتھک دوا لینا ہی موت کی وجہ نظر آرہی ہے ۔



سی ایم او نے بتایا کہ پورے کنبہ نے ہومیوپیتھک دوا ڈروسیرا 30 لی تھی ۔ اس میں 91 فیصد تک الکحل ہوتا ہے ، جو دیسی شراب کے ساتھ ملایا جاتا ہے ۔ اس سے اس کو لینا کافی خطرناک ہوجاتا ہے اور کئی معاملات میں یہ لینے والوں کیلئے زہر کا بھی کام کرتا ہے۔

سی ایم او نے جانکاری دی کہ کنبہ کے لوگوں کی موت ہونے کے ساتھ ہی یہ خبر تیزی سے پھیلی اور اس کے بعد ہومیوپیتھک دوا دینے والا ڈاکٹر فرار ہوگیا ہے ۔ پولیس ٹیم ڈاکٹر کی تلاش کررہی ہے اور اس کے ٹھکانوں پر دبش دے رہی ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: May 06, 2021 04:36 PM IST